چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار کا کہنا ہے کہ پولیس کا کسی بھی کیس میں کلیدی کردار ہوتا ہے کرمنل جسٹس سسٹم پولیس پر انحصار کرتا ہے اگر پولیس کا نظام درست نہ ہو تو نظام انصاف پر اثر پڑتا ہے۔

سپریم کورٹ میں چیف جسٹس کی سربراہی میں پولیس نظام اصلاحاتی کمیٹی کا اجلاس ہوا۔

اجلاس میں تمام صوبوں کے موجودہ اور سابقہ انسپیکٹر جنرلز (آئی جیز)، اٹارنی جنرل آف پاکستان ، وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) کے موجودہ اور سابقہ ڈائریکٹرز سمیت سپریم کورٹ کے سینئر ججز نے شرکت کی۔

مزید پڑھیں: ڈیموں کی آواز اٹھائی تو سازشیں شروع ہوگئیں، چیف جسٹس

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس آف پاکستان کا کہنا تھا کہ پولیس کے نظام میں اصلاحات اے ڈی خواجہ کے کیس سے شروع ہوئی۔

انہوں نے بتایا کہ اے ڈی خواجہ کے کیس کی سماعت کے دوران پولیس کے نظام میں اصلاحات کی ضرورت محسوس ہوئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ کہ پولیس کا کسی بھی کیس میں کلیدی کردار ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: چیف جسٹس کا عدلیہ کو بہتر بنانے میں ناکامی کا اعتراف

ان کا کہنا تھا کہ کرمنل جسٹس سسٹم پولیس پر انحصار کرتا ہے اگر پولیس کا نظام درست نہ ہو تو نظام انصاف پر اثر پڑتا ہے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ پولیس کے قواعد میں بھی تبدیلی کی ضرورت ہے جبکہ صوبائی خود مختاری کی وجہ سے بھی نظام پولیس میں جدت کی ضرورت ہے۔