نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کے سابق کھلاڑی اور ورلڈ الیون کا حصہ گرانٹ ایلیٹ نے آزادی کپ کے لیے سیکیورٹی کے انتظامات کو غیرمعمولی قرار دیتے ہوئے امید ظاہر کی کہ پاکستان میں ٹیسٹ کرکٹ کی واپسی ہوگی۔

گرانٹ ایلیٹ، پاکستان کا دورہ کرنے والی آئی سی سی کی ورلڈ الیون کا حصہ تھے جس میں سات ممالک کے کھلاڑی شامل تھے۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق آزادی کپ کے تیسرے اور آخری ٹی ٹوئنٹی کے بعد نجی ٹی وی چینلز سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ 'میرا یہاں (لاہور) آنے کا تجربہ شانداررہا، سیکیورٹی غیرمعمولی تھی اور ہم سب کھلاڑیوں نے تحفظ کا احساس کیا'۔

یہ بھی پڑھیں:آزادی کپ کے کامیاب انعقاد پر آئی سی سی کی مبارک باد

آل راؤنڈر نے کہا کہ 'جب ہم گراؤنڈ سے ہوٹل جاتے تو یہ اتنا ہی محفوظ تھا جتنا دیگر کسی ملک میں ہوتا ہے، یہ کرکٹ کھیلنا والا واحد ملک تھا جہاں میں نہیں آیا تھا لیکن اب میں یہ کہہ سکتا ہوں کہ میں پاکستان میں کرکٹ کھیل چکا ہوں'۔

انھوں نے کہا کہ 'یہ شاندار ہے، میزبانی، میدان میں تماشائیوں کا تعاون یہاں پر بہتر تھا'۔

ایلیٹ نے سیکیورٹی کے صحیح اقدامات کی صورت میں پاکستان میں مزید بین الاقوامی ٹیموں کے دورے کا توقع ظاہر کیا۔

مزید پڑھیں:ورلڈ الیون کو 33 رنز سے شکست، آزادی کپ پاکستان کے نام

نیوزی لینڈ کے سابق کرکٹر نے پرامید لہجے میں کہا کہ 'اگر سیکیورٹی منصوبے جیسے آج ہیں ایسے ہی رہے تو دوسری ٹیمیں بھی یہاں آئیں گی'۔

ان کا کہنا تھا کہ 'امید ہے کہ پاکستان اپنے گھر میں ٹیسٹ کرکٹ دوبارہ کھیلے گا جو بچوں کے لیے اچھا ہوگا کہ وہ اپنے ہیروزکو کھیلتا دیکھ پائیں گے'۔