لائیو

جمعیت علمائے اسلام (ف)کا آزادی مارچ

سیاسی منظرنامے سے متعلق اہم خبریں، تبصرے اور آرا

20 نومبر ,2019
12:42 AM

مظاہرین شاہراہیں اور سڑکیں فوری طور پر کھول دیں، رہبر کمیٹی

19 نومبر ,2019
9:07 PM

آزادی مارچ کا مقصد نااہل وزیراعظم سے استعفیٰ لینا ہے، عبدالغفور حیدری

7:32 PM

حکومت کی جڑیں کٹ چکی اور دن گنے جا چکے ہیں، سربراہ جے یو آئی (ف)

2:59 PM

آزادی مارچ 'پلان بی'، اپوزیشن جماعتوں کی رہبر کمیٹی کا اجلاس آج ہوگا

2:49 PM

جے یو آئی(ف) کے کارکنوں کا کوئٹہ چمن شاہراہ پر دھرنا

2:48 PM

حب ریور روڈ پر جے یو آئی(ف) کے کارکنوں کا دھرنا جاری

11:22 AM

مولانا فضل الرحمٰن آج کارکنان سے خطاب کریں گے

18 نومبر ,2019
3:19 PM

پلان بی پر غور کرنے کیلئے اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کا اجلاس طلب

12:12 PM

شدت پسندی کے خلاف عوام کا ردعمل روشن مستقبل کی امید ہے، فواد چوہدری

11:59 AM

حب ریور روڈ پر پانچویں روز بھی دھرنا جاری

11:27 AM

پلان بی کا پانچواں روز، اسلام آباد میں دھرنا نہیں ہوگا

1:08 AM

واضح الفاظ میں تردید کرتا ہوں کہ کوئی ڈیل نہیں ہوئی، مولانا فضل الرحمٰن

17 نومبر ,2019
11:31 PM

جے یو آئی (ف) سندھ کے امیر کا احتجاج کے پلان 'سی' میں داخل ہونے کا اشارہ

2:34 PM

حب ریور پر جے یو آئی کا دھرنا جاری

2:16 PM

جے یو آئی (ف) کا احتجاج جاری، شاہراہ قراقرم ٹریفک کیلئے بند

12:16 PM

جیکب آباد میں آج چوتھے روز بھی دھرنا جاری

16 نومبر ,2019
10:52 PM

آزادی مارچ: کراچی میں مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کی بھی شرکت

4:56 PM

آزادی مارچ کا پلان بی تیسرے روز بھی جاری

12:05 PM

ژوب: دھرنے کے باعث بلوچستان، خیبرپختونخوا کے مابین رابطہ معطل

11:58 AM

نوشہرہ: 'پلان بی کے تحت جی ٹی روڈ کو ٹریفک کیلئے بند کردیا'

9:56 AM

حب ریور روڈ پر جے یو آئی کا دھرنا 'عارضی' طور پر ختم ہونے کے بعد دوبارہ جاری

12:33 AM

مولانا فضل الرحمٰن اور رہبر کمیٹی نے پلان 'بی' اور 'سی' کا نہیں بتایا، بلاول بھٹو

15 نومبر ,2019
11:08 PM

پلان بی: پشاور ہائیکورٹ نے فضل الرحمٰن،دیگر فریقین کو نوٹس جاری کردیا

10:42 PM

مولانا فضل الرحمٰن کا رات کے اوقات میں شاہراہیں کھلی رکھنے کا اعلان

6:23 PM

جے یو آئی (ف) نے شاہراہ ریشم، انڈس ہائی وے کو بند کردیا

3:10 PM

جے یو آئی (ف) کے کارکنوں نے شاہراہ قراقرم کو بند کردیا

3:07 PM

کراچی: حب ریور روڈ پر جے یو آئی کارکنان کا دھرنا

3:01 PM

نماز جمعہ سے قبل جی ٹی روڈ ٹریفک کے لیے بند

2:50 PM

مولانا فضل الرحمٰن چکدرہ میں مظاہرین سے ملاقات کریں گے

2:28 PM

حب ریور پر دھرنا: جے یو آئی کی مقامی قیادت کےخلاف مقدمہ درج

10:42 AM

2020 بہت دور ہے 2019 میں انتخابات ہوتے دیکھ رہا ہوں، مولانا فضل الرحمٰن

10:36 AM

خضدار: کوئٹہ کراچی شاہراہ بلاک کرنے کا شیڈول جاری

1:13 AM

اسی سال کے باقی ایام میں اپنے مقاصد حاصل کر لیں گے، مولانا فضل الرحمٰن

14 نومبر ,2019
7:51 PM

جے یو آئی (ف) کے کارکنان نے کوئٹہ ۔ کراچی قومی شاہراہ بند کردی

7:45 PM

پلان 'بی' عمران خان کو بھگا کر دم لے گا، عبدالغفور حیدری

5:18 PM

''تمام بڑی شاہراہوں پر کارکن اورعوام جمع ہیں'

2:33 PM

مانسہرہ: جے یو آئی کے سکریٹری جنرل کا شرکا سے خطاب

2:29 PM

اہم تجارتی شاہراہ ریشم کو بند کردیا گیا

2:27 PM

جیکب آباد: جے یو آئی (ف) کا دوسرے روز بھی دھرنا جاری

1:13 PM

بلوچستان میں 4 مقامات پر اہم شاہراہوں کو بند کرنے کا فیصلہ

12:46 PM

خبیربختونخوا: نوشہرہ میں دھرنے کا شرکا جمع ہونے لگے

11:11 AM

'مولانا فضل الرحمٰن صرف 13 کے اسکور پر ہی بولڈ ہوگئے'

10:23 AM

پیپلز پارٹی، سندھ میں جے یو آئی احتجاج کی مخالف ہوگئی

1:22 AM

جے یو آئی (ف) کا خیبر پختونخوا اور بلوچستان کیلئے پلان 'بی'

1:00 AM

جے یو آئی (ف) کا سندھ اور پنجاب کیلئے پلان 'بی'

13 نومبر ,2019
7:19 PM

مولانا فضل الرحمٰن کا پلان 'بی' کے تحت نئے محاذ پر جانے کا اعلان

3:50 PM

مولانا فضل الرحمٰن کی رہائش گاہ پر مشاورتی اجلاس

2:12 PM

پلان بی پر عملدرآمد شروع: بلوچستان میں مرکزی شاہراہ بلاک کردی گئی

2:01 PM

دھرنے کے مقام پر صفائی کے انتہائی ناقص انتظام ہیں، شرکا کی شکایت

12:59 PM

جے یو آئی کا پلان بی: ڈی آئی جی کا متعلقہ افسران کو مراسلہ جاری

12:42 AM, نومبر 20

مظاہرین شاہراہیں اور سڑکیں فوری طور پر کھول دیں، رہبر کمیٹی

اسلام آباد: اپوزیشن جماعتوں کی رہبر کمیٹی نے ملک بھر میں شاہراہوں اور سڑکوں پر جاری دھرنے ختم کرنے کا اعلان کردیا۔

رہبر کمیٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کمیٹی کے سربراہ اکرم خان درانی نے کہا کہ 'رہبر کمیٹی نے شاہراہیں اور سڑکیں بند نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے لہٰذا مظاہرین شاہراہیں اور سڑکیں فوری طور پر کھول دیں۔'

