ادارتی پالیسی میں 'مداخلت': بی بی سی نے آج ٹی وی پر 'سیربین' کی نشریات ختم کردیں

اپ ڈیٹ 17 جنوری 2021

ای میل

—فوٹو: بی بی سی
—فوٹو: بی بی سی

برٹش براڈکاسٹنگ کارپوریشن (بی بی سی) نے کہا ہے کہ اردو سروس کی خبریں اور کرنٹ افیئر کے پروگرام 'سیربین' کے 'بلیٹن میں مداخلت' کی وجہ سے آج ٹی وی پر نشریات ختم کردیں۔

اس اقدام کا مطلب ہے بی بی سی اردو کے بلیٹن اب پاکستان میں ٹیلی وژن دیکھنے والوں کے لیے دستیاب نہیں ہوں گے۔

مزید پڑھیں: یوم آزادی صحافت اور بے سہارا صحافی

بی بی سی ورلڈ سروس کے ڈائریکٹر جیمی انگوس نے کہا کہ بی بی سی کو 'اکتوبر 2020 سے ہمارے نیوز بلیٹن میں مداخلت" کا سامنا کرنا پڑا ہے اور اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے کارپوریشن نے آج ٹی وی کو 'بہت وقت' دیا۔

انہوں نے کہا کہ '(ہم) نے آج ٹی وی کو ان کی کوششوں کے لیے بہت وقت دیا کہ وہ پروگرام نشر کرنے کی سہولت پر واپس آجائیں، چونکہ یہ مداخلت جاری رہی اور دونوں طرف سے نیک نیتی سے کی جانے والی کوششوں کے باوجود بی بی سی کے پاس شراکت کو فوری طور پر ختم کرنے کے سوا کوئی متبادل نہیں تھا، ہمیں افسوس ہے پاکستان میں ہمارے سامعین کو رکاوٹ کا سامنا رہا'۔

انہوں نے ناظرین کو مخاطب کرکے کہا کہ وہ ہماری ویب سائٹ، فیس بک پیج اور یوٹیوب چینل کے ذریعے بی بی سی اردو کے پروگرام تک رسائی حاصل کرسکتے ہیں۔

ڈائریکٹر نے اپنے پیغام میں کہا کہ ہمارے پروگراموں میں کوئی مداخلت ہمارے سامعین کے ساتھ اعتماد کی سنگین خلاف ورزی ہے، جس کی بی بی سی اجازت نہیں دے سکتا۔

بی بی سی اردو کی ایک رپورٹ کے مطابق بی بی سی ورلڈ سروس نے 2014 میں شراکت کے معاہدے کے تحت آج ٹی وی پر پروگرام نشر کرنا شروع کیا تھا۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ اس معاہدے کے مطابق بی بی سی، اپنی آزاد ادارتی پالیسی، مقامی زبان، مقامی سامعین اور مقامی ٹی وی چینل کے مطابق اس پروگرام کو تشکیل دیتا ہے۔

مزید پڑھیں: آزادی صحافت کی فہرست میں پاکستان 3 درجے تنزلی کے ساتھ 145 ویں نمبر پر

بی بی سی نے متعدد ممالک میں نجی چینلز کے ساتھ اس طرح کے معاہدے کیے ہیں لیکن ادارتی پالیسی بی بی سی کے ماتحت رہتی ہے۔

2019 میں بی بی سی اردو نے سیربین کی ریڈیو نشریات کو ختم کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس کی ترجیح ڈیجیٹل میڈیا پلیٹ فارم اور ٹیلی ویژن ہوگی۔

بی بی سی اردو کی ایک رپورٹ نے اس وقت کہا گیا تھا کہ 'پاکستان میں بی بی سی کے سامعین، قارئین اور ناظرین کی بہتر خدمت اور ہمارے وسائل کے مناسب استعمال کے مقصد کے حصول کے لیے 'میڈیا آؤٹ لیٹ کی شارٹ ویو کی نشریات کو ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا'۔

اس رپورٹ کے مطابق 2018 میں بی بی سی کے ایک عوامی سروے میں انکشاف ہوا تھا کہ ٹی وی سامعین میں تیزی سے اضافے اور ڈیجیٹل میڈیا تک وسیع پیمانے پر رسائی کی وجہ سے شارٹ ویو پر ریڈیو سننے والوں کی تعداد پاکستان میں بہت زیادہ کم ہوگئی ہے۔