عالمی ڈرون ریسنگ چمپیئن شپ، آسٹریلین نوجوان کے نام

اپ ڈیٹ 05 نومبر 2018

ای میل

—فوٹو:بشکریہ بی بی سی
—فوٹو:بشکریہ بی بی سی

آسٹریلیا کے 15 سالہ لڑکے روڈی براؤننگ نے ورلڈ ائر اسپورٹس فیڈریشن (ایف اے آئی) ڈرون ریسنگ ورلڈ چمپیئن شپ میں مجموعی طور پر کامیابی حاصل کر کے منفرد مقابلوں میں عالمی چمپیئن بننے کا اعزاز حاصل کرلیا۔

چین کے شہر شینزن میں منعقدہ ایف اے آئی کے زیرانتظام مقابلے میں 120 سے زائد افراد نے حصہ لیا جہاں روڈی براؤننگ نے فتح حاصل کی۔

بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق روڈی براؤننگ کی اس کامیابی کی مدد سے آسٹریلیا کی ٹیم نے گروپ ٹائٹل میں سویڈن اور جنوبی کوریا کو بھی پیچھے چھوڑ دیا۔

—فوٹو:بشکریہ بی بی سی
—فوٹو:بشکریہ بی بی سی

چین میں منعقدہ ان مقابلوں میں خواتین کی کیٹیگری بھی شامل تھی جس میں تھائی لینڈ سے تعلق رکھنے والی 11 سالہ وانرایا واناپونگ نے چمپیئن بننے کا اعزاز حاصل کیا۔

پائلٹ ڈرونز کو ان کے طیارے میں نصب کیمرے سے جڑے خصوصی ہیڈ گیئر سے کنٹرول کررہے تھے۔

آسٹریلیا سے تعلق رکھنے والے چمپیئن ریسر نے فائنل میں 3 پائلٹس کو زیر کرکے گولڈ میڈل حاصل کیا اور 24 ہزار ڈالر نقد انعام بھی حاصل کرلیا۔

ایف اے آئی سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ کامیابی کے بعد ان کا کہنا تھا کہ ‘ہم اب تک جھول رہا ہوں کیونکہ میں سب کی طرح ریس میں بہت دفعہ اوپر نیچے ہوتا رہا ہوں اور یہ بہت ہی بڑی کامیابی ہے’۔

—فوٹو:بشکریہ بی بی سی
—فوٹو:بشکریہ بی بی سی

وانرایا واناپونگ مقابلے میں حصہ لینے والی 13 خواتین میں سے ایک تھیں جبکہ ان کی کوچنگ ان کے والد خود کررہے تھے۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ ‘میں جب اسکول نہیں جاتی تھیں تو روزانہ پرواز کرتی تھیں’۔

خیال رہے کہ ڈرون ریسنگ دنیا میں تیزی سے ابھرتا ہوا ایک کھیل ہے اور ایف اے آئی کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں مختلف مقابلے ہورہے ہیں۔

ڈرون ریسنگ کے مقابلے کو چین کے مقامی نشریاتی اداروں سمیت دنیا بھر کے اسپورٹس چینلز نے براہ راست دکھایا۔