انہوں نے کہا کہ 'عوام مہنگائی سے تنگ آچکے ہیں اور حکومت پوری طرح ناکام ہوچکی ہے، اپوزیشن متحد ہے جبکہ نواز شریف کے بیرون ملک جانے سے حکومت بوکھلا گئی ہے۔'

اکرم درانی کا کہنا تھا کہ 'رہبر کمیٹی نے اپوزیشن کی کل جماعتی کانفرنس (اے پی سی) بلانے کا فیصلہ کیا ہے اور مولانا فضل الرحمٰن اس حوالے سے قائدین سے رابطےکر کے تاریخ کا تعین کریں گے، حکومت پر دباؤ بڑھانے کے لیے ضلعی سطح پر جلسے کیے جائیں گے اور اپوزیشن کی رہبر کمیٹی مشترکہ جلسے کرے گی، وزیر اعظم عمران خان قوم پر ترس کھائیں اور گھر چلے جائیں۔'

مکمل خبر یہاں پڑھیں۔

اکرم درانی رہبر کمیٹی کے دیگر اراکین کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کررہے ہیں — فوٹو: ڈان نیوز
اکرم درانی رہبر کمیٹی کے دیگر اراکین کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کررہے ہیں — فوٹو: ڈان نیوز

ای میل

9:07 PM, نومبر 19

آزادی مارچ کا مقصد نااہل وزیراعظم سے استعفیٰ لینا ہے، عبدالغفور حیدری

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے جنرل سیکریٹری مولانا عبدالغفور حیدری کا کہنا ہے کہ آزادی مارچ کا مقصد آئین پاکستان کا تحفظ، ڈوبتی معیشت کو بچانا اور نااہل وزیر اعظم سے استعفیٰ لینا ہے۔

حب ریور روڈ کے مقام لکی میں پریس کانفرس کرتے ہوئے عبدالغفور حیدری نے کہا کہ آزادی مارچ کے لیے جو قافلہ چلا ہے، ہم نے پہلے دن کہا تھا کہ یہ دھرنا نہیں ہے، آزادی مارچ ہے اس میں جلسے ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ پلان 'اے' کے بعد پلان 'بی' چل رہا ہے جس کا مقصد قومی شاہراہوں کو بند کرنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارے مارچ سے حکومت ہل گئی ہے، اس میں دراڑیں پڑ گئی ہیں جبکہ مسلم لیگ (ق)، متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) پاکستان اور گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس (جی ڈی اے) بھی اب حکومت کے ساتھ نہیں ہے۔

عبدالغفور حیدری پریس کانفرنس کر رہے ہیں — فوٹو: اسمٰعیل ساسولی
عبدالغفور حیدری پریس کانفرنس کر رہے ہیں — فوٹو: اسمٰعیل ساسولی

7:32 PM, نومبر 19

حکومت کی جڑیں کٹ چکی اور دن گنے جا چکے ہیں، سربراہ جے یو آئی (ف)

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے تحریک انصاف کی حکومت کو خبردار کیا ہے کہ تمھاری جڑیں کٹ چکی اور دن گنے جا چکے ہیں، ہم اسلام آباد ایسے نہیں گئے تھے اور نہ ہی وہاں سے ایسے واپس آئے ہیں۔

پلان بی کے تحت ہونے والے احتجاج کے دوران بنوں میں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکمران سب کو چور کہتے رہے لیکن ان کے ہی بنائے گئے کمیشن نے رپورٹ دی کہ ایک پیسے کی خورد برد نہیں ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے حکمران معیشت برباد کرنے کے ایجنڈے پر گامزن ہیں لیکن جب تک پاکستان کے وفادار زندہ ہیں تب تک پاکستان کو کوئی بھی نقصان نہیں پہنچا سکے گا۔

دوران خطاب مولانا فضل الرحمٰن نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے اپنی بہن کو ایمنسٹی اسکیم کے تحت این آر او دیا۔

مکمل خبر یہاں پڑھیں۔

— فوٹو: ڈان نیوز
— فوٹو: ڈان نیوز

2:59 PM, نومبر 19

آزادی مارچ 'پلان بی'، اپوزیشن جماعتوں کی رہبر کمیٹی کا اجلاس آج ہوگا

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن سے چوہدری بردران کے رابطوں پر اپوزیشن کی بڑی جماعتوں نے تشویش کا اظہار کیا ہے اور صورتحال کے جائزہ کے لیے اپوزیشن جماعتوں کی رہبر کمیٹی کا اجلاس آج شام کو ہوگا۔

کنوینر اکرم خان درانی اپوزیشن جماعتوں کی رہبر کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کریں گے۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں چوہدری پرویز الہی اور مولانا فضل الرحمٰن کے رابطوں پر پیدا ہونے والی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔

علاوہ ازیں اجلاس میں ملکی سیاسی صورتحال پر تفصیلی غور کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق اکرم خان درانی آزادی مارچ کے پلان بی پر اپوزیشن جماعتوں کو اعتماد میں لیں گے۔

ذرائع کے مطابق جے یو آئی ف کی جانب سے پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ (ن )کو پلان بی میں شمولیت کے لیے قائل کرنے کی کوشش کی جائے گی۔

علاوہ ازیں اجلاس میں آزادی مارچ کے خاتمے پر ڈیل سے متعلق پیدا ہونے والے تاثر پر بھی غور کیا جائے گا۔

2:49 PM, نومبر 19

جے یو آئی(ف) کے کارکنوں کا کوئٹہ چمن شاہراہ پر دھرنا

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے پلان بی کے تحت شاہراہوں کی بندش کا سلسلہ بدستور جاری ہے اور جے یو آئی (ف) کے کارکنوں نے پشین کے مقام پر کوئٹہ چمن شاہراہ پر احتجاجی دھرنا دے دیا ہے۔

کوئٹہ چمن شاہراہ پر جاری دھرنے میں پشتونخوا ملی عوامی پارٹی (پی کے میب) کے کارکنان بھی شریک ہیں۔

احتجاج اور دھرنے کے باعث کوئٹہ چمن شاہراہ پر ٹریفک جام ہونے سے مسافروں کو مشکلات کا سامنا ہے۔

قومی شاہراہ کی بندش کے باعث مسافر متبادل کچے راستے سے سفر کرنے پر مجبور ہیں جس کی وجہ سے سفر کرنے والی خواتین، بجوں اور معمر افراد کو بھی شدید مشکلات پیش آرہی ہیں۔

2:48 PM, نومبر 19

حب ریور روڈ پر جے یو آئی(ف) کے کارکنوں کا دھرنا جاری

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے ڈپٹی سیکریٹری اطلاعات سمیع سواتی کا کہنا ہے کہ پلان بھی کے ساتویں روز بھی حب ریور روڈ پر جے یو آئی (ف) کے کارکنوں کا دھرنا جاری ہے۔

دھرنے کے باعث حب ریور روڈ کو ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا جس کے نتیجے میں گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں ہیں جبکہ سندھ اور بلوچستان کا زمینی رابطہ بھی منقطع ہوگیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جے یو آئی ف کے مرکزی جنرل سیکریٹری عبدالغفور حیدری اور سندھ جنرل سیکریٹری راشد محمود سومرو شام کو دھرنے کے شرکا سے خطاب کریں گے۔

