پاکستان مشکل ترین معاشی حالات سے باہر آگیا ہے، وزیر اعظم

اپ ڈیٹ 19 جنوری 2020

ای میل

وزیر اعظم عمران خان نے ڈیجیٹل میڈیا سمیت مختلف شعبہ جات سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں کے وفد سے ملاقات کی — فائل فوٹو/فیس بک
وزیر اعظم عمران خان نے ڈیجیٹل میڈیا سمیت مختلف شعبہ جات سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں کے وفد سے ملاقات کی — فائل فوٹو/فیس بک

اسلام آباد: وزیر اعظم عمران خان نے ڈیجیٹل میڈیا کے ذریعے پاکستان سمیت اسلام کی مثبت تصویر پیش کرنے اور مظلوم کشمیری عوام کا مقدمہ دنیا کے سامنے پیش کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم عمران خان نے ڈیجیٹل میڈیا سمیت مختلف شعبہ جات سے تعلق رکھنے والے نوجوانوں کے وفد سے ملاقات کے دوران کیا۔

ملاقات کے دوران وزیر اعظم نے نوجوانوں کے لیے حکومت کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدامات یاد دلائے جن میں آسان قرض اور تربیتی پروگرامز سمیت غربت کے خلاف احساس پروگرام اور غریب عوام کے لیے شیلٹر ہاؤسز کا قیام شامل ہے۔

وزیر اعظم کے دفتر سے جاری ہونے والے اعلامیے کے مطابق معاون خصوصی سید ذوالفقار عباس بخاری اور وزیراعظم کے فوکل پرسن برائے ڈیجیٹل میڈیا ڈاکٹر ارسلان خالد بھی اس موقع پر موجود تھے۔

ملاقات کے دوران ملک کو درپیش چیلنجز، مسائل سے نمٹنے کے لیے حکومتی اقدامات، جدید دور میں میڈیا خصوصاً سوشل میڈیا کے کردار و دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ڈیجیٹل میڈیا سیکٹر میں نوجوان نسل کے لیے موجود مواقع، درپیش چیلنجز اور ان کے حل پر تفصیلی گفتگو کی گئی۔

وزیر اعظم نے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان تاریخ کی سب سے مشکل معاشی صورت حال سے نکل آیا ہے، مالیاتی خسارہ کم ہو چکا ہے اور سرمایہ کاروں کا اعتماد بحال ہوا ہے۔

مزید پڑھیں: 'وزیراعظم عمران خان کو بحرین کے اعلیٰ ترین سول ایوارڈ سے نوازا جائے گا'

انہوں نے کہا کہ 1960 کے بعد پہلی مرتبہ ہماری حکومت نے صنعتوں کی بحالی کو ترجیح دی ہے، اس حکمت عملی سے روز گار کے مواقع میسر آئیں گے اور معیشت ترقی کرے گی۔

وزیر اعظم نے کرپشن اور مافیا کو ختم کرنے کے لیے آخری حد تک لڑائی جاری رکھنے کے اپنے عزم کا اعادہ کیا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سیاحت کے فروغ کے لیے بھرپور صلاحیت موجود ہے جسے ڈیجیٹل میڈیا کے ذریعے موثر انداز میں دنیا کے سامنے لایا جاسکتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کو بین الاقوامی سطح پر بھی چیلینجز کا سامنا ہے، پاکستان ہمیشہ امن کا خواہاں رہا ہے اور اب بھی اسی ضمن میں کردار ادا کر رہا ہے۔

ڈیجیٹل میڈیا کی افزائش و ترقی کے حوالے سے تحریک انصاف کی حکومت کی حکمت عملی و اقدامات پر بھی مفصل بات چیت کی گئی اور وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ ٹیکنالوجی کے اس دور میں ڈیجیٹل میڈیا ابلاغ کے مؤثر ترین ذریعے کے طور پر ابھر کر سامنے آیا ہے، ڈیجیٹل میڈیا کی تیز تر افزائش کے باعث معلومات کا پھیلاؤ سرحدوں کا پابند نہیں رہا۔

یہ بھی پڑھیں: قومی اسمبلی اجلاس میں وزیراعظم عمران خان کی آمد کے مناظر

انہوں نے کہا کہ تعلیم یافتہ اور سیاسی طور پر باشعور نوجوان تیزی سے ڈیجیٹل میڈیا پر متحرک ہورہے ہیں، عالمی سطح پر پاکستان کے درست تشخص کو اجاگر کرنے کے لیے ڈیجیٹل میڈیا کے موثر استعمال کی حکمت عملی وقت کی ضرورت ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف اور وفاقی حکومت نے 5 فروری کو یوم یکجہتی کشمیر منانے کا فیصلہ کیا ہے کیونکہ فاشسٹ مودی سرکار ہندو راشٹرا کے خواب پورا کرنے کے لیے امن اور خطے کی سلامتی کو داؤ پر لگا رہی ہے اور کشمیر پر غاصبانہ قبضہ اور شہریت کے قانون میں ترمیم نسل پرستانہ عزائم کی تکمیل کی عملی کوششیں ہیں۔

وزیراعظم نے زور دیا کہ ڈیجیٹل میڈیا کے ذریعے مظلوم کشمیری عوام کا مقدمہ دنیا کے سامنے پیش کیا جائے اور دنیا کو باورکرایا جائے کہ سلامتی کونسل کی قرادادوں اور کشمیری عوام کی امنگوں کی روشنی میں مسئلہ کشمیر کا حل اقوام عالم کا فریضہ ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ نوجوان طبقے کے لیے ایک ہی پیغام ہے کہ محنت کریں، کامیابی محنت کے بغیر ممکن نہیں۔