’حقیقی آزادی مارچ‘ سے متعلق اہم نکات:
لائیو

’حقیقی آزادی مارچ‘ سے متعلق اہم نکات:

  • پاکستان تحریک انصاف کے لانگ مارچ کا اختتامی جلسہ راولپنڈی میں منعقد ہوا جہاں عمران خان نے کہا کہ تمام اسمبلیوں سے باہر آنے کا فیصلہ کیا ہے۔
  • پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ تحریک جاری رہے گی۔
  • پی ٹی آئی کا جلسہ راولپنڈی میں فیض آباد سے تبدیل کرکے رحٰمن آباد کردیا گیا اور مری روڈ آمد و رفت کے لیے بند کردیا گیا تھا۔
  • رواں ماہ کے اوائل میں پنجاب کے علاقے وزیرآباد میں فائرنگ سے عمران خان اور دیگر کے زخمی ہونے کے بعد مارچ میں خلل پڑا تھا۔
  • پی ٹی آئی کے لانگ مارچ کا مقصد حکومت کو انتخابات کے اعلان پرمجبور کرنا تھا۔
Nov 27, 2022
7:45 PM

پنجاب حکومت عمران خان کی اپنی حکومت ہے اور ہمارے پاس امانت ہے، چوہدری پرویز الہٰی

5:32 PM

’عمران خان اسلام آباد آتا تو اس کی تباہی مچ جاتی، 10 لاکھ لوگوں کا کہہ کر 10 ہزار جمع کرسکے‘

3:43 PM

سب کو انتظار ہے کہ عمران خان کب اسمبلیوں سے استعفوں پر یوٹرن لیتے ہیں، حنا پرویز بٹ

3:34 PM

عمران خان صوبائی اسمبلیوں سے نکل آئے تو567نشستیں خالی اور اپریل میں عام انتخابات ہوں گے، شیخ رشید

3:25 PM

عمران خان غیر متعلقہ ہو چکے، حکومت ان کی 4 سالہ تباہی کو ٹھیک کرنے کی کوشش کر رہی ہے، مریم اورنگزیب

2:21 PM

عمران خان جلد سلاخوں کے پیچھے ہوں گے، شرجیل میمن کا دعویٰ

2:16 PM

پی ٹی آئی کے جلسے کے دوران راولپنڈی کے بیشتر علاقوں میں کاروبار زندگی معمول کے مطابق رہا

2:08 PM

قانون کی حکمرانی اور حقیقی آزادی کے قیام تک تحریک جاری رہے گی، عمران خان

Nov 26, 2022
10:56 PM

اسد عمر لانگ مارچ میں محنت پر پی ٹی آئی کے کارکنوں کے مشکور

10:52 PM

پی ٹی آئی کے استعفوں سے 563 نشستوں پر انتخابات ہوں گے، فواد چوہدری

7:45 PM, Nov 27

پنجاب حکومت عمران خان کی اپنی حکومت ہے اور ہمارے پاس امانت ہے، چوہدری پرویز الہٰی

وزیر اعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الہٰی نے پی ٹی آئی چیئرمین کی جانب سے اسمبلیوں سے نکلنے کے فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان اسمبلیاں توڑنے کا کہیں گے تو ایک منٹ کی دیر نہیں ہوگی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر جاری بیان میں پرویز الہٰی کا کہنا تھا کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) اور رانا ثنا اللہ جیسے لوگ کیسی باتیں کررہے ہیں، پنجاب حکومت عمران خان کی اپنی حکومت ہے، اور یہ ہمارے پاس امانت ہے، ہم وضع دار لوگ ہیں، جس کے ساتھ چلتے ہیں اس کا ساتھ نہیں چھوڑتے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اسمبلیوں سے جب استعفے دیں گے تو وزیر اعظم شہباز شریف کی 27 کلومیٹر کی حکومت 27 گھنٹے بھی نہیں چل سکے گی۔

5:32 PM, Nov 27

’عمران خان اسلام آباد آتا تو اس کی تباہی مچ جاتی، 10 لاکھ لوگوں کا کہہ کر 10 ہزار جمع کرسکے‘

جمعیت علمائے اسلام (ف) اور حکمران اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے سابق وزیر اعظم عمران خان پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا ہے وہ کہتے ہیں اسلام آباد آتا تو تباہی مچ جاتی، اگر وہ آتے تو ان کی تباہی مچ جاتی، 10 لاکھ لوگوں کو اکھٹا کرنے کا کہہ کر صرف 10 ہزار لوگ جمع کرسکے۔