11:22 AM, نومبر 19

مولانا فضل الرحمٰن آج کارکنان سے خطاب کریں گے

جمیعت علمائے اسلام (ف) کے آزادی مارچ کے تحت ملک کی مختلف شاہراہوں پر دھرنوں کا سلسلہ آج بھی جاری ہے۔

دھرنا دینے کے لیے جے یو آئی کارکنان نے کوئٹہ پشین ہائی وے کو یارو کے مقام پر بند کردیا جبکہ قلعہ سیف اللہ ہائی وے کو بھی رکاوٹیں لگا کر بند کردیا گیا۔

دوسری جانب سربراہ جے یو آئی (ف) مولانا فضل الرحمٰن کا دوپہر 3 بجے بنوں لنک روڈ انڈس ہائی وے پر کارکنان سے خطاب متوقع ہے۔

3:19 PM, نومبر 18

پلان بی پر غور کرنے کیلئے اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کا اجلاس طلب

جمعت علمائے اسلام (ف) کے آزادی مارچ کے پلان بی پر غور کرنے کے لیے اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کا اجلاس طلب کرلیا گیا۔

رپورٹس کے مطابق رہبر کمیٹی کا اجلاس کل شام 5 بجے اسلام آباد میں ہوگا۔

مذکورہ اجلاس کی صدارت کمیٹی کے کنوینر اور جے یو آئی (ف) رہنما اکرم درانی کریں گے۔

اس حوالے سے ذرائع نے بتایا کہ اجلاس میں آزادی مارچ کے پلان بی مشاورت اور ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال پر مشترکہ حکمتِ عملی پر بھی غور کیا جائے گا۔ؤ

اجلاس میں آزادی مارچ پلان بی پر مشاورت ہو گی، ذرائع ملکی موجودہ سیاسی صورتحال پر مشترکہ حکمت عملی پر بھی مشاورت ہوگی

12:12 PM, نومبر 18

شدت پسندی کے خلاف عوام کا ردعمل روشن مستقبل کی امید ہے، فواد چوہدری

وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ جو پذیرائی جمعیت علمائے اسلام (ف) کے دھرنوں کی ہورہی ہے وہ انتہائی خوش آئند ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کیے گئے ٹوئٹ میں فواد چوہدری نے کہا کہ سڑک سڑک گالیاں کھانے کا لطف لیتے جے یو آئی(ف) کے رہنما خاصے مطمن نظر آرہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ پہلا موقع نہیں کہ پاکستان کے عوام نے شدت پسندوں کو بری طرح مسترد کیا ہے ، پاکستانی عوام کا شدت پسندی کے خلاف ردعمل روشن مستقبل کی امید ہے۔

11:59 AM, نومبر 18

حب ریور روڈ پر پانچویں روز بھی دھرنا جاری

کراچی کے حب ریور روڈ پر پلان بی کے تحت جمعیت علمائے اسلام (ف) کے کارکنوں کا دھرنا آج بھی جاری ہے۔

جے یو آئی (ف) کے کارکنوں نے رکاوٹیں کھڑی کرکے حب ریور روڈ پر ٹریفک معطل کردیا ہے جبکہ دھرنے کے باعث بلوچستان سے آنے والی بڑی گاڑیوں کی قطاریں لگ گئی تاہم موٹر سائیکلوں اور چھوٹی گاڑیوں کو جانے کی اجازت ہے۔

اس موقع پر پولیس اور رینجرز کی نفری بڑی تعداد میں حب ریور روڈ پر موجود ہے۔

جے یو آئی کے مقامی رہنما شرکا سے خطاب کررہے ہیں جبکہ شام کو رات 8 بجے تک جاری رہنے والے دھرنے سے جے یو آئی کے مرکزی رہنما کراچی دھرنے کے شرکا سے خطاب کریں گے۔

حب ریور روڈ پر جے یو آئی (ف) کے کارکنوں کا دھرنا آج بھی جاری ہے۔ —فوٹو: اسماعیل ساسولی
حب ریور روڈ پر جے یو آئی (ف) کے کارکنوں کا دھرنا آج بھی جاری ہے۔ —فوٹو: اسماعیل ساسولی

11:27 AM, نومبر 18

پلان بی کا پانچواں روز، اسلام آباد میں دھرنا نہیں ہوگا

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے پلان بی پر آج پانچویں روز بھی عملدرآمد جاری ہے تاہم کچھ اجلاس میں جے یو آئی کی قیادت کی مصروفیت کے باعث اسلام آباد میں دھرنا نہیں ہوگا۔

اس حوالے سے جے یو آئی کے سیکریٹری اطلاعات و نشریات اسلام آباد غربی مفتی شفیع الرحمٰن نے بتایا کہ آج 25 نمبر چورنگی پرٹریفک بلاک نہیں کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ موٹر وے چوک پر پلان بی کے تحت آج دھرنا نہیں ہوگا، کچھ اہم اجلاس میں قیادت کی مصروفیت کے باعث آج دھرنا نہیں دیا جائے گا۔

1:08 AM, نومبر 18

واضح الفاظ میں تردید کرتا ہوں کہ کوئی ڈیل نہیں ہوئی، مولانا فضل الرحمٰن

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے حکومت سے ڈیل اور مفاہمت کے دعوؤں کو مسترد کردیا۔

نجی چینل 'جیو نیوز' کے پروگرام 'جرگہ' میں بات کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمٰن نے مولانا فضل الرحمٰن نے اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہٰی کے ڈیل کے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ 'میں واضح الفاظ میں تردید کرتا ہوں کہ کوئی ڈیل نہیں ہوئی، میں مشقتیں برداشت کرنے والے کارکنان کی خواہش کے برعکس کسی سے ڈیل کروں یہ میری سیاسی زندگی کا حصہ نہیں ہے، ہم اپنے مطالبے پر قائم ہیں اور منصوبے کے تحت اسلام آباد سے گئے ہیں جبکہ میرے پاس کوئی امانت نہیں جو تھا بتا دیا ہے۔'

انہوں نے کہا کہ 'پرویز الہٰی ایسی تصویر پیش کرنا چاہتے ہیں کہ مفاہمت ہوئی حالانکہ کوئی مفاہمت نہیں ہوئی، ہم نے رہبر کمیٹی کو اعتماد میں لے کر اسلام آباد سے جانے کا فیصلہ کیا اور مل کر تمام صورتحال آگے بڑھائی ہے، لیکن دیگر اپوزیشن جماعتوں کا کہنا تھا کہ ہم اپنی اپنی پارٹیوں کی حکمت عملی کے تحت پلان بی کا حصہ بنیں گے۔'

مولانا فضل الرحمٰن نے پرویز الہٰی سے ملاقات کے حوالے سے مزید کہا کہ 'انہوں نے ہمارے ساتھ بہت اچھی ملاقاتیں کیں اور بنیادی بات یہ ہے کہ ہمارے موقف کو تسلیم کیا، ان سے دوٹوک کہا کہ حکومت کے خاتمے کے علاوہ کوئی ہدف نہیں، جبکہ چوہدری شجاعت حسین کا لب و لہجہ بھی یہ واضح پیغام دے رہا ہے کہ ہم نے ان کو اپنے موقف پر کتنا قائل کر لیا ہے۔'

