سندھ کے ضلع سجاول میں شوہر نے اپنی 50 سالہ بیوی کو مبینہ طور پر رات کا کھانا وقت پر نہ بنانے پر کلہاڑی کے وار سے قتل کر دیا۔

کوری جتوئی کو ان کے شوہر یار محمد جتوئی نے گاؤں بُدھو خان جتوئی میں قتل کیا۔

ملزم نے بعد ازاں پولیس کو گرفتاری دے دی اور اپنے جرم کا اعتراف کر لیا۔

ہیڈ محرر مشتاق علی نے ڈان کو بتایا کہ ’رات کا کھانا وقت پر تیار نہ کرنے پر ملزم نے طیش میں آکر اپنی بیوی پر حملہ کیا، جس سے وہ موقع پر ہلاک ہوگئی۔‘

یہ بھی پڑھیں: سندھ: غیرت کے نام پر بیوی، بہن قتل

ملزم یار محمد جتوئی کے خلاف مقتولہ کے بھائی صاحب ڈینو کی مدعیت میں پاکستان پینل کوڈ (پی پی سی) کی دفعہ 302 کے تحت مقدمہ درج کرلیا گیا۔

پاکستان میں خواتین پر تشدد کے واقعات میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے اور کئی خواتین کو گھروں میں معمولی تنازعات پر بھی قتل کیا جاچکا ہے۔

2016 میں ایک شخص کو اپنی بیٹی کو ’گول روٹی‘ نہ بنانے پر قتل کرنے کا جرم ثابت ہونے پر سزائے موت سنائی گئی تھی۔

مزید پڑھیں: عمرکوٹ: شک کی بنیاد پر شوہر کے ہاتھوں مبینہ طور پر بیوی کا قتل

اسی سال بدین میں چائے بنانے میں زیادہ وقت لینے پر شوہر کے ہاتھوں بیوی کے قتل کا واقعہ بھی پیش آیا تھا۔

سندھ کے محکمہ ترقی نسواں کی حالیہ رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال جولائی سے مارچ کے آخر تک صوبے میں خواتین پر مختلف طرح کے تشدد کے ایک ہزار 643 واقعات پیش آئے۔