اپر کوہستان میں پارٹی کے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئےانہوں نے کہا کہ ہم نے صرف عمران خان کی حکومت ختم نہیں کی، ہم نے ملک کو بچایا ہے، ہم نے پاکستان کو عالمی تنہائی اور معاشی دیوالیہ پن سے بچایا۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کہتے ہیں کہ ان کی حکومت کے خلاف سازش ہوئی ہے، ان کی حکومت کے خلاف کوئی سازش نہیں ہوئی، ہم نے ڈنکے کی چوٹ پر انہیں اقتدار سے نکالا ہے، ہم نے انہیں گریبان سے پکڑ کر اقتدار سے باہر کیا ہے۔

مزید خبر پڑھنے کے لیے یہاں کلک کریں

3:43 PM, Nov 27

سب کو انتظار ہے کہ عمران خان کب اسمبلیوں سے استعفوں پر یوٹرن لیتے ہیں، حنا پرویز بٹ

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی رکن صوبائی اسمبلی حنا پرویز بٹ نے کہا ہے کہ ’اب سب کو انتظار ہے کہ نیازی صاحب (عمران خان) کب اسمبلیوں سے استعفوں پر یوٹرن لیتے ہیں۔‘

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کردہ بیان میں حنا پرویز بٹ نے کہا کہ عمران خان نے کل جو اعلان کیا وہ بس ایک ’فیس سیونگ‘ کی ناکام کوشش تھی۔

3:34 PM, Nov 27

عمران خان صوبائی اسمبلیوں سے نکل آئے تو567نشستیں خالی اور اپریل میں عام انتخابات ہوں گے، شیخ رشید

سابق وزیر داخلہ اور عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہا ہے کہ عمران خان صوبائی اسمبلیوں سے نکل آئے تو567نشستیں خالی اور اپریل میں عام انتخابات ہوں گے۔

ٹوئٹر پر جاری اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ میں پہلے ہی کابینہ میں کہتا تھا کہ اسمبلیاں توڑ دیں اور الیکشن میں جائیں، ہم تصادم کے بجائے الیکشن کی شرط پر مذاکرات کے لیے تیار ہیں، پنجاب کی بےبس پولیس فیض آباد میں اسٹیج نہیں لگواسکی۔

انہوں نے کہا کہ وزیر داخلہ نے خوف وہراس پیدا کیا لیکن عوام کا سمندر الیکشن کےلیے ریفرنڈم تھا، اعظم سواتی کی گرفتاری الیکشن سےخوفزدہ حکومت کی سازش ہے۔

3:25 PM, Nov 27

عمران خان غیر متعلقہ ہو چکے، حکومت ان کی 4 سالہ تباہی کو ٹھیک کرنے کی کوشش کر رہی ہے، مریم اورنگزیب

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ عمران خان ”ار۔ریلیونٹ“ (غیر متعلقہ) ہو چکے ہیں، حکومت عمران خان کی چار سال میں لائی گئی تباہی کو ٹھیک کرنے کی کوشش کر رہی ہے، مہنگائی، معاشی و خارجہ تعلقات کی تباہی اور تاریخی قرض سب عمران خان کی میراث ہے۔

اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ حکومت کی توجہ صرف اور صرف عوام کو درپیش مسائل کے خاتمے پر مرکوز ہے، ہم پاکستان کی ترقی و خوشحالی کے واضح ایجنڈا پر کاربند ہیں، اس ایجنڈے کے ذریعے ہم نے پاکستان کے اندر اور بیرونی دنیا پر ہماری قومی ترجیحات اور سوچ واضح کر دی ہے۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ الیکشن وقت سے پہلے کیوں کرائیں؟ انہوں نے کہا کہ عمران خان کا اقتدار ختم ہو گیا ہے اس لیے انتخابات کی بات کر رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ عمران خان وفاق کی حکومت کو گرانے آئے تھےلیکن اپنی دونوں حکومتیں گرانے کا اعلان کر کے چلے گئے، وہ نظام سے نکلنے کا اعلان کرتے ہیں اور اسی نظام سے استعفیٰ دینے کے باوجود تنخواہ اور مراعات لے رہے ہیں۔

وزیر اطلاعات و نشریات نے کہا کہ کوئی ’فیس سیوینگ‘ پی ٹی آئی کے کام نہیں آسکتی کیونکہ عوام نے ان کے حقیقی چہرے سے واقف ہے، اسمبلیوں سے استعفے دے کر ہائی کورٹ میں درخواستیں دینا، تنخواہیں، مراعات، گاڑیاں اور گھر واپس نہ کرنا، حالات بدل گئے ہیں لیکن ایک شخص کا جھوٹ، فسادی ذہن اور ایجنڈا نہیں بدلاہے۔