مکمل خبر یہاں پڑھیں۔

11:31 PM, نومبر 17

جے یو آئی (ف) سندھ کے امیر کا احتجاج کے پلان 'سی' میں داخل ہونے کا اشارہ

جمعیت علمائے اسلام (ف) سندھ کے امیر راشد سومرو کا کہنا ہے کہ آزادی مارچ احتجاج جلد پلان 'سی' میں داخل ہوجائے گا۔

گھوٹکی میں دھرنے کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے راشد محمود سومرو نے کہا کہ پلان 'سی' کے تحت کارکنان 'گرفتاریاں' دیں گے اور 'جیل جائیں گے۔'

انہوں نے کہا کہ کراچی میں اپنے خلاف ایف آئی آر درج ہونے کے بعد سے ہی وہ انتظار کر رہے ہیں کہ کوئی آئے اور انہیں گرفتار کر لے۔

راشد سومرو نے حکومت کو چیلنج کیا کہ وہ ان کے خلاف جتنے چاہے مقدمات دائر کرے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ دھرنا جے یو آئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کے احکامات کے مطابق جاری رہے گا اور مظاہرین وزیر اعظم عمران خان کو استعفے پر مجبور کرنے کے بعد ہی اپنے گھروں کو جائیں گے۔

2:34 PM, نومبر 17

حب ریور پر جے یو آئی کا دھرنا جاری

حب ریور روڈ پر جمعیت علمائے اسلام (ف) کے کارکنوں نے صبح ہوتے ہی دھرنا دے دیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز مقامی عہدیدار مولانا عمر صادق نے بتایا تھا مرکزی قیادت کی کال پر دھرنا رات کے لیے ختم اور صبح ہوتے ہیں دوبارہ دھرنا شروع ہوجائے گا۔

2:16 PM, نومبر 17

جے یو آئی (ف) کا احتجاج جاری، شاہراہ قراقرم ٹریفک کیلئے بند

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے کارکنوں نے شانگلہ میں دندائی کے مقام پر شاہراہ قراقرم کو ایک مرتبہ پھر ٹریفک کے لیے بند کردیا۔

علاوہ ازیں جے یو آئی (ف) اور عوامی نیشنل پارٹی (اے این پی) کے کارکنوں کا احتجاج کوہستان اور بٹگرام میں بھی جاری ہے۔

12:16 PM, نومبر 17

جیکب آباد میں آج چوتھے روز بھی دھرنا جاری

جمعیت علمائے اسلام آزادی مارچ کے پلان بی کے تحت جیکب آباد اور کندھکوٹ میں آج چوتھے روز بھی دھرنا جاری ہے۔

دھرنے کے شرکا نے جیکب آباد قومی شاہراہ پر زیرو پوائنٹ پر احتجاجی کیمپ لگاکردھرنا دے رکھا ہے۔

کئی کارکنان سڑک پر رکاوٹیں کھڑی کرکے گاڑیوں کی آمدورفت کو روک دی ہیں۔

کندھ کوٹ انڈس ہائی وے پر بھی میں بھی جے یو آئی کے کارکنان کا دھرنا جاری ہے۔

دھرنے کے دوران سندھ پنجاب اور بلوچستان کو آنے والی بڑی گاڑیوں کو کارکنان کی جانب سے روکا جارہا ہے۔

10:52 PM, نومبر 16

آزادی مارچ: کراچی میں مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کی بھی شرکت

کراچی میں جمعیت علمائے اسلام (ف) کے احتجاجی دھرنے میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں نے بھی شرکت کی۔

مسلم لیگ (ن) کے کارکنان بڑی تعداد میں دھرنے میں پہنچے جنہوں نے پارٹی پرچم اٹھائے ہوئے تھے۔

اس موقع پر جمعیت علمائے اسلام (ف) کے رہنما راشد محمود سومرو نے کہا کہ میں پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) کے رہنماؤں کا شکر گزار ہوں، ان کے رہنماؤں نے ایف آئی آر پر بات کی اور مجھے بتایا کہ ایف آئی آر سے متعلق ہمیں معلوم نہیں لیکن اس کی تحقیق کریں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ پی پی پی سندھ نے فیصلہ کیا ہے دھرنے کے خلاف کوئی کارروائی نہیں ہوگی جبکہ پورے ملک میں جب تک دھرنے چلتے رہیں گے اس وقت تک کراچی میں بھی دھرنا جاری رہے گا۔

4:56 PM, نومبر 16

آزادی مارچ کا پلان بی تیسرے روز بھی جاری

جمعیت علما اسلام (ف) کے آزادی مارچ کا پلان بی تیسرے روز بھی جاری ہے۔

جے یو آئی (ف) کے اراکین ملک بھر کی شاہراہوں کو آج بھی بند رکھیں گے جبکہ راولپنڈی-اسلام آباد کی مرکزی شاہراہ موٹروے چوک پر بھی دھرنا دیا جائے گا۔

جمعیت علما اسلام (ف) کے رہنما مولانا عبد الغفور حیدری، مولانا عبد المجید ہزاروی، پیر عبد الشکور سمیت دیگر رہنما دھرنے میں شرکت کریں گے۔

12:05 PM, نومبر 16

ژوب: دھرنے کے باعث بلوچستان، خیبرپختونخوا کے مابین رابطہ معطل

ژوب: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے پلان بی کے تحت ڈیرہ اسماعیل خان میں قومی شاہراہ پر دھرنا شروع ہوگیا۔

سلیازہ کے مقام پر جے یو آئی (ف) اور پشتونخوا (میپ) کے کارکنوں کی بڑی تعداد نے دھرنا دے کر ٹریفک کی آمد و رفت روک دی۔

دھرنے اور احتجاج کے باعث بلوچستان خیبرپختونخوا کے مابین رابطہ معطل ہوگیا۔

دوسری جانب ژوب میں مال بردار اور مسافر گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں اور اسلام آباد پنڈی سے کوئٹہ جانے ولی مسافر کوچز پھنس گئیں۔

11:58 AM, نومبر 16

نوشہرہ: 'پلان بی کے تحت جی ٹی روڈ کو ٹریفک کیلئے بند کردیا'

نوشہرہ: جمیعت علما اسلام (ف) کی جناب سے پلان بی کے تحت دھرنا تیسرے روز بھی جاری ہے اور احتجاجی شرکا نے حکیم آباد سے جانے والی تمام راستیں بند کردیے۔

علاوہ ازیں بتایا گیا کہ پلان بی کے تحت جی ٹی روڈ کو ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا۔

مرکزی شاہراوں کی بندش سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

شاہراوں کی بندش کے باعث مسافر گاڑیاں متبادل راستہ استعمال کررہی ہیں۔

اس حوالے سے بتایا گیا کہ مزکری قیادت کی ہدایت پر جی ٹی روڈ رات 8 بجے کے بعد کھول دی جائے گی۔

