پشاور: جنوبی کوریا کے سفیر سنگ کیو کواک نے خیبر پختونخوا میں پانی، نکاس آب، سفری سہولیات، دیہی اور شہری علاقوں میں ترقیاتی منصوبوں کے لیے فنڈز کی فراہمی کی پیشکش کردی۔

انہوں نے پشاور میں دورے کے دوران حکومت سے باقاعدہ منصوبوں سے متعلق تفصیلات پیش کرنے کا کہا۔

سرکاری ہینڈ آوٹ کے مطابق جوبی کورین وفد نے وزیر سیاحت عاطف خان، وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا اور وزیرورکس اکبر ایوب خان سے ملاقات میں دوطرفہ تعلقات سے امور پر بات چیت کی جس میں توانائی، ٹرانسپورٹیشن، پانی اور سینیٹیشن سمیت دیہی علاقوں میں ترقیاتی منصوبوں میں سرکاری شامل تھی۔

یہ بھی پڑھیں: اورنج لائن منصوبے میں تاخیر، پنجاب نقصان کے دہانے پر پہنچ گیا

کورین وفد نے توانائی اور پاور کے سیکریٹری ظاہر علی شاہ اور پلاننگ اینڈ ڈیولپمنٹ سیکریٹری ظاہر شاہ سے بھی ملاقات کی۔

اس موقع پر پشاور میں جنوبی کوریا کے آنری قونصل جنرل بھی موجود تھے۔

مزید پڑھیں: قبائلی علاقوں میں انٹرنیٹ کی فراہمی سیکیورٹی کلیئرنس سے مشروط

اجلاس میں صوبے کے اندر جاری اور تکیمل شدہ منصوبوں کے بارے میں بھی بات چیت ہوئی ۔

اس حوالے سے کورین وفد نے حکومت کو یقین دلایا کہ ان کی حکومت خیبرپختونخوا میں مختلف منصوبوں پر گرانٹ دینے کے لیے تیار ہے جس کے لیے مقامی حکومت باقاعدہ پرپوزل ارسال کرے۔

کورین وفد نے پشاور حکومت کے عہدیدارن کو 2 ہفتے کے دورے کی دعوت بھی دی۔

کورین وفد نے سینئر وزیر سے 545 میگا واٹ کائیکا، 215 میگا واٹ اسریٹ کیڈم، 197 میگا واٹ کلام اسریٹ اور 496 میگا واٹ لو سپاٹ ویلوی ہائیڈرو پراجیکٹ سمیت کورین کمپنی کے تحت جاری منصوبوں پر بات چیت کی۔

یہ بھی پڑھیں: سپریم کورٹ کا صحافیوں کوتنخواہوں کی تاخیر سے ادائیگی کا نوٹس

دوسری جانب وزیر نے وفد کو حکومتی حمایت اور تعاون کا بھرپور یقین دلایا۔

اس ضمن میں انہوں نے کورین کمپنی کے منصوبے 215 میگا واٹ اسریٹ کیڈم ہائیڈرو منصوبے میں بھرپور تعاون کایقین دلایا اور کہا کہ واپڈا سے 496 میگا واٹ لو اسپاٹ ویلیو منصوبہ لے کر کورین کمپنی کے حوالے کیا جائے گا۔

کوریا کے سفیر نے سینئر وزیر کی پیش کردہ سفارشات کو قبول کرتے ہوئے کورین کمپنیوں کے سماجی فنڈز کو پاکستان میں سیاحت کے فروغ کے لیے استعمال کرنے پر آمادگی کا اظہار کیا۔

انہوں نے حکومت سے بدھسٹ اسٹوپا کی ازسرنو بحالی اور طویل العمیاد بنیادوں پر اس کی دیکھ بحال کے لیے تکنیکی معاونت فراہم کرنے کے لیے سفارشات پیش کرنے کا کہا ہے۔


یہ خبر 8 ستمبر 2018 کو ڈان اخبار میں شائع ہوئی