سپریم کورٹ نے صحافی ذیشان بٹ کے قتل کا نوٹس لے لیا

اپ ڈیٹ 04 اپريل 2018

ای میل

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے سیالکوٹ کی تحصیل سمڑیال میں صحافی ذیشان بٹ کے قتل کا نوٹس لیتے ہوئے انسپکٹر جنرل (آئی جی) پنجاب پولیس سے 24 گھنٹے میں رپورٹ طلب کرلی۔

خیال رہے کہ صحافی ذیشان کو 2 روز قبل سیالکوٹ کی تحصیل سمڑیال میں قتل کیا گیا تھا۔

عدالت عظمیٰ نے مذکورہ نوٹس پریس ایسوسی ایشن آف سپریم کورٹ کی درخواست پر لیا اور آئی جی پنجاب پولیس سے 24 گھنٹے میں رپورٹ طلب کرلی۔

مزید پڑھیں: کراچی: خاتون صحافی کے ’قاتل‘ کی گرفتاری کا دعویٰ

علاوہ ازیں سیالکوٹ میں صحافی ذیشان بٹ کے قتل کے ملزمان عمران اسلم عمرانی اور شاہد چیمہ کے خلاف تھانہ بگووالہ میں قتل کا مقدمہ درج کرکے ان کے نام بلیک لسٹ میں ڈال دیئے گئے۔

ڈی پی او سیالکوٹ نے اس کیس میں ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) پاسپورٹ، فیڈرل انویسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) اور چئیرمین نادرا سے رجوع کیا۔

ڈی پی او نے اپنی درخواست میں اداروں کے حکام سے مطالبہ کیا کہ ملزمان کے پاسپورٹ اور شناختی کارڈز کو بلیک لسٹ میں رکھا جائے کیونکہ ملزمان واردات کے بعد سے رپورش ہوچکے ہیں اور بیرون ملک فرار کا خدشہ ہے۔

یہ بھی پڑھیں: 2017: دنیا بھر میں 68 صحافیوں کا قتل

بعد ازاں ڈی پی او سیالکوٹ کی درخواست پر ملزمان کے نام بلیک لسٹ میں شامل کردیئے گئے جبکہ ملزمان کی گرفتاری کیلئے وزیر داخلہ احسن اقبال نے بھی تمام کو اداروں کو ہدایت جاری کردی۔