9:56 AM, نومبر 16

حب ریور روڈ پر جے یو آئی کا دھرنا 'عارضی' طور پر ختم ہونے کے بعد دوبارہ جاری

کراچی: حب ریور روڈ پر جمعیت علمائے اسلام (ف) کے کارکنوں نے 'عارضی' طورپر ختم کرنے کے بعد صبح ہوتے ہی دوبارہ دھرنا دے دیا۔

مقامی عہدیدار مولانا عمر صادق نے بتایامرکزی قیادت کی کال پر دھرنا رات کے لیے ختم کیا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ آج صبح 9 بجے سے دھرنا دے کر پھر سے حب ریور روڈ بند کردیا۔

جے یو آئی ف کراچی کے رہنماء مولانا عمر صادق نے بتایا کہ اب دھرنا صبح 8 بجے سے رات 8 بجے تک ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ مرکزی قیادت کے حکم مطابق دھرنے میں مسافروں پریشان نہ کرنے کے لیے رات 8 بجے سے صبح 8 بجے تک سڑک کھولی جائے گی۔

12:33 AM, نومبر 16

مولانا فضل الرحمٰن اور رہبر کمیٹی نے پلان 'بی' اور 'سی' کا نہیں بتایا، بلاول بھٹو

پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ مولانا فضل الرحمٰن اور رہبر کمیٹی کی جانب سے پلان 'بی' اور 'سی' کا نہیں بتایا ہے۔

اسلام آباد میں پیپلز پارٹی کی کور کمیٹی کے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ 'کور کمیٹی نے رہبر کمیٹی ارکان کے کردار کو سراہا جبکہ ہم نے مولانا فضل الرحمٰن سے جو وعدے کیے ان وعدوں پر پورا اترے لیکن جہاں تک سول نافرمانی کی بات ہے تو ہم اس کے حق میں نہیں۔'

انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمٰن اور رہبر کمیٹی نے پلان 'بی' اور 'سی' کا نہیں بتایا، جب تک تمام معلومات سے آگاہ نہیں کیا جاتا پلان 'بی' سے متعلق کچھ نہیں کہہ سکتا جبکہ مولانا فضل الرحمٰن کی (ق) لیگ کے ساتھ کیا باتیں ہو رہی ہیں ہمیں اس کا بھی نہیں بتایا گیا۔'

ان کا کہنا تھا کہ 'اعتماد سے کہہ رہا ہوں کہ یہ سلیکٹڈ وزیر اعظم نہیں رہے گا، اگلے سال تک نیا وزیر اعظم ہوگا، حکمرانوں کو اندازہ نہیں ان کے خلاف جدوجہد مزید تیز ہو چکی ہے، آئندہ سال تک نئے انتخابات اور نیا وزیر اعظم ہو گا اور سلیکٹڈ وزیراعظم کو جانا پڑے گا۔

مکمل خبر یہاں پڑھیں۔

بلاول بھٹو زرداری میڈیا سے گفتگو کر رہے ہیں — فوٹو: ڈان نیوز
بلاول بھٹو زرداری میڈیا سے گفتگو کر رہے ہیں — فوٹو: ڈان نیوز

11:08 PM, نومبر 15

پلان بی: پشاور ہائیکورٹ نے فضل الرحمٰن،دیگر فریقین کو نوٹس جاری کردیا

پشاور ہائی کورٹ نے جمعیت علمائے اسلام(ف) کی جانب سے شاہراہیں بند کرنے کے خلاف دائر درخواست پر مولانا فضل الرحمٰن اور دیگر فریقین کو نوٹس جاری کردیا۔

شاہراہیں بند کرنے کے خلاف دائر درخواست پر سماعت کے دوران عدالت نے کہا کہ جے یو آئی (ف) نے عدالت میں کہا تھا کہ وہ پرامن رہے گی، اب وہ پرامن رہنے کی بات پر عمل کرے۔

درخواست گزار کا موقف تھا کہ سڑکیں بند کرنا شہریوں کی بنیادی و آئینی حقوق کی خلاف ورزی ہے لہٰذا جے یو آئی (ف) کو سڑکیں بند کرنے سے روکا جائے۔

عدالت نے سربراہ جے یو آئی (ف) مولانا فضل الرحمن اور دیگر فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا اور سماعت 28 نومبر تک ملتوی کردی۔

10:42 PM, نومبر 15

مولانا فضل الرحمٰن کا رات کے اوقات میں شاہراہیں کھلی رکھنے کا اعلان

جمیعت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے رات کے اوقات میں شاہراہیں کھلی رکھنے کا اعلان کر دیا۔

نوشہرہ میں دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمٰن نے کہا کہ 'کارکنان صبح سے مغرب تک دھرنا دیں کیونکہ ٹھنڈ بڑھنے کی وجہ سے مسافروں اور کارکنوں کو تکلیف ہوتی ہے، طاقت ہم نے دکھا دی ہے اب اس سلسلے کو جاری رکھیں گے۔'

ان کا کہنا تھا کہ 'ہم نے عام آدمی کی زندگی کو متاثر نہیں کرنا اس لیے ہم نے شہروں سے باہر احتجاج کیا ہے اور اس کے بعد شہروں کے اندر بھی مظاہرے کیے جائیں گے جبکہ یہ تحریک رُکے گی نہیں۔'

مولانا فضل الرحمٰن نے کہا کہ 'مجھے اس کا احساس ہے کہ جب سڑکیں بند ہوتی ہیں تو عوام کو مشکلات پیش آتی ہیں لیکن جب راستے میں بڑا پتھر پڑا ہو تو اسے ہٹانے کے لیے لوگوں کو کچھ مشقت برداشت کرنا پڑتی ہے، آج سب سے بڑا پتھر موجودہ ناجائز حکومت ہے اور ہم نے عوام کی طاقت کے ساتھ اس پتھر کو راستے سے ہٹانا ہے۔'

مکمل خبر یہاں پڑھیں۔

— فوٹو: ڈان نیوز
— فوٹو: ڈان نیوز

6:23 PM, نومبر 15

جے یو آئی (ف) نے شاہراہ ریشم، انڈس ہائی وے کو بند کردیا

جمعیت علمائے اسلام (ف) کی جانب سے حکومت کے خلاف پلان 'بی' پر عملدرآمد جاری ہے۔

جے یو آئی (ف) ہزارہ ڈویژن نے پلان 'بی' کے تحت شاہرہ ریشم کو مانسہرہ سے بند کردیا ہے اور مولانا ہدایت اللہ شاہ، مفتی ناصر محمود سمیت دیگر ذمہ داران موقع پر موجود ہیں۔

شاہراہ ریشم بند ہونے سے ٹریفک کی روانی معطل ہوگئی اور گاڑیوں کی طویل قطاریں لگ گئیں۔

دوسری جانب جے یو آئی (ف) جنوبی اضلاع کی جانب سے بنوں کے مقام پر انڈس ہائی وے کو بند کر دیا گیا

انڈس ہائی وے بند ہونے سے بھی ٹریفک کی روانی معطل ہو گئی اور گاڑیوں کی قطاریں لگ گئیں۔

3:10 PM, نومبر 15

جے یو آئی (ف) کے کارکنوں نے شاہراہ قراقرم کو بند کردیا

جمعیت علمائے اسلام(ف) کے کارکنوں نے شانگلہ میں دندائی کے مقام پر شاہراہ قراقرم کو ٹریفک کے لیے بند کردیا۔

