’پروجیکٹ غازی‘ اب کب سامنے آئے گی؟

اپ ڈیٹ 13 جون 2018

Email


فلم میں شہریار منور ایکشن کرتے نظر آئے تھے —۔
فلم میں شہریار منور ایکشن کرتے نظر آئے تھے —۔

پاکستان کی پہلی سپر ہیرو فلم ‘پروجیکٹ غازی’ کا پریمیئر گزشتہ سال منعقد کیا گیا تاہم اس کی ریلیز اچانک ملتوی ہونے سے صرف شائقین کو ہی نہیں سینما مالکان کو بھی پریشانی کا سامنا کرنا پڑا تھا، جبکہ فلم کے مرکزی کردار بھی اس کے ریویوز سے کافی مایوس نظر آئے۔

13 جولائی 2017 کو کراچی کے سینما ہال میں فلم کا پہلا پریمیئر منعقد ہوا تھا، جہاں مداحوں اور میڈیا سے تعلق رکھنے والے افراد نے بڑی تعداد میں شرکت کی، تاہم فلم کے آغاز کے 20 منٹ بعد ہی مرکزی اداکار ہمایوں سعید سینما ہال چھوڑ کر وہاں سے چلے گئے، جن کے بعد بقیہ کاسٹ بھی فلم کی اسکریننگ مکمل ہونے سے پہلے ہی واپس چلی گئی تھی۔

مزید پڑھیں: پروجیکٹ غازی: ‘ایسا پہلے کبھی نہیں ہوا’

اسی رات ‘پروجیکٹ غازی’ کے فیس بک پیج پر ایک پوسٹ کے ذریعے اعلان کیا گیا تھا کہ فلم کی ریلیز ملتوی کی جارہی ہے، جسے بہتری کے بعد دوبارہ ریلیز کیا جائے گا۔

فلم میں ہمایوں سعید، سائرہ شہروز اور شہریار منور نے مرکزی کردار ادا کیے تھے۔

ایک انٹرویو میں ہمایوں سعید نے کہا تھا کہ ‘جب میں نے پریمیئر میں فلم دیکھی تو یہ ظاہر ہورہا تھا کہ یہ نامکمل ہے، میں نہیں چاہتا تھا کہ یہ فلم پروجیکٹ غازی کو پیش کرے، یہ ناظرین کو نہیں دکھائی جاسکتی، میں نے فلم کی ریلیز روکنے کے لیے چند کالز بھی کیں، میرے خیال سے فلم کو ابھی 4 سے 6 مہینے اور چاہئیں تاکہ اس کی بہتر ریلیز ہوسکے’۔

تاہم اس کے بعد سے اس سپر ہیرو فلم کے حوالے سے کوئی خبر سامنے نہیں آئی۔

یہ بھی پڑھیں: ‘پروجیکٹ غازی’ پریمیئر کے بعد ریلیز ملتوی

اب شہریار منور نے اپنی اس فلم اوراس کی ریلیز کے حوالے سے ڈان سے بات کی۔

شہریار منور نے فلم کی ملتوی کے فیصلے کے حوالے سے بتایا کہ ‘فلم سازوں کے درمیان کچھ تکنیکی اختلافات کے باعث کچھ نے اسے ریلیز تاریخ سے 6 ماہ قبل ریلیز کرنے کا مطالبہ کیا، اور یہی وجہ تھی کہ فلم نامکمل نظر آئی، مجھے اس لئے اور بھی زیادہ افسوس ہوا کیوں کہ ہم سب نے اس پر بہت محنت کی تھی’۔

29 سالہ اداکار نے مزید کہا کہ ‘میں نے پھر بھی اپنا کام ایمانداری سے مکمل کیا، جبکہ اس فلم کی تشہیر بھی کی، میں فلم کے پریمیئر پر موجود نہیں تھا، میں جانتا تھا کہ یہ ٹھیک نہیں، اس فلم کو بہتر انداز میں پیش کرنا چاہیے تھا’۔

مزید پڑھیں: پاکستان کی پہلی سپر ہیرو فلم ‘پروجیکٹ غازی’

شہریار کے مطابق ‘میں نے 6 ماہ تک اس فلم پر کام کیا، یہ مختلف فلم تھی اس لئے اس پر زیادہ محنت کی گئی، ہر روز 12 گھنٹے کام کرنے کے باوجود ایسا ہوا، اس کا مجھے افسوس ہے’۔

انہوں نے فلم کی ریلیز کے حوالے سے بتایا کہ ‘اب فلم کے پروڈیوسر اور ہدایت کار اس پر مل کر کام کررہے ہیں، امید ہے پروجیکٹ غازی چند ماہ میں بہتر انداز میں ریلیز کردی جائے گی، کیوں کہ ایک سال کی محنت اس کے ساتھ جڑی ہے’۔

خیال رہے کہ ‘پروجیکٹ غازی’ پاکستان کی پہلی سپر ہیرو فلم تھی، اس فلم کی ہدایات نادر شاہ نے دی ہیں، جب کہ فلم ایک سپر ہیرو فوجی کی جدوجہد کے ارد گرد گھومتی ہے۔