شام: 48 گھنٹوں میں داعش کے حملوں سے شامی فورسز کے 60 اہلکار ہلاک

21 اپريل 2019

ای میل

شامی سیکیورٹی فورسز کے اہلکار 8 سالہ جنگ کے دیگر محاذوں پر بھی حملوں کا نشانہ بنی ہیں — فائل فوٹو/اے ایف پی
شامی سیکیورٹی فورسز کے اہلکار 8 سالہ جنگ کے دیگر محاذوں پر بھی حملوں کا نشانہ بنی ہیں — فائل فوٹو/اے ایف پی

داعش نے 48 گھنٹوں حالیہ ہفتوں کے سب سے خطرناک حملے کرتے ہوئے 60 شامی فورسز کے اہلکاروں کو ہلاک کردیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے مارچ کے مہینے میں مشرقی شام سے داعش کی خلافت کے خاتمے کا اعلان کیا تھا تاہم جنگجو اب بھی ملک کے دیگر حصوں میں خفیہ ٹھکانوں میں موجود ہیں اور خطرناک حملے کر رہے ہیں۔

شامی مبصر برائے انسانی حقوق کے سربراہ رامی عبدالرحمٰن کا کہنا تھا کہ جمعرات سے اب تک وسطی و مشرقی شام میں داعش نے 35 دمشق کی حمایت یافتہ فورسز کے اہلکاروں کو ہلاک کیا۔

مزید پڑھیں: شام: جنگجوؤں کے حملے میں سیکیورٹی فورسز کے13 اہلکار ہلاک

ان کا کہنا تھا کہ گزشتہ ماہ مشرقی گاؤں باغوز میں داعش کے خاتمے کے اعلان کے بعد سے یہ اب تک سب سے خوفناک حملہ تھا۔

شامی سیکیورٹی فورسز کے اہلکار 8 سالہ جنگ کے دیگر محاذوں پر بھی حملوں کا نشانہ بنی۔

ہفتے کے روز داعش کے جنگجوؤں نے بشار الاسد کی حمایتی افواج کے 26 اہلکار کو ہلاک کیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: شام: امریکی حمایت یافتہ فورسز کا داعش کے خلاف ’فتح‘ کا دعویٰ

2011 میں حکومت مخالف مظاہروں کے آغاز سے شروع ہونے والی خانہ جنگی، جس میں 3 لاکھ 70 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں، میں یہ تازہ ہلاکتوں کا واقعہ ہے۔

بشارالسد نے 2015 سے روس کی حمایت حاصل کرنے کے بعد ملک کا 60 فیصد حصہ حاصل واپس حاصل کرلیا ہے تاہم چند علاقے اب بھی ان کے کنٹرول میں نہیں۔