پاراچنار: کرم ایجنسی میں پاک افغان سرحد کے قریب 2 امریکی ڈرون حملوں میں 2 شدت پسند ہلاک اور ایک زخمی ہوگیا۔

ذرائع کے مطابق پہلا ڈرون حملہ لوئر کرم ایجنسی کے علاقے بادشاہ کوٹ میں پاک افغان سرحد کے قریب ہوا، جہاں امریکی جاسوس طیارے سے داغہ گیا میزائل ایک گھر کے قریب گرا، جس کے نتیجے میں ایک شخص زخمی ہوگیا۔

عینی شاہدین کے مطابق زخمی شخص کی شناخت خالد کے نام سے ہوئی جو افغان شدت پسند بتایا جاتا ہے۔

مزید پڑھیں: پاک-افغان سرحد پر ڈرون حملہ، کمانڈر سمیت دو ہلاک

ذرائع کے مطابق دوسرا ڈرون حملہ لوئر کرم ایجنسی سے ملحقہ افغان صوبے خوست کے سرحدی علاقے خانی کلے میں ہوا، جہاں شدت پسندوں کے ٹھکانے کے قریب داغے گئے میزائل سے 2 افغان شدت پسند مارے گئے۔

عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ آج صبح سے ہی افغان سرحد کے قریب علاقوں پر جاسوس طیاروں کی پروازیں جاری تھیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ ماہ 26 دسمبر کو بھی کرم ایجنسی میں پاک افغان سرحد پر ڈرون حملہ کیا گیا تھا، جس میں کمانڈر سمیت دو افراد ہلاک جبکہ گاڑی مکمل طور پر تباہ ہوگئی تھی۔

یہ بھی پڑھیں: افغانستان: ڈرون حملے میں 12 افراد ہلاک

اس سے قبل 18 دسمبر کو بھی اسی علاقے میں ڈرون حملہ ہوا تھا، اس حملے میں ایک کمپاؤنڈ کو نشانہ بنایا گیا تھا تاہم کسی قسم کے جانی نقصان کی خبر سامنے نہیں آئی تھی۔

گزشتہ برس 20 اکتوبر کو بھی افغانستان کے صوبے پکتیا میں ڈرون حملے کے نتیجے میں 12 مبینہ دہشت گردوں کو ہلاک کرنے اور متعدد کو زخمی کرنے کا دعویٰ کیا گیا تھا۔