'موگلی' کی ایک بار پھر واپسی

اپ ڈیٹ 08 نومبر 2018

ای میل

— اسکرین شاٹ
— اسکرین شاٹ

دی جنگل بک ناول پر بننے والی ایک اور فلم 'موگلی: لیجنڈ آف دی جنگل' کا پہلا ٹریلر ریلیز کردیا گیا ہے۔

اداکار اور فلم ساز اینڈیSerkis نے وعدہ کیا ہے کہ یہ فلم اس بچے موگلی کی زندگی کے تاریک پہلوﺅں کو بیان کرے گی، جس کی پرورش جنگل میں بھیڑیوں نے کی۔

مزید پڑھیں : جنگل بک: 2016 کی بہترین فلم

یہ ایسے بچے موگلی کی کہانی ہے جو جنگل اور انسانوں کے درمیان دو دنیاؤں میں تقسیم ہوکر رہ جاتا ہے اور اسے اپنے بھیڑیوں کے خاندان یا انسانوں میں سے کسی ایک کا انتخاب کرنا ہوگا۔

موگلی اس کے لیے انسانوں کو چنتا ہے تاکہ وہ ان کے ہاتھوں جنگل کو تباہ ہونے سے بچاسکے۔

روہن چند نامی بچے نے موگلی کا مرکزی کردار ادا کیا ہے جبکہ دیگر کاسٹ میں کرسٹین بیل نے بگھیرا (سیاہ تیندوے) کو اپنی آواز دی ہے، بینڈیکٹ Cumberbatch کی آواز شیر خان کے لیے استعمال ہوئی ہے جبکہ کیٹ Blanchett نے کا (اژدھا) کو آواز دی۔

اینڈی Serkis نے خود بالو کے کردار کو آواز دی جو کہ موگلی کا دوست ہوتا ہے۔

کچھ ماہ پہلے ایک انٹرویو کے دوران اس فلم کے بارے میں اینڈیSerkis نے کہا ' ہماری فلم ذرا بڑی عمر کے ناظرین کے لیے ہے'۔

ان کا کہنا تھا ' یہ 13 سال یا اس سے زائد عمر کے ناظرین کے لیے موزوں ہے، کیونکہ اس کی کہانی ذرا تاریک اور Rudyard Kipling کی اصل کہانی سے کافی قریب ہے، یہ ایک باہر والے کی کہانی ہے، ایک ایسا فرد جو ایک مخصوص طرز زندگی کے قوانین اور رواج وغیرہ کو قبول کرنے کی کوشش کرتا ہے، اور پھر اسے ایک ثقافت یعنی انسانی ثقافت کو اپنانا پڑتا ہے، جو کہ یقیناً اپنا سکتا ہے کیونکہ وہ خود انسان ہے، تو یہ 2 مختلف مخلوقات، ان کے قوانین اور روایات کی داستان ہے'۔

یہ بھی پڑھیں : فلم جنگل بک بچوں کیلئے بہت خوفناک

اس فلم کو نیٹ فلیلکس کے لیے تیار کیا ہے جو کہ 29 نومبر کو محدود تعداد میں سینماؤں میں ریلیز کی جائے گی جبکہ 7 دسمبر کو اسٹریمنگ پلیٹ فارم پر دستیاب ہوگی۔

خیال رہے کہ اس سے پہلے ڈزنی اسٹوڈیوز نے بھی 2016 اسی ناول پر ایک فلم بنائی تھی جو کہ سپرہٹ ثابت ہوئی تھی۔