میاں چنوں: چند ہزارکا قرض نہ اتارنے پر مزدور پر بہیمانہ تشدد

10 ستمبر 2018

ای میل

پنجاب میں میاں چنوں کے علاقے تلمبہ میں 40 ہزار روپے قرض واپس نہ کرنے پر بااثر افراد نے محنت کش کو اغوا کرکے بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا۔

پولیس کے مطابق میاں چنوں کے نواحی گاؤں تلمبہ میں بااثر افراد نے قرض کی رقم واپس نہ کرنے پر محنت کش کو اغوا کرکے تشدد کیا۔

اپنے بیان میں متاثرہ شخص کا کہنا تھا کہ پانچ ملزمان نے اسے زبردستی ڈیرے میں لے جاکر تشدد کا نشانہ بنایا، ملزمان نے اس کے سر، مونچھوں اور بھنووں کے بال مونڈھ کر اس کے چہرے پر کالا تیل لگادیا تھا۔

متاثرہ شخص کا کہنا تھا کہ اس پر تشدد اس لیے کیا گیا کیونکہ وہ قرض کی مد میں لیے گئے 40 ہزار روپے واپس کرنے میں ناکام ہوگیا تھا۔

اس کا کہنا تھا کہ اس نے تھانے میں درخواست بھی دائر کی لیکن پولیس نے تاحال کوئی کارروائی نہیں کی۔

متاثرہ شخص کا مزید کہنا تھا کہ ملزمان اسے اب بھی سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔

مزید پڑھیں : میرپور: مسجد میں چوری کا الزام، بزرگ شہری پر بہیمانہ تشدد

تھانہ تلمبہ کے ایس ایچ او فرخ سجاد نے اس حوالے سے بتایا کہ ملزمان کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں،ملزمان کی گرفتاری کے بعد ایف آئی آر درج کی جائے گی۔

انہوں نے مزید بتایا کہ ملزمان کی گرفتاری کے بعد معاملے کی مکمل تفتیش کی جائے گی۔

یاد رہے کہ چند روز قبل ۤآزاد جموں و کشمیر کے علاقے میں 55 سالہ بزرگ کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا تھا۔