تقسیم کے 71 سال بعد پاک-بھارت فلم پروڈکشن اداروں کا عوام کو تحفہ

ای میل

فلم میں بھارتی لڑکی اور پاکستانی لڑکے کو دکھایا گیا ہے—اسکرین شاٹ
فلم میں بھارتی لڑکی اور پاکستانی لڑکے کو دکھایا گیا ہے—اسکرین شاٹ

تقسیم ہند کے 71 سال بعد پاکستان اور بھارت کے 2 فلم پروڈکشن ہاؤسز نے ایک مشترکہ فلم ریلیز کرکے دونوں ممالک کے عوام کو خوبصورت تحفہ دیا ہے۔

پاکستانی شارٹ فلم پروڈکشن ہاؤس ‘تیلی’ نے بھارتی شارٹ فلم پروڈکشن ہاؤس ‘اری’ کے ساتھ مل کر 10 منٹ دورانیے سے بھی کم وقت پر بنی فلم ‘میچ’ ریلیز کردی۔

شارٹ فلم کا ٹریلر 2 دن قبل ہی جاری کیا گیا تھا، جب کہ فلم پاکستان کے یوم آزادی کے موقع پر ریلیز کردیا گیا، جس نے انٹرنیٹ پر ریلیز ہوتے ہی دھوم مچادی۔

مختصر فلم میں پاکستان اور بھارت کے صوبوں پنجاب کے شہروں لاہور اور امرتسر کے لڑکے اور لڑکی کی زندگی کو دکھایا گیا ہے۔

فلم میں امرتسر کی لڑکی مایا جب کہ لاہور کے لڑکے سمیر کو دکھایا گیا ہے، جن کا پہلی بار رابطہ ڈیٹنگ ایپلی کیشن ٹنڈر کے ذریعے ہوتا ہے۔

مایا اور سمیر پہلے یہ سمجھتے ہیں کہ وہ دونوں ایک ہی ملک کے ہیں، تاہم بعد میں انہیں پتہ چلتا ہے کہ وہ الگ الگ ممالک سے تعلق رکھتے ہیں۔

دونوں کے درمیان آن لائن باتوں اور بحث کا آغاز پاک-بھارت میچ سے ہی ہوتا ہے اور اسی معاملے پر فلم کا اختتام بھی ہوتا ہے۔

رابطے میں آنے کے بعد دونوں ایک دوسرے سے اپنی زندگی کے مسائل اور گھریلو حالات کا تبادلہ بھی کرتے ہیں اور دونوں ایک دوسرے کے ساتھ سے اہم فیصلے بھی کرتے ہیں۔

فلم میں کسی بھی تنازع کو چھیڑے بغیر کرکٹ ڈپلومیسی کے ذریعے دونوں ممالک کے عوام کو قریب لانے کا پیغام دیا گیا ہے۔

فلم کو بنانے والے دونوں پروڈکشن ہاؤس اس سے قبل شارٹ فلمیں ریلیز کرتے رہے ہیں، تاہم پہلی بار دونوں نے مشترکہ طور پر کوئی فلم ریلیز کی۔