شاہراہ قراقرم کی بندش کے باعث ہر قسم کی ٹریفک کے لیے بین الاقوامی روٹ بند ہونے سے مسافر پھنس گئے ہیں۔

3:07 PM, نومبر 15

کراچی: حب ریور روڈ پر جے یو آئی کارکنان کا دھرنا

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے کارکنوں نے کراچی کے حب ریور روڈ پر جمعے کی نماز ادا کی۔

نماز کی ادائیگی کے بعد مظاہرین نے شاہراہ بند کردی اور مرکزی روڈ ٹریفک کے لیے آمد و روفت کے لیے بند ہوگئی۔

—فوٹو: اسمٰعیل ساسولی
—فوٹو: اسمٰعیل ساسولی

3:01 PM, نومبر 15

نماز جمعہ سے قبل جی ٹی روڈ ٹریفک کے لیے بند

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے رہنماؤں اور کارکنوں نے نماز جمعہ کی ادائیگی کے لیے اسلام آباد کا جی ٹی روڈ ٹریفک کے لیے بند کردی۔

جے یو آئی (ف) کے رہنماؤں مولانا عبدالغفور حیدری، مولانا عبدالرؤف، مولانا عبدالمجید ہزاروی، حافظ ضیاء الرحمن اور مفتی اویس نے پارٹی کارکنوں سے ملاقات کی۔

اس موقع پر امن و امان کی صورتحال یقینی بنانے کے لیے پولیس تعینات کی گئی ہے۔

—فوٹو: شکیل قرار
—فوٹو: شکیل قرار

2:50 PM, نومبر 15

مولانا فضل الرحمٰن چکدرہ میں مظاہرین سے ملاقات کریں گے

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سینئر پارٹی رہنما کا کہنا ہے کہ مولانا فضل الرحمٰن احتجاج میں شریک کارکنوں سے ملاقات کے لیے خیبرپختونخوا کے ضلع لوئر دیر کے علاقے چکدرہ کا دورہ کریں گے۔

سینئر پارٹی رہنما نے بتایا کہ مولانا فضل الرحمٰن نے سوات میں رات گزاری تھی اور واپسی پر چکدرہ میں شرکا سے خطاب کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمٰن کے دورے کی تیاریاں کرلی گئیں ہیں۔

2:28 PM, نومبر 15

حب ریور پر دھرنا: جے یو آئی کی مقامی قیادت کےخلاف مقدمہ درج

کراچی: حب ریور پر دھرنا دینے پر جمعیت علمائے اسلام سندھ کی قیادت کے خلاف 'بلوے' کا مقدمہ درج ہوگیا۔

مقدمہ سرکاری کی مدعیت میں سیکریٹری جنرل راشد سومرو و دیگر کے خلاف درج ہوا۔

مقدمے کا متن کے مطابق دو سو سے ڈھائی سو افراد نے اچانک حب ریور روڈ بند کردیا اور وہ لاٹھی بردار تھے ،

جے یو آئی (ف) کے رہنما کے خلاف مقدمہ موچکو تھانے میں درج کیا گیا۔

علاوہ ازیں دھرنے کے مقام پر جے یو آئی سندھ کے جنرل سیکریٹری راشد محمود سومرو کے امامت میں نماز جمعہ ادا کیا گیا

10:42 AM, نومبر 15

2020 بہت دور ہے 2019 میں انتخابات ہوتے دیکھ رہا ہوں، مولانا فضل الرحمٰن

جمیعت علمائے اسلام (ف) کی جانب سے آزادی مارچ ختم کرنے کے بعد ملک کی اہم شاہراہوں پر دھرنا دے دیا گیا۔

اس صورتحال میں مولانا فضل الرحمٰن نے گجرات کے چوہدری برادران سے ملاقات کی جنہوں نے ’حقیقی اپوزیشن رہنما‘ بن کر ابھرنے پر جے یو آئی سربراہ کو سراہا۔

تاہم مولانا فضل الرحمٰن نے وزیراعظم کے استعفیٰ کا مطالبہ دہراتے ہوئے کہا کہ انہیں رواں سال انتخابات ہوتے نظر آرہے ہیں۔

ملاقات کے بعد صحافیون سے گفتگو کرتے ہوئے سربراہ جے یو آئی کا کہنا تھا کہ ’2020 کو بہت دور ہے میں 2019 میں انتخابات ہوتے دیکھ رہا ہوں‘۔

انہوں نے ایک مرتبہ پھر اپنا دعویٰ دہراتے ہوئے کہا کہ حکومت کمزور ہورہی اور لرز رہی ہے، ہم اب بھی لوگوں کے جذبات کی نمائندگی کرتے ہوئے احتجاج میں ہیں‘۔

10:36 AM, نومبر 15

خضدار: کوئٹہ کراچی شاہراہ بلاک کرنے کا شیڈول جاری

بلوچستان: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے کارکنوں نے نماز جمعہ کے بعد خضدار پر کوئٹہ کراچی شاہراہ بلاک کرنے کا اعلان کردیا۔

اس ضمن میں مقامی عہدیداروں نے خضدار پر کوئٹہ کراچی شاہراہ بلاک کرنے کا شیڈول بھی جاری کردیا۔

علاوہ ازین بتایا گیا کہ ہر روز وہ صبح سے شام تک سڑکیں بلاک کردیں گے۔

1:13 AM, نومبر 15

اسی سال کے باقی ایام میں اپنے مقاصد حاصل کر لیں گے، مولانا فضل الرحمٰن

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کا کہنا ہے کہ ہم نے اس حکومت کی جڑیں کاٹ دی ہیں اور تنا گرانے کے مرحلے میں داخل ہو گئے ہیں، امید ہے تحریک زیادہ طویل عرصہ نہیں چلے گی اور ہم اسی سال کے باقی ایام میں اپنے مقاصد حاصل کر لیں گے۔

نجی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سربراہ جے یو آئی (ف) نے پلان 'بی' کے تحت ملک بھر میں قومی شاہراہیں بند کرنے اور اس سے عوام کو مشکلات کے حوالے سے کہا کہ 'ہم نے شہروں کے اندر احتجاج نہیں کیا تاکہ لوگ اپنے معمولات زندگی برقرار رکھیں لیکن شاہراہوں کی طرف جانے پر ہمیں حکمرانوں نے مجبور کیا ہے، اگر وہ ہماری اسلام آباد میں موجودگی کے دوران ہی استعفیٰ دے دیتے تو شاید اس کی نوبت نہ آتی۔'

ان کا کہنا تھا کہ 'ہمارا ہدف صرف شاہراہیں بند کرنا نہیں ہے، ہم اس سے بھی آگے بڑھیں گے اور بڑھتے چلے جائیں گے یہاں تک کہ ہم اس ناجائز حکومت کا خاتمہ نہ کر دیں، ہمارے پہلے کیے گئے ملین مارچ سے قوم میں بیداری آئی اور پورے ملک سے عوام اسلام آباد میں ہمارے شریک سفر بنے، اب ملک کے عوام سڑکوں پر آئیں گے، مظاہرے ہوں گے، اس سے ملک کی سیاست کو نیا رُخ ملے گا اور اس میں قوت پیدا ہو گی۔'

