پاکستان میں آج لاکھوں فرزندان اسلام اعتکاف کیلئے مساجد کا رخ کریں گے

ای میل

اعتکاف یقیناََ بہت بڑی سعادت ہے — فائل فوٹو/ رائٹرز
اعتکاف یقیناََ بہت بڑی سعادت ہے — فائل فوٹو/ رائٹرز
عیدالفطر کا چاند نظر آتے ہی اعتکاف ختم کردیا جاتا ہے — فائل فوٹو/ اے ایف پی
عیدالفطر کا چاند نظر آتے ہی اعتکاف ختم کردیا جاتا ہے — فائل فوٹو/ اے ایف پی

ماہ رمضان المبارک کے تیسرے اور آخری عشرے کے آغاز سے قبل ہی ملک بھر کی مساجد میں لاکھوں فرزندان اسلام اعتکاف میں بیٹھ جائیں گے۔

جہنم کی آگ سے نجات کے اس عشرے میں لیلۃ القدر بھی موجود ہے جس کے لیے مساجد میں خصوصی دعاؤں کا اہتمام بھی کیا جاتا ہے، معتکفین سنت نبوی کی پیروی کرتے ہوئے اپنا زیادہ تر وقت خصوصی عبادات اور بخشش کی دعاؤں میں گزاریں گے۔

مسلمان رمضان کے آخری عشرے میں دنیاوی معاملات سے کٹ کر اللہ کی خوشنودی کے لیے عبادات میں مصروف رہتے ہیں جو یقیناً بہت بڑی سعادت ہے۔

خیال رہے کہ رمضان المبارک کے آخری عشرے میں بڑی تعداد میں مسلمان اعتکاف کی سعادت حاصل کرتے ہیں اور اس سال بھی ملک بھر کی مساجد میں لاکھوں فرزندان توحید اعتکاف میں بیٹھیں گے۔

اعتکاف عربی زبان کا لفظ ہے جس کے معنی ’ٹھہر جانے‘ اور ’خود کو روک لینے کے‘ ہیں۔

اعتکاف میں شرکت کے لیے لوگ 20 ویں رمضان سے عصر کے وقت مساجد میں داخل ہوتے ہیں اور عیدالفطر کا چاند نظر آتے ہی اعتکاف ختم کردیا جاتا ہے۔

لاہور میں بادشاہی مسجد، جامعہ نعمیہ، جامعہ اشرفیہ اور داتا دربار مسجد سمیت چھوٹی بڑی مساجد میں بھی معتکفین آخری عشرے کی رحمتیں سمیٹنے کے لیے عبادات میں مشغول ہوں گے۔

مزید دیکھیں: لاکھوں فرزندان اسلام اعتکاف میں بیٹھ گئے

داتادربار مسجد سمیت دیگر مساجد میں معتکفین کے لیے سحر و افطار کے انتظامات بھی کیے گئے ہیں۔

روشنیوں کے شہر کراچی میں بھی اعتکاف کے بڑے اجتماعات بولٹن مارکیٹ کی نیو میمن مسجد، برنس روڈ کی جناح مسجد، طارق روڈ کی رحمانیہ مسجد اور سولجر بازار کی گلزار حبیب مسجد سمیت دیگر مساجد میں متوقع ہیں۔

اسلام آباد میں معتکفین کا بڑا اجتماع فیصل مسجد میں ہو گا جہاں 12 سو سے زائد افراد کی رجسٹریشن مکمل کرلی گئی ہے جبکہ فیصل مسجد میں معتکفین کے لیے سحری اور افطاری کا انتظامات بھی کیے گئے ہیں۔

ملک کی بیشتر مساجد میں اس حوالے سے سیکیورٹی کے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں جبکہ بیشتر مساجد میں اعتکاف کے لیے گنجائش میں اضافہ کیا گیا ہے جس سے مساجد کی رونقیں مزید بڑھ گئی ہیں۔