سپریم کورٹ: وزیراعلیٰ سندھ کی نااہلی کی درخواست سماعت کیلئے منظور

اپ ڈیٹ 06 اگست 2019

ای میل

سپریم کورٹ نے مراد علی شاہ کو نوٹس جاری کردیا — فائل فوٹو/ڈان نیوز
سپریم کورٹ نے مراد علی شاہ کو نوٹس جاری کردیا — فائل فوٹو/ڈان نیوز

سپریم کورٹ آف پاکستان نے وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی نااہلی سے متعلق نظرثانی درخواست سماعت کے لیے منظور کرتے ہوئے انہیں نوٹس جاری کردیا۔

عدالت عظمیٰ میں جسٹس عمر عطا بندیال، جسٹس عظمت سعید اور جسٹس اعجاز الاحسن پر مشتمل 3 رکنی بینچ نے مراد علی شاہ کے خلاف دائر درخواست پر سماعت کی۔

دوران سماعت درخواست گزار روشن علی ابڑو کے وکیل حامد خان نے عدالت کو بتایا کہ 'مراد علی شاہ نے الیکشن 2013 میں جھوٹا بیان حلفی جمع کرایا اور انہوں نے کینیڈین شہریت چھوڑنے کا سرٹیفکیٹ جمع نہیں کرایا تھا'۔

مزید پڑھیں: وزیراعظم عمران خان کی نااہلی سے متعلق درخواست پر سماعت آئندہ ہفتے مقرر

ان کا کہنا تھا کہ 'مراد علی شاہ کو دوہری شہریت پر سپریم کورٹ نے نااہل قرار دیا تھا اور انہوں نے 2013 کے فیصلے پر نظرثانی کے لیے رجوع نہیں کیا'۔

انہوں نے کہا کہ 'مراد علی شاہ کی نااہلی کا فیصلہ حتمی ہوچکا ہے'۔

اس موقع پر جسٹس عظمت سعید کا کہنا تھا کہ 'ہر امیدوار اپنی اہلیت کا بیان حلفی ریٹرننگ افسر کو جمع کرواتا ہے اور جھوٹا بیان حلفی دینے پر آرٹیکل 62 'ون ایف' کا اطلاق ہوتا ہے'۔

یہ بھی پڑھیں: آصف زرداری نااہلی درخواست: مطمئن کرنا ہوگا کہ یہ کیس مفادِ عامہ کا ہے، ہائیکورٹ

جسٹس عمر عطا بندیال کا کہنا تھا کہ آرٹیکل 62 ون (ایف) کے لیے عدالتی ڈیکلریشن درکار ہوگی جس پر جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ ہی ڈیکلریشن ہے۔

بعد ازاں 3 رکنی بینچ نے اکثریت کی بنیاد پر درخواست سماعت کے لیے منظور کی اور مراد علی شاہ کو نوٹس جاری کر دیا۔

جسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں قائم تین رکنی بینچ اس کیس کی سماعت کرے گا جو دوہری شہریت/اقامہ کی بنیاد پر نااہلیت سے متعلق ہے۔