مکمل خبر یہاں پڑھیں۔

7:51 PM, نومبر 14

جے یو آئی (ف) کے کارکنان نے کوئٹہ ۔ کراچی قومی شاہراہ بند کردی

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے کارکنوں نے کوئٹہ ۔ کراچی قومی شاہراہ ٹریفک کے لیے بند کر دی۔

قومی شاہراہ کو زیرو پوائنٹ پر رکاوٹیں لگا کر بند کیا گیا ہے اور جے یو آئی (ف) کے کارکنان شاہراہ بند کر کے احتجاجی دھرنا دے رہے ہیں۔

دھرنے کی قیادت جے یو آئی کے رہنما مولانا قمر الدین میر یونس کر رہے ہیں۔

قومی شاہراہ کی بندش سے دونوں اطراف گاڑیوں کی لمبی لمبی قطاریں لگ گئیں۔

7:45 PM, نومبر 14

پلان 'بی' عمران خان کو بھگا کر دم لے گا، عبدالغفور حیدری

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سیکریٹری جنرل مولانا عبدالغفور حیدری کا کہنا ہے کہ پلان 'بی' عمران خان کو بھگا کر دم لے گا اور جب تک الیکشن کا اعلان نہیں ہوتا ہماری تحریک جاری رہے گی۔

اسلام آباد کے موٹروے چوک پر جے یو آئی (ف) کے پلان 'بی' کے تحت احتجاج سے خطاب کرتے ہوئے مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ آج ملک بھر میں پلان بی کا آغاز ہوچکا ہے جبکہ ہم ان نا لائقوں کو کہتے تھے کہ پلان 'بی' پلان 'اے' سے سخت ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے احتجاج کی وجہ دھاندلی ہے، 2018 کے انتخابات میں پس پردہ قوتوں نے فاسق و فاجر شخص کو قوم پر مسلط کیا، ہم نے پہلے دن سے اس الیکشن کو تسلیم نہیں کیا جبکہ تمام اپوزیشن جماعتوں نے اتفاق کیا کہ تاریخ کی بدترین دھاندلی ہوئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ آزادی مارچ میں بھی کچھ قوتوں نے ہمیں روکنے کی کوشش کی لیکن ہماری جنگ آئین اور پارلیمنٹ کی بالادستی کی جنگ ہے، انہوں نے ایک طرف ختم نبوت کی دیوار میں دراڑ ڈالنے کی کوشش کی تو دوسری طرف پوری قوم کو کنگال کر دیا ہے۔

مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا کہ ملک بھر کا لاک ڈاؤن کرنا ہماری مجبوری ہے، پلان 'بی' عمران خان کو بھگا کر دم لے گا اور جب تک الیکشن کا اعلان نہیں ہوتا ہماری تحریک جاری رہے گی۔

جے یو آئی (ف) کے کارکنان موٹروے چوک پر دھرنا دے رہے ہیں — فوٹو: جاوید حسین
جے یو آئی (ف) کے کارکنان موٹروے چوک پر دھرنا دے رہے ہیں — فوٹو: جاوید حسین

5:18 PM, نومبر 14

''تمام بڑی شاہراہوں پر کارکن اورعوام جمع ہیں'

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ فضل الرحمٰن نے کہا ہے کہ ہم آزادی مارچ کو جاری رکھے ہوئے ہیں، اب ایک اجتماع کے بجائے ملک بھر میں اجتماع کا سلسلہ شروع ہوگیا۔

چوہدری برادران کےہمراہ مولانا فضل الرحمٰن نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے تقریباً تمام بڑی شاہراہوں پر کارکنوں اورعوام جمع ہیں۔

انہوں نے نواز شریف سے متعلق کہا کہ سابق وزیر اعظم کو علاج کے لیے غیر مشروط طور پر بیرون ملک جانے دیا جائے۔

فضل الرحمٰن نے کہا کہ کارکنوں کو واضح ہدایت دی گئی کہ مریض، مسافروں، خواتین اور میت وغیرہ کا خاص خیال رکھیں۔

2:33 PM, نومبر 14

مانسہرہ: جے یو آئی کے سکریٹری جنرل کا شرکا سے خطاب

مانسہرہ میں جمعیت علمائے اسلام (ف) کے مقامی سیکرٹری جنرل ناصر محمود کا شاہرہ ریشم پر جاری دھرنے کا شرکا سے خطاب کررہے ہیں۔

2:29 PM, نومبر 14

اہم تجارتی شاہراہ ریشم کو بند کردیا گیا

جمعیت علمائے اسلام (ف) نے آزادی مارچ کے پلان بی پر عمل درآمد شروع کرتے ہوئے ملک کی اہم شاہراہیں بند کرنے کا آغاز کردیا ہے۔

خیبرپختونخوا کے ضلع مانسہرہ کے قریب چتر پلین کے مقام پر اہم تجارتی شاہراہ شاہرہ ریشم کو بند کردیاگیا ہے۔

شاہرہ ریشم پر جاری مظاہرے کی قیادت امیر جےیوآئی خیبرپختونخوا سینیٹر مولانا عطا الرحمٰن کررہے ہیں۔

اس نوقع ہر مولانا ناصر محمود، مفتی کفایت اللہ، سمیت صوبائی اور ملحقہ اضلاع کے ذمہ دار اور کارکنان موقع پرموجود ہیں۔

واضح رہے کہ شاہراہ ریشم پاکستان کی اہم تجارتی شاہراہ ہے جو پاکستان کو چائنا، کےپی کے کو گلگت سے جوڑتی ہے۔

اہم تجارتی شاہرہ کو بند کرنے سے ٹریفک کی روانی شدید متاثر ہوگئی ہے۔

دوسری جانب جے یو آئی (ف) کے کارکنوں نے مردان سے نوشہرہ تک موٹر سائیکلوں اور گاڑیوں کے قافلے پر مشتمل ریلی نکالی ہیں، یہ ریلی نوشہرہ پہنچ کر حکیم آباد کے مقام پر دھرنے میں تبدیل ہوجائے گی۔

2:27 PM, نومبر 14

جیکب آباد: جے یو آئی (ف) کا دوسرے روز بھی دھرنا جاری

جیکب آباد میں جمعیت علمائے اسلام (ف) کا آزادی مارچ کے پلان بی کے تحت دوسرے روز بھی دھرنا جاری ہے۔

جے یو آئی کے کارکنان نے تازہ دم ہو کر دوبارہ زیرو پوائنٹ کےمقام پر قومی شاہراہ بلاک کردی ہے۔

دھرنے کے باعث ٹریفک کی روانی معطل ہو گئی۔

1:13 PM, نومبر 14

بلوچستان میں 4 مقامات پر اہم شاہراہوں کو بند کرنے کا فیصلہ

جمعیت علمائے اسلام (ف) نے آزادی مارچ کے پلان پر عمل درآمد شروع کردیا ہے اور اس سلسلے میں بلوچستان کی مقامی قیادت نے صوبے میں 4 مقامات پر شاہراہوں کو بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

