گوگل کروم کا نیا ٹول آن لائن اکاﺅنٹس کے تحفظ میں مددگار

06 فروری 2019

ای میل

انٹرنیٹ براﺅزنگ کرنے والے 62 فیصد افراد گوگل کروم براﺅزر استعمال کرتے ہیں— شٹر اسٹاک فوٹو
انٹرنیٹ براﺅزنگ کرنے والے 62 فیصد افراد گوگل کروم براﺅزر استعمال کرتے ہیں— شٹر اسٹاک فوٹو

گوگل نے ایک نئی کروم ایکسٹینشن متعارف کرائی ہے جو کہ آپ کے آن لائن اکاﺅنٹس کو ہیکرز سے محفوظ رکھنے میں مدد دے گی۔

پاس ورڈ چیک اپ نامی یہ ٹول گوگل کی جانب سے منگل کو متعارف کرایا گیا اور یہ اس وقت صارف کو خبردار کرتا ہے جب اس کا یوزر نیم اور پاس ورڈ کسی قسم کی ہیکنگ میں چرا لیا گیا ہو۔

اس کے ساتھ ساتھ یہ ٹول لوگوں کو ہر چند ماہ بعد آن لائن اکاﺅنٹس کے پاس ورڈ تبدیل کرنا بھی یاد دلاتا ہے۔

مزید پڑھیں : گوگل کروم 10 سال بعد پہلی بار بدل گیا

خیال رہے کہ پاس ورڈ طویل عرصے تک نہ بدلنا بھی آپ کے آن لائن اکاﺅنٹس کے خطرہ ثابت ہوسکتا ہے کیونکہ حال ہی میں 2 ارب 20 کروڑ اکاﺅنٹس کی تفصیلات لیک ہوئی تھیں جن میں سے کچھ 2008 کی تھیں۔

گوگل کے مطابق اس ٹول کے لیے ڈیٹا بھی اسی طرح کے 4 ارب یوزر نیم اور پاس ورڈز سے حاصل کیا گیا ہے۔

کمپنی کی جانب سے اس ڈیٹابیس کو گزشتہ 5 سال سے گوگل صارفین کے تحفظ کے لیے استعمال کیا جارہا ہے اور 11 کروڑ سے زائد اکاﺅنٹس کو اس طرح محفوظ بنایا گیا ہے۔

گوگل کے مطابق حفاظتی اقدامات کے بغیر اکاﺅنٹس ہیکنگ کا خطرہ 10 گنا زیادہ بڑھ جاتا ہے۔

اس وقت دنیا بھر میں انٹرنیٹ براﺅزنگ کرنے والے 62 فیصد افراد گوگل کروم براﺅزر استعمال کرتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں : گوگل کروم پر کونسی سائٹ کمپیوٹر سست کررہی ہے؟

گوگل واحد کمپنی نہیں جو اس طرح کے اقدامات کررہی ہے، فیس بک کی سیکیورٹی ٹیم بھی عوامی ہیکنگ لیکس کو مانیٹر کرتی ہے۔

ویسے صارفین اپنے اکاﺅنٹس کے تحفظ کے لیے اپنے تمام اکاﺅنٹس کا پاس ورڈ مختلف رکھیں تو ہیکرز کے لیے ان پر قبضہ کرنا مشکل ہوجاتا ہے۔

گوگل کا کہنا ہے کہ اس کا نیا ٹول آپ کے پاس ورڈ کو محفوظ نہیں کرتا تو صارفین بغیر کسی خوف کے اسے استعمال کرسکتے ہیں۔