برطانوی شاہی جوڑے کا 5 روزہ دورہ پاکستان مکمل، وطن واپس روانہ

اپ ڈیٹ 18 اکتوبر 2019

ای میل

برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن 5 روزہ تاریخی دورہ مکمل کرنے کے بعد وطن واپس روانہ ہوگئے — فوٹو: رائٹرز
برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن 5 روزہ تاریخی دورہ مکمل کرنے کے بعد وطن واپس روانہ ہوگئے — فوٹو: رائٹرز

پاکستان کے دورے پر آئے برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن اپنا 5 روزہ تاریخی دورہ مکمل کرنے کے بعد آج (جمعہ) وطن واپس روانہ ہوگئے۔

غیر ملکی خبر رساں اداروں کے مطابق شاہی جوڑے کو نور خان ایئر بیس پر برطانوی ہائی کمشنر تھامس ڈریو اور دیگر حکام نے الودع کہا۔

اس سے قبل برطانوی شاہی جوڑے کو اسلام آباد ایئر پورٹ لے کر آنے والے طیارے نے باحفاظت نور خان ایئرپورٹ پر لینڈنگ کی تھی جبکہ دو گھنٹے قبل بھی طیارے نے اسلام آباد ایئر پورٹ پر لینڈنگ کی کوشش کی تھی لیکن خراب موسم کے باعث اس کا رخ دوربارہ لاہور ایئرپورٹ کی جانب موڑ دیا گیا تھا۔

یاد رہے کہ اپنے دورے کے چوتھے دن برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن نے رات لاہور کے ہوٹل میں گزاری تھی۔

مزید پڑھیں: لاہور: برطانوی شاہی جوڑے کا بادشاہی مسجد، نیشنل کرکٹ اکیڈمی کا دورہ

واضح رہے کہ پاکستانیوں میں مقبول شہزادی ڈیانا کے بیٹے اور بہو 5 روزہ دورے پر 14 اکتوبر کی رات ساڑھے 9 بجے اسلام آباد پہنچے تھے، ان کا یہ دورہ 14 اکتوبر سے 18 اکتوبر تک تھا۔

برطانوی شاہی جوڑے کا خصوصی طیارہ نورخان ایئربیس پہنچا تھا، جہاں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، برطانوی ہائی کمشنر تھومس ڈریو اور دیگر حکام نے ان کا ریڈ کارپیٹ استقبال کیا تھا جبکہ بچوں نے شاہی مہمانوں کو گلدستے پیش کیے تھے۔

دورے کے دوسرے دن کا آغاز برطانوی شہزادے اور ان کی اہلیہ نے گورنمنٹ گرلز ہائی اسکول یونیورسٹی کالونی اسلام آباد کا دورہ کر کے کیا تھا اور ’ٹیچ فار پاکستان‘ مہم کے اثرات کا جائزہ لیا تھا۔

بعد ازاں انہوں نے ایوانِ صدر میں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے ملاقات کی جس میں شاہی جوڑے کے ہمراہ برطانوی ہائی کمشنر تھامس ڈریو اور دیگر سفارتی عہدیدار بھی شریک ہوئے تھے۔

شہزادے ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ میڈلٹن— فائل فوٹو/ اے ایف پی
شہزادے ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ میڈلٹن— فائل فوٹو/ اے ایف پی

جس کے بعد جوڑا وزیراعظم ہاؤس پہنچا تھا جہاں وزیراعظم عمران خان نے خود ان کا پرتپاک استقبال کیا تھا، وزیراعظم ہاؤس آمد کے موقع پر انہوں نے وزیراعظم کی جانب سے دیے گئے ظہرانے میں بھی شرکت کی تھی۔

بعدازاں اسلام آباد میں یادگار پاکستان میں تقریب میں برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن روایتی مشرقی لباس زیب تن کیے ٹرک آرٹ سے سجے رکشے میں سوار ہو کر پہنچے تھے۔

گزشتہ روز برطانوی شہزادے ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ میڈلٹن نے پاکستان کے دورے کے تیسرے دن کے آغاز پر صوبہ خیبرپختونخوا کے شہر چترال کا دورہ کیا تھا۔

چترال کے دورے کے موقع پر شاہی جوڑے کو روایتی ٹوپی پہنائی گئی، ساتھ ہی شہزادے ولیم کو روایتی چغہ اور شہزادی کیٹ کو شال کا تحفہ بھی دیا گیا تھا۔

بعد ازاں پاکستان کے دورے پر آئے برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن نے چوتھے روز صوبہ پنجاب کے دارالحکومت لاہور پہنچ کر بادشاہی مسجد اور نیشنل کرکٹ اکیڈمی کا دورہ کیا تھا۔

برطانوی شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ کیٹ مڈلٹن نے ایس او ایس چلڈرن ویج کا دورہ بھی کیا تھا جہاں انہوں نے اسٹوری ٹیلنگ سیشن میں حصہ لیا اور بچوں سمیت اسٹاف سے بات چیت کی تھی۔

خیال رہے کہ یہ شہزادہ ولیم اور کیٹ میڈلٹن کا پاکستان کا پہلا دورہ ہوگا تاہم شاہی خاندان کے دیگر افراد ماضی میں اسلام آباد کا دورہ کرچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: شاہی جوڑے کا دورہ پاکستان: کیٹ مڈلٹن کا لباس کس سے متاثر تھا؟

شہزادہ ولیم کی والدہ پرنسز آف ویلز شہزادی ڈیانا نے بھی ماضی میں پاکستان کا دورہ کیا تھا۔

علاوہ ازیں برطانیہ کی ملکہ الزبتھ دوئم نے 1961 اور 1997 میں پاکستان کا دورہ کیا تھا، ان کے علاوہ پرنس آف ویلز شہزادہ چارلس اور ڈچز آف کارن وال 2006 میں پاکستان آئے تھے۔

ملکہ برطانیہ نے 1961 میں کراچی کے ایوان صدرِ میں تقریب میں شرکت کی تھی جب کہ 1997 میں انہوں نے راولپنڈی کا دورہ بھی کیا تھا اور انہوں نے پاکستان کی قومی کرکٹ ٹیم سے بھی ملاقات کی تھی۔

برطانیہ کے شاہی محل کے مطابق شہزادہ ولیم اور ان کی اہلیہ کا پاکستانی دورہ ایک ہزار کلو میٹر پر مشتمل تھا اور اس دورے کے دوران جوڑا پاکستان کے مختلف علاقوں میں ثقافتی و فلاحی پروگرامز میں شرکت کی۔