آر کے اسٹوڈیوز کی فروخت پر کپور خاندان افسردہ

ای میل

’آر کے فلمز اینڈ اسٹوڈیو‘ 1948 میں بھارتی سنیما کے شومین راج کپور نے قائم کیا تھا —فوٹو/ اسکرین شاٹ
’آر کے فلمز اینڈ اسٹوڈیو‘ 1948 میں بھارتی سنیما کے شومین راج کپور نے قائم کیا تھا —فوٹو/ اسکرین شاٹ

ہندوستانی فلم سینما میں مقبول کپور خاندان نے اپنا تاریخی ’آر کے فلمز اینڈ اسٹوڈیو‘ 70 سال بعد فروخت کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

’آر کے فلمز اینڈ اسٹوڈیو‘ 1948 میں بھارتی سنیما کے شومین راج کپور نے قائم کیا تھا، اس اسٹوڈیو نے کئی کامیاب فلمیں پروڈیوس کیں۔

راج کپور کے انتقال کے بعد کپور خاندان اس اسٹوڈیو کے معاملات کو دیکھتا آرہا ہے۔

راج کپور —۔
راج کپور —۔

یاد رہے کہ گزشتہ سال اس اسٹوڈیو میں آتشزدگی کا واقعہ پیش آیا تھا جس کے نتیجے میں کئی حصے جل کر خاکستر ہوئے تھے اور کئی قیمتی اشیاء اور اداکاروں کے لباس بھی جل گئے تھے، جس کے بعد اسٹوڈیو کی دوبارہ سے تزئین و آرائش کپور خاندان کے لیے ممکن نہیں۔

تاریخی اسٹوڈیو 2 ایکڑ سے زائد رقبے پر مشتمل ہے جس کی مالیت کروڑوں روپے کی ہے۔

راج کپور کے بڑے بیٹے رندھیر کپور نے ہندوستان ٹائمز کو بتایا کہ اس اسٹوڈیو کو فروخت کرنے کی ایک وجہ یہ بھی ہے کہ اب یہاں کوئی اداکار فلم کی شوٹنگ کے لیے نہیں آتا۔

رندھیر کپور کا کہنا تھا کہ ’ممبئی کی سڑکوں اور ٹریفک کو دیکھتے ہوئے کوئی اداکار یہاں فلم کی شوٹنگ کرنے نہیں آتا، سب فلم سٹی جانا بہتر سمجھتے ہیں، اس لیے اس اسٹوڈیو کو بیچنے کے علاوہ کوئی اور راستہ نہیں ہے، ہمارا پورا خاندان اس بات سے کافی افسردہ ہے لیکن ایسا کرنا ہی پڑےگا‘۔

خیال رہے کہ آر کے اسٹوڈیو ممبئی شہر کے مضافات میں واقع ہے جس کے باعث اس جگہ کو شہر سے دور تصور کیا جاتا ہے۔

راج کپور کے دوسرے بیٹے رشی کپور نے بھی اس خبر کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ’ہم سب اس فیصلے پر دکھی ہیں، لیکن دوبارہ اس اسٹوڈیو کی تزئین و آرائش کرنا ممکن نہیں‘۔

گزشتہ سال اس اسٹوڈیو میں آتشزدگی کا واقعہ پیش آیا تھا —۔
گزشتہ سال اس اسٹوڈیو میں آتشزدگی کا واقعہ پیش آیا تھا —۔

راج کپور کی پوتی اداکارہ کرینہ کپور نے لیکمے فیشن ویک کے دوران کہا کہ ’ہمارا بچپن اس اسٹوڈیو میں کھیلتے ہوئے گزرا ہے، یہ ہم سب کے دل سے بےحد قریب ہے، لیکن اسے بیچنے کا فیصلہ گھر کے بڑے کریں گے‘۔

آر کے فلمز اینڈ اسٹوڈیو میں بننے والی فلموں میں ’آگ‘، ’برسات‘، آوارہ‘، ’میرا نام جوکر‘، ’بوبی‘ اور’ ستیم شیوم سندرم ‘ سمیت کئی شامل ہیں۔