امریکا کے شہر نیویارک میں ننھے منے بچوں کی ایک ایسی ریس ہوئی، جس میں ہارنے پر کوئی بھی غمگین نظر نہیں آیا۔

اس ریس میں 30 بچوں نے حصہ لیا، جسے ڈائپر ڈربی ریس کا نام دیا گیا تھا۔

ریس میں بچوں کے ساتھ ان کے والدین بھی موجود تھے، جو دودھ کی بوتل، ریموٹ اور کچھ کھلونے کے ذریعے اپنے بچوں کو جتوانے کی کوشش میں مصروف رہے۔

11 سے 24 ماہ کی عمر کے بچے اس ریس میں شریک ہوئے۔

ریس ختم ہونے کے لیے کوئی وقت مقرر نہیں کیا گیا تھا، 10 فٹ کے میٹ پر بچوں کو اپنے گھٹنوں کے بل چل کر والدین تک پہنچنا تھا اور سب سے پہلے پہنچنے والا بچہ کامیاب قرار پایا۔

ریس کے ختم ہونے کا کوئی وقت مقرر نہیں تھا — فوٹو/ اے ایف پی
ریس کے ختم ہونے کا کوئی وقت مقرر نہیں تھا — فوٹو/ اے ایف پی
ریس میں 30 بچوں نے حصہ لیا — فوٹو/ اے ایف پی
ریس میں 30 بچوں نے حصہ لیا — فوٹو/ اے ایف پی
11 سے 24 ماہ کے بچے اس ریس میں شریک ہوئے — فوٹو/ اے ایف پی
11 سے 24 ماہ کے بچے اس ریس میں شریک ہوئے — فوٹو/ اے ایف پی
ریس میں 30 بچوں نے حصہ لیا — فوٹو/ اے ایف پی
ریس میں 30 بچوں نے حصہ لیا — فوٹو/ اے ایف پی
کچھ بچے اس ریس سے خوش ہوئے تو کچھ کے لیے یہ پریشان کن رہی — فوٹو/ اے ایف پی
کچھ بچے اس ریس سے خوش ہوئے تو کچھ کے لیے یہ پریشان کن رہی — فوٹو/ اے ایف پی
ہر ماں نے اپنے بچے کو جتوانے کی بھرپور کوشش کی — فوٹو/ اے ایف پی
ہر ماں نے اپنے بچے کو جتوانے کی بھرپور کوشش کی — فوٹو/ اے ایف پی
ماؤں کے ساتھ ساتھ بچوں کے والد بھی کافی پرجوش نظر آئے — فوٹو/ اے ایف پی
ماؤں کے ساتھ ساتھ بچوں کے والد بھی کافی پرجوش نظر آئے — فوٹو/ اے ایف پی
بچوں کا دل بہلانے کے لیے انہیں کھلونے بھی دیئے گئے تھے — فوٹو/ اے ایف پی
بچوں کا دل بہلانے کے لیے انہیں کھلونے بھی دیئے گئے تھے — فوٹو/ اے ایف پی
دودھ کی بوتل اور کھلونوں کو دیکھ کر بچے اپنے والدین کی جانب تیزی سے دوڑے — فوٹو/ اے ایف پی
دودھ کی بوتل اور کھلونوں کو دیکھ کر بچے اپنے والدین کی جانب تیزی سے دوڑے — فوٹو/ اے ایف پی

ویڈیوز

نئے کپڑے سستے داموں خریدنا چاہتے ہیں؟
خواجہ سراؤں کا ٹرین میں سفر
اجتماعی قتل کے واقعے میں بچ جانے والے نوجوان کی آپ بیتی
اسلام آباد دھرنا: مذاکرات کا پانچواں دور بھی ناکام

تصاویر

بھارتی دوشیزہ مس ورلڈ منتخب
زمبابوے میں 37 سال بعد تبدیلی
500 سال پرانی پینٹگ 45 ارب روپے سے زائد میں فروخت
دنیا بھر کے سرد موسم کی خوبصورت کہانی

تبصرے (0) بند ہیں