بلوچستان سے انڈین نیوی کا حاضر سروس افسر گرفتار

اپ ڈیٹ 24 مارچ 2016

ای میل

کوئٹہ: حساس اداروں نے بلوچستان میں بڑی اور اہم کارروائی کرتے ہوئے ہندوستانی نیوی کے حاضر سروس افسر کی گرفتاری کا دعویٰ کیا ہے۔

اس گرفتاری کا اصل مقام تو ظاہر نہیں کیا گیا ہے تاہم سیکیورٹی اداروں کے مطابق گرفتار افسر کا تعلق 'را' سے ہے اور اسے گرفتاری کے بعد تفتیش کیلئے آج اسلام آباد منتقل کردیا گیا ہے۔

سیکیورٹی ذرائع کا کہنا تھا کہ ملزم نے اپنا نام کلبھوشن یادیو اور تعلق ہندوستان نیوی سے بتایا ہے۔

مزید پڑھیں: لاہور سے ’را‘ کے مزید 4 ایجنٹ گرفتار

ذرائع کے مطابق ہندوستانی جاسوس بلوچستان میں علیحدگی پسند تنظیموں کی مدد کرنے اور بلوچستان میں فرقہ وارانہ فسادات بھڑکانے میں ملوث ہے۔ اس کے علاوہ ملزم کے کراچی میں کالعدم دہشت گرد تنظیموں سے روابط ہیں، جبکہ وہ کراچی میں ہونے والی متعدد دہشت گردی اور تخریب کاری کی کارروائیوں کا ذمہ دار بھی بتایا جارہا ہے۔

ادھر بلوچستان کے وزیر داخلہ سرفراز بگٹی نے صوبے کے جنوبی علاقے سے 'را' کے ایک جاسوس کی گرفتاری کی تصدیق کی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مذکورہ گرفتاری نے اس بات کی تصدیق ہوگئی ہے کہ بلوچستان میں جاری سورش میں ہندوستان ملوث ہے۔

خیال رہے کہ بلوچستان کے وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی نے گزشتہ سال دعویٰ کیا تھا کہ را اور این ڈی ایس بلوچستان کی کالعدم تنظیموں کو فنڈز اور ٹریننگ فراہم کررہی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: لاہور : ’را کا ایجنٹ‘ سابق پولیس اہلکار گرفتار

اس کے علاوہ وفاقی اور صوبائی حکومتی حکام متعدد بار یہ دعویٰ کرتے رہے ہیں کہ بلوچستان میں جاری سورش کے پیچھے ہندوستان کی خفیہ ایجنسی را ملوث ہے۔

تاہم اب تک بلوچستان سے کسی بھی 'را' ایجنٹ کو گرفتار نہیں کیا گیا تھا اور اس حوالے سے مذکورہ گرفتاری ایک اہم پیش رفت ہے۔

گزشتہ سال اگست میں حساس اداروں نے لاہور میں کارروائی کرتے ہوئے را سے تعلق کے شبے میں 4 افراد کو گرفتار کیا تھا، ملزمان کا تعلق پاک-ہند سرحدی گاؤں بسیم سے تھا۔

مزید پڑھیں: یوم دفاع پر دہشتگردی کامنصوبہ،'را' ایجنٹ گرفتار

ان چاروں ملزمان کو 'را' کے ایک گرفتار ایجنٹ سابق پولیس کانسٹیبل کی نشاندہی پر گرفتار کیا گیا تھا جنھیں کچھ روز قبل حساس اداروں نے خفیہ اطلاع پر بسیم گاؤں سے ہی حراست میں لیا تھا۔

گزشتہ برس ستمبر میں یوم دفاع پاکستان پر بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں ایک دہشت گرد کو گرفتار کیا تھا جس کے قبضے سے دھماکہ خیز مواد اور دیگر اسلحہ بھی برآمد کیا گیا تھا۔

سیکیورٹی فورسز نے بتایا تھا کہ ملزم نے تفتیش کے دوران ہندوستان کے خفیہ ادارے را کے ساتھ روابط کا اعتراف بھی کیا۔

یہ بھی پڑھیں: را کے دو مشتبہ ایجنٹ کرم ایجنسی سے گرفتار

اس کے کچھ روز بعد سیکیورٹی اداروں نے وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقے کرم ایجنسی کے علاقے پارا چنار سے دو ہندوستانی جاسوسوں کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا تھا۔

گزشتہ سال اکتوبر میں پنجاب کے محکمہ داخلہ نے حساس اداروں کی رپورٹس کے حوالے سے خبردار کیا تھا کہ ہندوستان کی خفیہ ایجنسی را وزیراعظم نواز شریف اور پاکستانی فلاحی تنظیم جماعت الدعوۃ کے سربراہ حافظ محمد سعید پر قاتلانہ حملہ کرواسکتی ہے۔


آپ موبائل فون صارف ہیں؟ تو باخبر رہنے کیلئے ڈان نیوز کی فری انڈرائیڈ ایپ ڈاؤن لوڈ کریں۔