لاہور ہائیکورٹ کا اپنے ججز کی سالگرہ منانے کا فیصلہ

اپ ڈیٹ 28 جنوری 2022
ججز کی سالگراہ سے متعلق سرکلر ایڈیشنل رجسٹرار پروٹوکول نے جاری کیا—فائل فوٹو: شٹر اسٹاک
ججز کی سالگراہ سے متعلق سرکلر ایڈیشنل رجسٹرار پروٹوکول نے جاری کیا—فائل فوٹو: شٹر اسٹاک

لاہور ہائی کورٹ نے کیک کاٹ کر اپنے حاضر سروس ججز کی سالگراہ منانے کا فیصلہ کیا ہے۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق ایڈیشنل رجسٹرار (پروٹوکول) اسد حفیظ کی جانب سے ایک سرکلر جاری کیا گیا تھا۔

سرکلر میں کہا گیا کہ 'چیف جسٹس تمام معزز ججز کو یہ بتاتے ہوئے خوشی محسوس کر رہے ہیں کہ اب سے حاضر سروس ججز کی سالگرہ چائے کے وقفے کے دوران کیک کاٹ کر منائی جائے گی'۔

یہ بھی پڑھیں: کیا سالگرہ کی تقاریب کووڈ کے پھیلاؤ میں کردار ادا کرتی ہیں؟

سرکلر میں کہا گیا کہ سالگرہ کے لیے متعلقہ جج کی دستیابی کو مدِنظر رکھا جائے گا اور کیک پرنسپل سیٹ پر ججز کے کامن روم یا بینچز پر کاٹا جاسکتا ہے۔

سرکلر، جس میں 22 جنوری 2022 کی تاریخ درج ہے، سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہوا اور عدلیہ کے ادارے پر تنقید کا باعث بن گیا۔

اس سلسلے میں ڈان سے بات کرتے ہوئے ایڈووکیٹ خرم چغتائی نے کہا کہ بظاہر ایسا سرکلر جاری کرنا غلط اور غیر مناسب مشورے کا نتیجہ ہے۔

مزید پڑھیں: سالگرہ کا مہینہ شخصیت کے کونسے راز بتاتا ہے؟

ان کا خیال تھا کہ ایسے انتظامی فیصلوں کا کوئی سرکلر جاری کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔

ایڈووکیٹ خرم چغتائی نے کہا کہ سرکلر غیر ضروری ہے اور عوام کی اکثریت اور قانونی برادری نے اس کا خیر مقدم نہیں کیا۔

تبصرے (0) بند ہیں