پولیس نے کراچی کے علاقے نیپئر روڈ سے مبینہ طور پر ایک کم عمر بچے کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والے ملزم کو گرفتار کرلیا۔

ڈان کو نیپئر کے ایس ایچ او اعظم خان کا کہنا تھا کہ ایک بیوہ خاتون نے درخواست جمع کرائی تھی کہ ان کا 6 سالہ بچہ لی مارکیٹ کے علاقے میں بیکری سے کھانے پینے کی کچھ چیزیں لینے گیا تھا جہاں مبینہ طور پر ان کے ساتھ زیادتی کی گئی۔

پولیس نے مبینہ ملزم، مذکورہ بیکری کے ملازم، کو گرفتار کر کے ان کے خلاف تعزیرات پاکستان کے سیکشن 377 کے تحت مقدمہ درج کرلیا۔

ایس ایچ او کا کہنا تھا کہ مبینہ ملزم کو جوڈیشل مجسٹریٹ کے سامنے پیش کیا گیا جہاں پولیس نے تفتیش کے لیے دو روزہ ریمانڈ حاصل کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ بچے کا سول ہسپتال کراچی سے طبی معائنہ کروایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے کسی قسم کی جنسی زیادتی کے تاثر کو رد کیا ہے۔

پولیس افسر نے کہا کہ پولیس معاملے کی مزید تفتیش کررہی ہے۔

خیال رہے کہ پنجاب کے شہر قصور میں 6 سالہ بچی زینب امین کو اغوا کے بعد قتل کرکے کچرا کنڈی میں پھینک دیا گیا تھا جس کے بعد پورے ملک میں احتجاج کا سلسلہ شروع ہوا تھا۔

متاثرہ خاندان نے چیف جسٹس آف پاکستان اور آرمی چیف سے معاملے کا نوٹس لے کر انصاف فراہم کرنے کی اپیل کی تھی جس کا جواب دونوں چیفس نے دیا تھا جبکہ چیف جسٹس نے معاملے پر از خود نوٹس لیتے ہوئے آئی جی پنجاب سے رپورٹ بھی طلب کرلی تھی۔

پنجاب کے وزیر اعلیٰ شہباز شریف نے متاثرہ خاندان سے ملاقات کرکے ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچانے کا وعدہ کیا تھا۔