کراچی: پولیس کی فائرنگ سے زخمی ہونے والا نوجوان جاں بحق

اپ ڈیٹ 04 اگست 2019

ای میل

پولیس نے سندھ حکومت اینٹی انکروچمنٹ سیل میں تعینات ملزم کانسٹیبل کو گرفتار کرلیا — رائٹرز/فائل فوٹو
پولیس نے سندھ حکومت اینٹی انکروچمنٹ سیل میں تعینات ملزم کانسٹیبل کو گرفتار کرلیا — رائٹرز/فائل فوٹو

کراچی کے علاقے گلشن حدید میں 23 جولائی کو پولیس کی گولی لگنے سے زخمی ہونے والا نوجوان دوران علاج جاں بحق ہوگیا۔

اسٹیل ٹاؤن کے اسٹیشن ہاؤس آفیسر (ایس ایچ او) شاکر علی کا کہنا تھا کہ 22 سالہ نوجوان بشیر احمد اور ملزم پولیس اہلکار علی رضا کے درمیان گلشن حدید کی چورنگی پر تلخ کلامی ہوئی تھی۔

انہوں نے بتایا کہ 'دونوں کے درمیان سخت جملوں کے تبادلے کے بعد کانسٹیبل نے نوجوان پر گولی چلادی جس سے وہ شدید زخمی ہوگیا'۔

مزید پڑھیں: کراچی: مقابلے کے دوران پولیس کی فائرنگ سے ڈیڑھ سالہ بچہ جاں بحق

بعد ازاں پولیس نے سندھ حکومت کے اینٹی انکروچمنٹ سیل میں تعینات ملزم کانسٹیبل کو گرفتار کرلیا۔

دریں اثنا انسپیکٹر جنرل سندھ ڈاکٹر سید کلیم امام نے پولیس اہلکار کی جانب سے نوجوان کے قتل کا نوٹس لیتے ہوئے سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس ایس پی) ملیر کو شفاف اور غیر جانبدار تحقیقات کرتے ہوئے مقتول نوجوان کے اہلخانہ کو انصاف فراہم کرنے کی ہدایت کی۔