محمد جمیل اختر
افسانہ: کوئی بھی نام دے دو

افسانہ: کوئی بھی نام دے دو

’اب بھلا بتائیے اتنے دکھ میں موسم کی کسے پرواہ؟ یہ کیسا عجیب سوال تھا؟ میں اسے کیسے بتاتا کہ مجھے اس سے بہت شکایت تھی‘ شائع فروری 27, 2019 06:48pm
افسانہ: ایک الجھی ہوئی کہانی

افسانہ: ایک الجھی ہوئی کہانی

’ہوا کچھ یوں کہ 6 ماہ بعد سلمٰی نے ایک روز شبیر سے کہا کہ اسے شبیر کے دوست یعنی مجھ سے محبت ہے۔‘ شائع فروری 20, 2019 11:33am
افسانہ : دو بوڑھے اور بارش کی دعا

افسانہ : دو بوڑھے اور بارش کی دعا

کچھ پودے واقعی کل سے مرجھائے مرجھائے لگ رہے ہیں۔ میں جو بات بھی کرتا ہوں بس چپ کھڑے ہوکر سنتے ہیں، پہلے ایسا نہیں تھا۔ شائع فروری 06, 2019 11:06am
افسانہ: ’میں‘

افسانہ: ’میں‘

’میں‘ کی گمشدگی یکدم نہیں ہوئی بلکہ یہ گمشدگی قسطوں میں ہوئی تھی۔ بتدریج گُم ہوتا ’میں‘ آج مکمل طور پر کہیں کھو گیا شائع دسمبر 22, 2018 01:21pm
افسانہ: چابی

افسانہ: چابی

یہ ضرور تجوری کھولنا چاہتاہے، بڈھا مجھے جیل پہنچا کر ہی دم لےگا، کچھ ہوجائےمیں جیل نہیں جاؤں گا، اس نے دل ہی دل میں سوچا اپ ڈیٹ دسمبر 21, 2018 10:49am
افسانہ: یادداشت کی تلاش میں

افسانہ: یادداشت کی تلاش میں

وہ روزانہ دفتر جانے کے لیے 8 کلو میٹر چلتا ہے کیونکہ ایسا کرنے سے 15 روپے بچ جاتے ہیں جس سے دودھ کا چھوٹا پیکٹ آجاتا ہے شائع نومبر 08, 2018 11:21am