سابق عظیم بلے باز یونس خان نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں کمرے کے تنازع پر پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی) کا لیول 3 کوچنگ کورس چھوڑ کر واپس کراچی روانہ ہو گئے۔

پی سی بی کے زیر اہتمام لیول 3 کوچنگ کورس شروع کیا جا رہا ہے اور مستقبل میں کوچنگ کے خواہشمند عظیم بلے باز یونس خان کو بھی لاہور کی نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں منعقد ہونے والے اس کورس میں شرکت کی دعوت دی گئی تھی۔

تاہم یونس کو اس وقت شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب ان کے لیے مختص کمرے کا انتظام نہ ہونے پر انہیں کسی اور کے کمرے میں ٹھہرا دیا گیا جو مبینہ طور پر نیشنل کرکٹ اکیڈمی کے ہیڈ کوچ مدثر نذر کا کمرہ تھا۔

یونس کو پی سی بی کا یہ رویہ پسند نہ آیا اور انہوں نے کوچنگ کورس میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے کراچی واپسی کا اعلان کردیا۔

ایک ویڈیو پیغام میں یونس خان نے کہا کہ مجھے نیشنل کرکٹ اکیڈمی سے ایک ای میل آئی جس میں کہا گیا کہ ہمارے لیے بہت اعزاز کی بات ہو گی اگر آپ یہاں آ کر لیول 3 کوچنگ کورس میں شرکت کریں اور اسی وجہ سے میں یہاں آیا تاکہ میں کرکٹ کے حوالے سے اپنی قابلیت میں اضافہ کر سکوں۔

انہوں نے کہا کہ لیکن میں جب یہاں آیا تو مجھے سینئر مینجمنٹ کے رکن کے کمرے میں ٹھہرا دیا گیا اور ان کی غیر موجودگی میں مجھے کہا گیا کہ آپ آج رات یہاں ٹھہریں اور کل صورتحال کا جائزہ لے کر دیکھیں گے کہ کیا کرنا ہے۔

یونس نے کہا کہ میں یہ کورس چھوڑ کر جا رہا ہوں کیونکہ مجھے نہیں لگتا کہ مجھے کسی ایسی جگہ رہنا چاہیے جہاں مجھے کسی اور کا کمرہ دیا گیا ہو اور مذکورہ شخص کو اس بات کا علم بھی نہ ہو۔

پاکستان کے لیے ٹیسٹ کرکٹ میں 10ہزار رنز بنانے والے واحد بلے باز نے کہا کہ میں سینئر رکن کے علم میں لائے بغیر ان کے کمرے میں نہیں رہ سکتا کیونکہ یہ میرے لیے شرمندگی کا باعث ہو گا۔