عمران خان کو نشانہ بنانے کیلئے مجھے ’آلے‘ کے طور پر استعمال کیا جاتا تھا، جمائما

15 اکتوبر 2021
نوادرات کی اسمگلنگ کے الزام لگائے جانے کے بعد پاکستان سے جلد منتقل ہوئیں—فوٹو: اویننگ اسٹینڈرڈ
نوادرات کی اسمگلنگ کے الزام لگائے جانے کے بعد پاکستان سے جلد منتقل ہوئیں—فوٹو: اویننگ اسٹینڈرڈ

وزیراعظم عمران خان کی سابق اور پہلی اہلیہ جمائما گولڈ اسمتھ نے اپنی شادی ختم ہونے کے ڈیڑھ دہائی بعد انکشاف کیا ہے کہ انہیں ان کے شوہر کو سیاسی طور پر نشانہ بنانے کے لیے ’آلے‘ کے طور پر استعمال کیا جاتا تھا۔

برطانوی اخبار ’ایوننگ اسٹینڈر‘ کو دیے گئے خصوصی انٹرویو میں 47 سالہ برطانوی نژاد جمائما گولڈ اسمتھ نے کہا کہ خود سے دگنی عمر کے شخص سے شادی کرنے کا فیصلہ آسان نہ تھا اور جن سے انہوں نے شادی کی وہ کوئی عام شخص نہیں تھے۔

جمائما گولڈ اسمتھ کے مطابق انہوں نے 21 سال کی عمر میں خود سے دگنی عمر کے ایسے شخص سے شادی کی تھی جو سیاسی طور پر مضبوط شخص تھے۔

وزیر اعظم عمران خان کی سابق اہلیہ کا کہنا تھا کہ وہ سفید فام نسل سے تعلق رکھتی تھیں جب کہ انہوں نے شادی سیاہ فام نسل کے شخص سے کی جو ان کی ثقافت کے بلکل بر عکس تھا۔

جمائما گولڈ اسمتھ نے کہا کہ ان کے شوہر کو نشانہ بنانا کے لیے انہیں ’آلے یا مہرے‘ کے طور پر استعمال کیا جاتا تھا۔

جمائما گولڈ اسمتھ اور عمران خان نے 1995 میں شادی کی تھی—فائل فوٹو: ایکسپریس ڈاٹ کو
جمائما گولڈ اسمتھ اور عمران خان نے 1995 میں شادی کی تھی—فائل فوٹو: ایکسپریس ڈاٹ کو

انہوں نے یہ انکشاف بھی کیا کہ ان پر نوادرات کی اسمگلنگ کا الزام لگایا گیا تھا، جس کی وجہ سے انہیں جلدی میں پاکستان چھوڑنا پڑا تھا، کیوں کہ مذکورہ الزام ان چند جرائم میں سے ایک ہے، جن کی پاکستان میں ضمانت نہیں ہوتی۔

اگرچہ جمائما گولڈ اسمتھ نے بتایا کہ ان پر نوادرات کی اسمگلنگ کا الزام لگایا گیا تھا اور انہیں ’آلے‘ کے طور پر شوہر کو نشانہ بنانے کے لیے استعمال کیا جاتا تھا لیکن انہوں نے یہ واضح نہیں کیا کہ ان پر کس نے الزام لگایا اور انہیں کون ’مہرے‘ کے طور پر استعمال کرنا چاہتا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: کیا جمائما اب بھی عمران خان سے محبت کرتی ہیں؟

جمائما گولڈ اسمتھ نے انٹرویو میں یہ بھی بتایا کہ عمران خان سے شادی کرکے جب وہ پاکستان منتقل ہوئیں تو بھارت میں موجود ان کی بہن سے لوگ پوچھتے تھے کہ ان کی بہن کس طرح پاکستان چلی گئیں؟

انہوں نے یہ اعتراف بھی کیا کہ پاکستان منتقلی کے بعد ان کی ’ارینج میرج' سے متعلق سوچ تبدیل ہوئی، پہلے وہ صرف محبت یا پسند کی شادیوں پر یقین رکھتی تھیں مگر انہوں نے پاکستان میں کئی ارینج میرجز ہوتے دیکھیں۔

جمائما گولڈ اسمتھ کا کہنا تھا کہ ان کے شوہر عمران خان کے دوستوں کے بچے بضد ہوتے تھے کہ اگر ان کی ارینج میریج کروائی جا رہی ہے تو جمائما کو اس میں شامل کیا جائے ورنہ وہ شادی نہیں کریں گے۔

جمائما گولڈ اسمتھ نے انٹرویو میں یہ بھی بتایا کہ ان کی آنے والی رومانٹک کامیڈی فلم ’واٹس لو گاٹ ٹو ڈو وِد اٹ' (What's Love Got To Do With It) کی کہانی بھی پاکستان میں ارینجڈ میریج کے گرد گھومتی ہے۔

ان کے مطابق مذکورہ فلم کی کہانی ایک 30 سالہ خاتون فلم ساز کے گرد گھومتی ہے جو برطانیہ سے پاکستان ارینجڈ میریج کی شوٹنگ کرنے پہنچتی ہیں اور پھر فلم میں کئی نئے موڑ آتے ہیں۔

جمائما گولڈ اسمتھ نے کہا کہ انہوں نے ’واٹس لو گاٹ ٹو ڈو وِد اٹ' (What's Love Got To Do With It) کی کہانی کو لکھنے میں ایک دہائی لگائی۔

مزید پڑھیں: جمائما اور عمران خان اب بھی اچھے دوست؟

انٹرویو کے دوران انہوں نے اپنے بیٹوں سلیمان اور قاسم سے متعلق بھی باتیں کیں اور بتایا کہ سلیمان کی عمر 24 جب کہ قاسم کی عمر 22 سال ہے اور دونوں کا پاکستان سے گہرا تعلق ہے۔

خیال رہے کہ جمائما گولڈ اسمتھ نے عمران خان سے 1995 میں شادی کی تھی اور دونوں کے درمیان 2004 میں طلاق ہوگئی تھی۔

جمائما خان سے طلاق کے بعد عمران خان نے دوسری شادی جنوری 2015 میں ٹی وی اینکر ریحام خان سے کی تھی جو کہ صرف 10 ماہ ہی چل سکی تھی۔

وزیر اعظم عمران خان نے تیسری شادی فروری 2018 میں بشریٰ بی بی سے کی تھی۔

تبصرے (0) بند ہیں