2:21 PM, Nov 27

عمران خان جلد سلاخوں کے پیچھے ہوں گے، شرجیل میمن کا دعویٰ

صوبائی وزیر شرجیل میمن نے دعویٰ کیا یے کہ وہ دن دور نہیں جب عمران خان جیل کی سلاخوں کے پیچھے ہوں گے۔

کراچی میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے وزیر اطلاعات سندھ نے کہا کہ سابق وزیراعظم کے لیے اڈیالہ جیل میں کمرے کی تیاری اور صفائی کے لیے جاری ہے۔

پی پی پی رہنما نے الزام لگایا کہ عمران نے اقتدار میں آتے ہی پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ (ن) کے متعدد ارکان کو گرفتار کیا اور احتساب کے نام پر نشانہ بنایا، عمران نے قومی احتساب بیورو کو اپنے سیاسی مخالفین کے خلاف استعمال کیا۔

شرجیل میمن نے مزید کہا کہ اگر عمران خان میں ذرا سی بھی شرم ہوتی تو وہ صدر عارف علوی سے استعفیٰ دینے کو کہتے۔

2:16 PM, Nov 27

پی ٹی آئی کے جلسے کے دوران راولپنڈی کے بیشتر علاقوں میں کاروبار زندگی معمول کے مطابق رہا

راولپنڈی میں زندگی معمول کے مطابق رہی سوائے مری روڈ کے چاندنی چوک سے سکستھ روڈ تک جہاں پی ٹی آئی نے گزشتہ روز اپنا عوامی اجتماع منعقد کیا۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق صدر اور کنٹونمنٹ کے دیگر تجارتی علاقوں میں بھی معمولات زندگی رواں دواں رہے، تاجروں نے معمول کے مطابق اپنی دکانیں کھولیں جب کہ دہاڑی دار طبقہ، ٹھیلوں پر ، بازاروں میں، سڑکوں پر پھل، دھوپ کے چشمے، ٹوپیاں اور سیکنڈ ہینڈ گارمنٹس سمیت دیگر اشیا فروخت کرتا نظر آیا۔

فوٹو:  تنویر شہزاد، آن لائن
فوٹو: تنویر شہزاد، آن لائن

تاہم، گیریژن شہر کی مرکزی سڑک، مری روڈ، چاندنی چوک سے سکستھ روڈ تک ایک الگ ہی منظر پیش کر رہی تھی جہاں پی ٹی آئی نے بڑا عوامی جلسہ منعقد کیا۔

2:08 PM, Nov 27

قانون کی حکمرانی اور حقیقی آزادی کے قیام تک تحریک جاری رہے گی، عمران خان

سابق وزیر اعظم اور پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ ہماری تحریک قانون کی حکمرانی اور حقیقی آزادی کے قیام تک جاری رہے گی۔

ٹوئٹر پر گزشتہ روز جلسے کی ویڈیو شیئر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں ان تمام لوگوں کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں جو کل پاکستان بھر سے ہمارے راولپنڈی آزادی مارچ میں شریک ہوئے۔

10:56 PM, Nov 26

اسد عمر لانگ مارچ میں محنت پر پی ٹی آئی کے کارکنوں کے مشکور

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سیکریٹری جنرل اسد عمر نے کہا ہے کہ میں تحریک انصاف کی تنظیموں، پارلیمانی اراکین اور کارکنوں کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ اس لانگ مارچ کے تینوں مرحلوں میں آپ نے انتھک محنت کی اور ثابت کیا کہ آپ اس قومی تحریک کے لیے ہر قربانی دینے کو تیار ہیں اور کپتان کی یہ ٹیم ہر امتحان میں پورا اترے گی۔

10:52 PM, Nov 26

پی ٹی آئی کے استعفوں سے 563 نشستوں پر انتخابات ہوں گے، فواد چوہدری

پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری نے ٹوئٹ میں کہا کہ انہوں نے کہا کہ ’تحریک انصاف کے استعفوں کے نتیجے میں قومی اسمبلی کی 123 نشستوں، پنجاب اسمبلی کی 297 نشستوں، خیبر پختونخواہ کی 115 نشستوں، سندہ اسمبلی کی 26 اور بلوچستان کی دو نشستوں یعنی کل 563 نشستوں پر عام انتخابات ہوں گے‘۔

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ ’انتخابات کے نام پر رانا ثنااللہ اینڈ کمپنی کو پسینے کیوں آ رہے ہیں‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’عمران خان کا عوام پر اعتماد ہے کہ اپنی حکومتیں تحلیل کر کے انتخابات میں جا رہے ہیں، گھوڑا بھی ہے اور میدان بھی، انتخابات کے علاوہ کوئی اور طریقہ ملک میں سیاسی استحکام نہیں لا سکتا، آئیے انتخابات کی طرف بڑھیں‘۔