سابق برطانوی حسینہ پر داعش جنگجو سے شادی کرنے کا الزام

اپ ڈیٹ 16 دسمبر 2019

ای میل

امانی نور افریقی نژاد ہیں—فوٹو: لور پول ایکو
امانی نور افریقی نژاد ہیں—فوٹو: لور پول ایکو

برطانیہ کے شہر لیور پول سے کم عمر لڑکیوں کے حسن کا مقابلہ جیتنے والی سابق ’مس ٹین‘ پر عدالت نے شدت پسند تنظیم داعش کے جنگجو سے شادی کرنے اور تنظیم کو مالی معاونت فراہم کرنے کا الزام عائد کردیا۔

امانی نور کو پولیس نے گرفتاری کے بعد عدالت میں پیش کیا، جہاں ان پر شدت پسند تنظیم کو مالی معاونت فراہم کرنے سمیت اس کے ایک کارکن سے شادی کرنے اور تنظیم میں شمولیت کرنے کی کوششوں کے الزامات لگائے گئے۔

برطانوی اخبار ’دی انڈیپینڈنٹ‘ کے مطابق امانی نور کو چند دن قبل داعش کے ایک جنگجو سے شادی کرنے اور تنظیم کو فنڈ فراہم کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔

امانی نور پر الزام ہےکہ انہوں نے اپنی 20 ویں سالگرہ کے دن داعش کے ایک جنگجو سے آن لائن شادی کی، جس سے امانی نور کے کچھ عرصہ قبل ہی تعلقات استوار ہوئے تھے۔

امانی نور والدہ کے ساتھ عدالت میں پیش ہوئیں، انہوں نے اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کو مسترد کیا—فوٹو: پی اے ایجنسی
امانی نور والدہ کے ساتھ عدالت میں پیش ہوئیں، انہوں نے اپنے اوپر لگائے گئے الزامات کو مسترد کیا—فوٹو: پی اے ایجنسی

برطانوی اخبار کے مطابق داعش کے جنگجو ’حکیم مائی لو‘ نامی شخص سے امانی نور نے میسیجنگ ایپلی کیشن ’ٹیلی گرام‘ پر شادی کی تھی۔

رپورٹ کے مطابق برطانوی خاتون اور داعش جنگجو کا رابطہ بھی انٹرنیٹ پر ہوا تھا اور دونوں نے کبھی بھی ملاقات نہیں کی تھی، تاہم انٹرنیٹ پر تعلقات استوار ہونے کے بعد دونوں نے شادی کی۔

21 سالہ امانی نور پر داعش کو 35 پاؤنڈ یعنی پاکستانی 7 ہزار روپے سے زائد کی مالی معاونت کا الزام بھی ہے، جس سے انہوں نے انکار کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے داعش کی مالی معاونت نہیں کی بلکہ انہوں نے خانہ جنگی کے شکار ملک شام میں بچوں اور خواتین کے لیے خوراک خریدنے کے لیے پیسے فراہم کیے۔

امانی نور18 برس کی عمر میں مس ٹین منتخب ہوئی تھیں—فوٹو: لور پول ایکو
امانی نور18 برس کی عمر میں مس ٹین منتخب ہوئی تھیں—فوٹو: لور پول ایکو

رپورٹ میں بتایا گیا کہ برطانوی خاتون نے یہ رقم آن لائن پیمنٹ ایپلی کیشن پے پل کے ذریعے ایک برطانوی نژاد خاتون کو بھیجی اور اس خاتون سے بھی 21 سالہ امانی نور نے کبھی براہ راست ملاقات نہیں کی تھی۔

عدالت کو آگاہی دی گئی کہ پولیس نے امانی نور کے گھر سے ترکی کا ایئر ٹکٹ بھی برآمد کیا جس کے ذریعے امانی نور ترکی کے راستے شام جاکر داعش میں شمولیت کا ارادہ رکھتی تھیں۔

تاہم امانی نور نے عدالت کو بتایا کہ ان کا داعش میں شمولیت کا کوئی ارادہ نہیں تھا، تاہم وہ اپنے شوہر کے پاس جانا چاہتی تھیں۔

امانی نور نے 15 برس کی عمر میں ہی فٹ بالر شی اوگو سے تعلقات استوار کرلیے تھے—فوٹو: لور پول ایکو
امانی نور نے 15 برس کی عمر میں ہی فٹ بالر شی اوگو سے تعلقات استوار کرلیے تھے—فوٹو: لور پول ایکو

امانی نور نے عدالت کو یہ بھی بتایا کہ انہوں نے اپنے سابق بوائے فرینڈ لور پول فٹ بال کلب کے کھلاڑی کی جانب سے دھوکے کے بعد مذہب کو جاننے کا ارادہ کیا اور اسی لیے ہی انہوں نے داعش کے جنگجو سے آن لائن شادی کی۔

عدالت نے سماعت کے بعد امانی نور کو ضمانت پر رہا کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی، سابق برطانوی حسینہ کو آئندہ ہفتے تک سزا سنائے جانے کا امکان ہے۔

خیال رہے کہ امانی نور 18 سال کی عمر میں ’مس ٹین لور پول‘ منتخب ہوئی تھیں اور ان کے تعلقات فٹ بالر شی اوگو سے بھی رہے ہیں۔

امانی نور کے فٹ بالر کے ساتھ تعلقات ’مس ٹین‘ منتخب ہونے سے قبل ہی تھے اور یہ اعزاز حاصل کرنے کے بعد دونوں کے تعلقات خراب ہونا شروع ہوئے جس کے بعد انہوں نے 20 سال کی عمر میں داعش کے جنگجو سے آن لائن شادی کرلی۔

امانی نور کو آئندہ ہفتے تک سزا سنائے جانے کا امکان ہے—فوٹو: پی اے ایجنسی
امانی نور کو آئندہ ہفتے تک سزا سنائے جانے کا امکان ہے—فوٹو: پی اے ایجنسی