موڈیز نے 5 پاکستانی بینکوں کا آؤٹ لک مستحکم قرار دے دیا

اپ ڈیٹ 06 دسمبر 2019

ای میل

2 دسمبر کو موڈیز کی جانب سے حکومت پاکستان کی بی 3 ریٹنگ کی تصدیق کی گئی تھی—فائل فوٹو: اے ایف پی
2 دسمبر کو موڈیز کی جانب سے حکومت پاکستان کی بی 3 ریٹنگ کی تصدیق کی گئی تھی—فائل فوٹو: اے ایف پی

کراچی: موڈیز انویسٹر سروس نے پاکستان کے 5 بڑے بینکوں کا آؤٹ لک (منظرنامہ) منفی سے مستحکم قرار دے دیا اور طویل مدتی کرنسی ڈپازٹ بی 3 ریٹنگ میں ان کی موجودگی کی تصدیق کردی۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق نیویارک سے تعلق رکھنے والے ادارے کے اعلان کے مطابق ان بینکوں میں الائیڈ بینک لمیٹڈ (اے بی ایل)، حبیب بینک لمیٹڈ(ایچ بی ایل)، ایم سی بی، نیشنل بینک پاکستان(این بی پی) اور یونائیٹد بینک لمیٹڈ (یو بی ایل) شامل ہیں۔

اس سے قبل 2 دسمبر کو موڈیز کی جانب سے حکومت پاکستان کی بی 3 ریٹنگ کی تصدیق کی گئی تھی اور خودمختار ریٹنگ کو منفی سے مستحکم کردیا گیا تھا جو بیرونی خطرات میں کمی اور مالیاتی اصلاحات کو ظاہر کرتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: موڈیز نے پاکستان کا معاشی منظرنامہ منفی سے مستحکم قرار دے دیا

تاہم بینکوں کا آؤٹ لک حکومتی ضمانتوں کی وسعت کے باعث تبدیل کیا گیا جو خطرات سے تقریباً پاک اور بلند ہورہی ہے۔

موڈیز کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا کہ ’بینکوں کی ریٹنگ پاکستان میں آپریٹنگ ماحول کی بہتری اور ملک کے خودمختار کریڈٹ پروفائل' کی عکاس ہے۔

اس کے ساتھ ساتھ موڈیز کی جانب سے مقامی کرنسی ڈپازٹ کو دیا گیا مستحکم آؤٹ لک بھی ادارے کی جانب سے اس توقع کا اظہار ہے کہ ضرورت پڑنے پر حکومت کے پاس بینکوں کی مدد کرنے کی صلاحیت کم نہیں ہوگی۔

بیان کے مطابق موڈیز کی جانب سے بینکوں کی ریٹنگ کی تصدیق ان کے مستحکم ڈپازٹ بیسڈ فنڈنگ کے طریقہ کار، اعلیٰ لیکویڈیٹی بفرز اور کمائی کی اچھی صلاحیت کے ساتھ ساتھ پاکستان میں شرح نمو میں اضافے کے مواقع ظاہر کرتا ہے۔

مزید پڑھیں: موڈیز کا پاکستانی معیشت کے مستحکم ہونے کا عندیہ

موڈیز کا کہنا تھا کہ آپریٹنگ انوائرمنٹ اور کریڈٹ رسک پروفائل کی خودمختاری میں مزید بہتری سے ریٹنگ بلند ہوسکتی ہے۔

تاہم ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستان کی خودمختار ساخت کمزور ہونے کی صورت میں بینکوں کی ریٹنگ کم کردی جائے گی۔