برطانوی شہزادے نے کم عمر لڑکیوں سے جنسی تعلقات کے الزامات کو مسترد کردیا

17 نومبر 2019

ای میل

ورجینیا رابرٹ گفی کے مطابق شہزادے نے ان کے ساتھ  متعدد بار سیکس کیا—فوٹو: آئرش ٹائمز/ ورجینیا رابرٹس
ورجینیا رابرٹ گفی کے مطابق شہزادے نے ان کے ساتھ متعدد بار سیکس کیا—فوٹو: آئرش ٹائمز/ ورجینیا رابرٹس

ملکہ برطانیہ ایلزبتھ دوئم کے چھوٹے بیٹے 66 سالہ شہزادہ اینڈریو (ڈیوک آف یارک) نے خود پر لگے کم عمر لڑکیوں کے ساتھ جنسی تعلقات کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے انہیں جھوٹا قرار دے دیا۔

شہزادہ اینڈریو کا نام رواں برس 10 اگست کو ’جیفری اپسٹن سیکس اسکینڈل‘ میں سامنے آیا تھا۔

یہ اسکینڈل اس وقت عالمی توجہ کا مرکز بنا جب مذکورہ کیس کے مرکزی ملزم ارب پتی امریکی شخص 69 سالہ جیفری اپسٹن نے نیو یارک کے جیل میں خودکشی کرلی۔

جیفری اپسٹن کو جنسی جرائم کے تحت رواں برس جولائی میں گرفتار کیا گیا تھا اور انہوں نے اپنے خلاف 2 ہزار صفحات پر مشتمل ثبوتوں کو عدالت میں پیش کیے جانے کے بعد اگست میں جیل کے اندر خود کشی کرلی تھی۔

جیفری اپسٹن پر الزام تھا کہ انہوں نے کئی سال تک کم عمر لڑکیوں سمیت درجنوں خواتین کو جنسی تشدد کا نشانہ بنانے سمیت انہیں نہ صرف جنسی غلام بنائے رکھا بلکہ انہیں اپنے دوستوں اور مہمانوں کی جنسی خواہشات کی تکمیل کے لیے بھی استعمال کیا۔

سیکس اسکینڈل جیفری اسٹپن کی جانب سے 10 اگست کو جیل میں خودکشی کرنے کے بعد سامنے آیا تھا—فوٹو: رائٹرز
سیکس اسکینڈل جیفری اسٹپن کی جانب سے 10 اگست کو جیل میں خودکشی کرنے کے بعد سامنے آیا تھا—فوٹو: رائٹرز

ان پر یہ الزامات بھی ہیں کہ انہوں نے جن کم عمر لڑکیوں کو کئی سال تک جنسی غلام بنائے رکھا بعد ازاں انہوں نے ان لڑکیوں کو عمر رسیدہ ہونے پر نئی لڑکیوں کو ان کی جنسی خواہشات کو پورا کرنے کے لیے بھرتی کرنے کے لیے مجبور کیا۔

جیفری اپسٹن کے خلاف سب سے پہلے برطانیہ کی خاتون ورجینیا رابرٹ گفی سامنے آئی تھیں، جنہوں نے دعویٰ کیا تھا کہ جیفری اسپٹن نے انہیں 14 سال کی عمر میں جنسی غلام بنایا اور کئی سال تک انہیں جنسی مقاصد کے لیے استعمال کرتے رہے۔

ورجینیا رابرٹ گفی کے مطابق انہیں ارب پتی شخص کے لیے ان کی محبوبہ گیسلین میکسویل نے بھرتی کیا تھا۔

اسی برطانوی خاتون نے دعویٰ کیا تھا کہ انہیں برطانوی شہزادے اینڈریو کو جنسی لذت پہنچانے کا حکم بھی دیا گیا۔

خاتون نے یہ دعویٰ بھی کیا تھا کہ جیفری اپسٹن نے انہیں 1999 سے 2001 تک تین مختلف مواقع پر برطانوی شہزادے کے ساتھ جنسی تعلقات استوار کرنے کے لیے دباؤ ڈالا۔

مذکورہ خاتون اور شہزادہ اینڈریو کی ایک ساتھ کھینچی گئی تصاویر اور دونوں کی ایک گھر میں موجودگی کی ویڈیوز بھی سامنے آئیں اور خاتون نے دعویٰ کیا کہ مذکورہ ویڈیوز اور تصاویر اس وقت کھینچی گئیں جب برطانوی شہزادے نے ان کے ساتھ ’سیکس‘ کیا۔

یہ اسکینڈل سامنے آنے کے بعد امریکا سمیت برطانیہ بھر میں تہلکہ مچ گیا تھا اور اسکینڈل سامنے آنے کے بعد ہی اگرچہ شہزادہ اینڈریو نے مختصر بیان میں ان الزامات کو جھوٹا قرار دیا تھا۔

