گوگل نے ایک بار پھر اپنے نئے فون کو 'حادثاتی' طور پر لیک کردیا

14 جولائ 2020

ای میل

— فوٹو بشکریہ نائن ٹو فائیو گوگل
— فوٹو بشکریہ نائن ٹو فائیو گوگل

بیشتر کمپنیاں اپنے نئے اسمارٹ فونز کو متعارف کرائے جانے تک چھپانے کی کوشش کرتی ہیں مگر گوگل اس معاملے میں سب سے الگ ہے۔

درحقیقت گوگل اکثر اپنے پکسل فونز کی تفصیلات خود ہی لیک کردیتا ہے، اب چاہے وہ غلطی سے ہو یا دانستہ طور پر۔

گوگل پکسل 3 اور پکسل 4 کی تاریک رونمائی گوگل نے باضابطہ اعلان سے پہلے لیک کی تھی اور اس سال بھی نئے سستے پکسل 4 اے کی تصدیق خود ہی کردی ہے۔

ویسے تو اس فون کے بارے میں لگتا ہے کہ تمام تفصیلات پہلے ہی لوگ جان چکے ہیں بس متعارف کرانے کی تاریخ کے علاوہ۔

مگر اب گوگل نے خود ہی اپنے ایک آن لائن اسٹور پر حادثاتی (یا جان کر) اس کا ڈیزائن بھی لیک کردیا ہے۔

کچھ پراسرار وجوہات کے باعث یہ نیا فون کمپنی کے گوگل نیسٹ وائی فائی کے کینیڈین پیج پر نمودار ہوگیا۔

اس لیک سے تصدیق ہوگئی ہے کہ اس کا ڈیزائن کیسا ہوگا جو کہ پکسل 4 سے بہت زیادہ ملتا جلتا ہے، بس فرنٹ پر ڈوئل کی جگہ ایک کیمرا ہول پنچ ڈیزائن میں دیا گیا ہے۔

درحقیقت پہلی بار گوگل کی جانب سے پنچ ہول سیلفی کیمرا دے کر آل اسکرین ڈسپلے دیا جارہا ہے۔

تصویر میں 12 مئی کی تاریخ نظر آئی جو کہ گوگل کے سالانہ ایونٹ کے آغاز کی تاریخ تھی، جسے کورونا وائرس کی وبا کے نتیجے میں منسوخ کردیا گیا تھا۔

پکسل 4 اے اس ایونٹ کے موقع پر متعارف ہونا تھا مگر ایسا نہیں ہوسکا، اب یہ کب دستیاب ہوگا، فی الحال کمپنی نے کچھ بھی واضح نہیں کیا۔

اس فون کی قیمت 350 ڈالرز (58 ہزار پاکستانی روپے سے زائد) رکھے جانے کا امکان ہے تاکہ یہ ایپل کے آئی فون ایس ای کو ٹکر دے سکے۔

ایسی افواہیں بھی موجود ہیں گوگل پکسل 4 اے میں 5 جی سپورٹ دیئے جانے کا بھی امکان ہے۔

واضح رہے کہ گوگل پکسل اسمارٹ فون سیریز کو خالص اینڈرائیڈ آپریٹنگ سسٹم اور کیمرا سسٹم کی وجہ سے بہترین سمجھا جاتا ہے۔

گوگل کے یہ فون فلیگ شپ ڈیوائسز میں شامل ہیں جن کی قیمت اکثر اتنی زیادہ ہوتی ہے کہ بیشتر افراد خرید نہیں پاتے اور اسی کو دیکھتے ہوئے گزشتہ سال کمپنی نے ان کے سستے ورژن پکسل 3 اے کی شکل میں متعارف کرائے تھے۔

اس فون کو بھی متعارف کرائے جانے سے قبل گوگل نے اپنی ویب سائٹ پر اس کی تصدیق کی تھی۔