ای میل

ایشیا کے سب سے سحر انگیز مندروں پر ایک نظر

اٹلی کے شہر میلان سے تعلق رکھنے والی ایک فوٹوگرافر الیونورا کوستی نے ایشیا میں موجود چند سحر انگیز مندروں کی تصاویر شیئر کرکے سب کو حیران کردیا۔

انسائڈر کی رپورٹ کے مطابق الیونورا کوستی اپنے یونیورسٹی کے دنوں سے فوٹوگرافی پر کام کررہی ہیں، البتہ ان کے مطابق سوشل میڈیا نے فوٹوگرافی کی دنیا کو بالکل تبدیل کردیا ہے۔

وہ ایک ٹریول فوٹوگرافر ہیں جو انسٹاگرام پر اپنے کام کو پوسٹ کرکے دنیا کے ساتھ شیئر کرتی ہیں۔

انسائڈر ویب سائٹ کو دیے ایک انٹرویو میں فوٹوگرافر کا کہنا تھا کہ 'میں انسٹاگرام پر اپنے سفر کی تصاویر شیئر کرتی ہوں جس کے بعد لوگوں نے مجھے فالو کرنا شروع کیا، بلکہ ٹریول کمپنیوں نے بھی مجھے نوٹس کرنا شروع کردیا، بعدازاں میں ٹریول فوٹوگرافر بن گئی اور اپنی کہانیاں بیان کرنے لگی'۔

انہوں نے کہا کہ 'بس مجھے ایک کمپیوٹر اور کیمرا مل جائے تو میں کہیں بھی کام کرسکتی ہوں'۔

ایشیا میں موجود مندروں کی تصاویر شیئر کرنے کے حوالے سے انہوں نے بتایا کہ 'مجھے ایشیا کی ثقافت بےحد پسند ہے، یہاں کے لوگ، یہاں کا کھانا، مجھے بےحد پسند ہے اور سب سے اچھی بات یہ ہے کہ ایک خاتون فوٹوگرافر کے لیے یہاں اکیلے سفر کرنا بھی بےحد محفوظ ہے'۔

وہ تائیوان، ملائشیا، تھائی لینڈ، مکاؤ، ہانگ کانگ، برونائی اور سنگاپور سمیت 12 اور مختلف جگہوں کا دورہ کرچکی ہیں۔

الیونورا کوستی نے تمام مندروں کی تصاویر ڈرون کیمرا سے لی ہیں، ان کے انسٹاگرام اکاؤنٹ کو 28 ہزار سے زائد افراد فالو کررہے ہیں۔

انہوں نے 20 روز میں ایشیا کے 7 ممالک کا دورہ کیا۔

تھائی لینڈ کے اس مندر کی حفاظت ایک مچھلی کررہی ہے

تائیوان کا یہ مندر 1976 میں تعمیر کیا گیا

تائیوان کا یہ مندر لوٹس نامی جھیل کے اوپر موجود ہے

تائیوان میں موجود یہ ایک اور مندر لوگوں کی توجہ کا مرکز بن گیا

17منزلہ یہ مندر یہ مندر تھائی لینڈ میں موجود ہے

مندروں کے علاوہ بھی کئی خوبصورت مقامات کو کیمرے کی آنکھ میں قید کیا

چین میں موجود بدھ کی یہ مورت 233 فٹ اونچی ہے

چین کا یہ ایک اور مندر فوٹوگرافر کی توجہ کا مرکز بنا

فوٹو بشکریہ/ فوٹوگرافر الیونورا کوستی