تاہم ان پر اسکینڈل کے حوالے سے دباؤ تھا اور انہیں کئی ماہ سے کسی بھی عوامی محفل میں نہیں دیکھا گیا اور شاہی محل پر اسکینڈل کے حوالے سے وضاحت کرنے کے لیے دباؤ بڑھتا گیا۔

بڑھتے دباؤ کے بعد اب پہلی بار شہزادہ اینڈریو نے ایک انٹرویو میں اپنے اوپر لگائے گئے تمام الزامات کو مسترد کرتے ہوئے انہیں غیر حقیقی اور جھوٹا قرار دیا۔

برطانوی نشریاتی ادارے ’بی بی سی‘ کو دیے گئے خصوصی انٹرویو میں شہزادہ اینڈریو نے کہا کہ ان پر کم عمر لڑکیوں کے ساتھ جنسی تعلقات استوار کرنے کے الزامات بے بنیاد ہیں اور انہوں نے ورجینیا رابرٹ گفی کے ساتھ بھی کبھی اس طرح کا کام نہیں کیا۔

ورجینیا رابرٹ گفی نے دعویٰ کیا تھا کہ برطانوی شہزادے نے پہلی بار 17 سال کی عمر میں سیکس کیا، بعد میں بھی کرتا رہا —فوٹو: نیویارک ٹائمز
ورجینیا رابرٹ گفی نے دعویٰ کیا تھا کہ برطانوی شہزادے نے پہلی بار 17 سال کی عمر میں سیکس کیا، بعد میں بھی کرتا رہا —فوٹو: نیویارک ٹائمز

شہزادہ اینڈریو نے ان الزامات کو بھی مسترد کیا کہ انہوں نے ورجینیا رابرٹ گفی کے ساتھ متعدد کم عمر لڑکیوں کے گروپ کے طور پر جنسی تعلقات استوار کیے۔

برطانوی شہزادے کا کہنا تھا کہ جس وقت کا خاتون ذکر کر رہی ہیں، اس وقت انہیں بیماری تھیں اور انہیں ڈاکٹرز نے ایسا عمل کرنے سے روک رکھا تھا۔

برطانوی شہزادے نے اپنے خلاف لگائے گئے تمام جنسی الزامات کو مسترد کیا، تاہم اعتراف کیا کہ الزام لگانے والی خاتون سے ان کی دوسرے لوگوں کے سامنے ملاقاتیں ہوئی ہیں۔

برطانوی شہزادے کا کہنا تھا کہ وہ الزام لگانے والی خاتون کے ساتھ سامنے آنے والی ایک پرانی تصویر کے حوالے سے وہ کچھ نہیں کہنا چاہتے، انہیں یاد نہیں پڑتا کہ انہوں نے ایسی کوئی تصویر کچھوائی ہو، البتہ تفتیشی ادارے بھی یہ ثابت کرنے میں ناکام ہوئے ہیں کہ مذکورہ تصویر جعلی ہے۔

شہزادہ اینڈریو نے تاثر دیا کہ کوئی نہ کوئی طریقہ استعمال کرکے اس تصویر کو اصلی تصویر کی طرح بنایا گیا ہے۔

برطانوی شہزادے نے امریکی ارب پتی شخص جیفری اپسٹن کے ساتھ تعلقات کا بھی اعتراف کیا، تاہم اس بات سے انکار کیا کہ انہوں نے انہیں جنسی لذت کے لیے لڑکیاں فراہم کیں۔

شہزادہ اینڈریو کے مطابق جس وقت ان کی اور جیفری اپسٹن کی دوستی تھی، اس وقت وہ اس طرح کے کام نہیں کرتے تھے اور انہیں بھی ان کے ایسے کرتوتوں کا علم نہیں تھا۔

برطانوی شہزادے نے واضح طور پر کسی بھی کم عمر لڑکی یا خاتون کے ساتھ جنسی تعلقات استوار کرنے کے الزامات کو مسترد کیا اور ساتھ ہی کہا کہ ان کے حوالے سے لوگوں کے خیالات غلط ہیں وہ کبھی بھی پارٹیاں نہیں کرتے، وہ سیدھی سادی زندگی گزارنے پر یقین رکھتے ہیں۔

ورجینیا رابرٹ گفی کو جنسی غلام بنائے جانے کا انکشاف بھی ہوا تھا—فوٹو: میامی ہیرالڈ
ورجینیا رابرٹ گفی کو جنسی غلام بنائے جانے کا انکشاف بھی ہوا تھا—فوٹو: میامی ہیرالڈ