جے یو آئی (ف) کے صوبائی جنرل سیکرٹری سید محمود آغاز نے بتایا کہ دوپہر کو چمن-کوئٹہ بین الاقوامی شاہراہ کو چمن میں سید حمید کراس کے مقام پر بند کیا جائے گا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ کراچی کو کوئٹہ سے ملانے والی قومی شاہراہ کو خضدار کے مقام پر بند کریں گے۔

سید محمود آغاز کا کہنا تھا کہ بلوچستان کو پنجاب سے ملانے والی شاہراہ کو ڈیرہ غازی خان کے سرحدی مقام پر بند کیا جائے گا۔

انہوں نے بتایا کہ پلان بی پر عمل درآمد کرتے ہوئے ایران کو بلوچستان سے ملانے والی شاہراہ کو تفتان کے مقام پر بند کریں گے۔

صوبائی جنرل سیکریٹری نے کارکنوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ دھرنے کے مقامات پر فوری پہنچیں۔

12:46 PM, نومبر 14

خبیربختونخوا: نوشہرہ میں دھرنے کا شرکا جمع ہونے لگے

خیبرپختونخوا کے شہر نوشہرہ میں جمعیت علمائے اسلام (ف) کے دھرنے کی قیادت مولاناعمرصادق کریں گے

اس حوالے سے بتایا گیا کہ دھرنا جامعہ فاروقیہ فیز2 کے سامنے دیاجائے گا۔

11:11 AM, نومبر 14

'مولانا فضل الرحمٰن صرف 13 کے اسکور پر ہی بولڈ ہوگئے'

معاون خصوصی اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے جمعیت علماے اسلام (جے یوآئی) مولانا فضل الرحمٰن کا نام لیے بغیر کہا کہ روحانی اور مذہبی پیشوا اسلام آباد سے ہجرت کر گئے۔

انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمٰن نے اپنی ذاتی خواہش کی تکمیل کے لیے اسلام آباد میں سیاسی اسٹیج سجایا لیکن ان کا سارا اسکریٹ ختم ہوگیا۔

ان کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمٰن کےلیے دعا گو ہیں کہ اللہ انہیں ملک کی سلامتی و ترقی سے متعلق بہتر فیصلے کرنے کی توفیق عطا کرے۔

معاون خصوصی نے امید ظاہر کی کہ جو پلان بی دیا ہے، اس ڈرامے کی اگلی قسط اسی طرح فلاپ ہوگی، جس طرح دھرنا ہوا۔

انہوں نے کہا کہ عوام سیاسی فنکاروں کی فنکاریوں سے آگاہ ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمٰن صرف 13 کے اسکور پر ہی بولڈ ہوگئے۔

10:23 AM, نومبر 14

پیپلز پارٹی، سندھ میں جے یو آئی احتجاج کی مخالف ہوگئی

جمعیت علمائے اسلام کے دھرنے کی حمایت کرنے والی پیپلز پارٹی کی جانب سے اعلان سامنے آیا ہے کہ وہ سندھ میں احتجاج کو وسعت دینے کی اجازت نہیں دے گی۔

کراچی میں وزیر اطلاعات سندھ سعید غنی سے جب جے یو آئی کی جانب سے سڑکیں اور شاہراہیں بند کرنے کے اعلان کے بارے میں پوچھا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ تھا ’اس کی کبھی اجازت نہیں دی جاسکتی‘۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر کسی فرد یا گروہ کا منصوبہ سڑکیں شاہراہیں بند کرنے، عوام کی زندگی میں مشکلات پیدا کرنے یا حکومت کی رٹ کو چیلنج کرنے کا تو ایسا نہیں ہونے والا‘۔

سعید غنی نے یہ بھی کہا کہ ہم عام آدمی کی زندگی میں کسی کی بھی مداخلت نہیں چاہتے اور سیکیورٹی اور تحفظ کے ساتھ صورتحال کو معمول پر رکھنا حکومت کی اولین ذمہ داری ہے۔

1:22 AM, نومبر 14

جے یو آئی (ف) کا خیبر پختونخوا اور بلوچستان کیلئے پلان 'بی'

جمعیت علمائے اسلام (ف) کی صوبائی قیادتوں نے جمعرات کے لیے مارچ کے پلان 'بی' کا اعلان کردیا ہے۔

خیبر پختونخوا کے امیر سینیٹر مولانا عطاالرحمٰن نے بتایا کہ جمعرات کو 2 بجے انڈس ہائی وے بند کی جائے گی، پشاور ۔ لاہور موٹروے کو بند کیا جائے گا، چکدرہ کے مقام پر سوات، دیر، چترال اور باجوڑ کی لائنز بند ہوں گی جبکہ شاہراہ قراقرم کو بھی بند کیا جائے گا۔

ناظم عمومی بلوچستان آغا سید محمود شاہ نے پلان 'بی' بتاتے ہوئے کہا کہ دوپہر 2 بجے کوئٹہ ۔ چمن شاہراہ مکمل بند کردی جائے گی، ایران ۔ تفتان شاہراہ، بلوچستان ۔ کراچی شاہراہ کو خضدار کے مقام پر اور پنجاب ۔ بلوچستان شاہراہ کو ڈیرہ غازی خان باؤنڈری پر بند کیا جائے گا۔

1:00 AM, نومبر 14

جے یو آئی (ف) کا سندھ اور پنجاب کیلئے پلان 'بی'

جمعیت علمائے اسلام (ف) کی صوبائی قیادتوں نے جمعرات کے لیے مارچ کے پلان 'بی' کا اعلان کردیا۔

صوبہ سندھ کے لیے پلان 'بی کا اعلان کرتے ہوئے جے یو آئی (ف) کے ناظم عمومی سندھ مولانا راشد سومرو نے کہا کہ کراچی سے بلوچستان کا گیٹ وے حب ریور روڈ پر بند کیا جائے گا اور کراچی کے کارکن وہاں پہنچیں گے، لاڑکانہ، جیکب آباد اور ملحقہ اضلاع جیکب آباد کے مقام پر دھرنا دے کر سندھ بلوچستان شاہراہ بند کریں گے، سکھر، پنو عاقل، شکارپور اور ملحقہ اضلاع گھوٹکی کے مقام پر سندھ ۔ پنجاب کا رابطہ توڑیں گے جبکہ سکھر کے مقام پر سکھر ملتان موٹروے کو بند کیا جائے گا۔

ناظم عمومی پنجاب مولانا صفی اللہ بھکروی کا کہنا تھا کہ جمعرات کو 2 بجے کوٹ سبزل رحیم یار خان پر پنجاب ۔ سندھ شاہراہ کو بند کیا جائے گا، ڈیرہ غازی خان میں انڈس ہائی وے بند کی جائے گی جبکہ راولپنڈی میں اسلام آباد کے دو داخلی مقامات پر دھرنا دے کر بند کیا جائے گا۔

7:19 PM, نومبر 13

مولانا فضل الرحمٰن کا پلان 'بی' کے تحت نئے محاذ پر جانے کا اعلان

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن نے اسلام آباد کے پشاور موڑ پر کئی روز سے جاری دھرنا ختم کرتے ہوئے پلان 'بی' کے تحت نئے محاذ پر جانے کا اعلان کردیا۔

آزادی مارچ کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمٰن نے کہا کہ دو ہفتوں سے قومی سطح کا اجتماع تسلسل سے ہوا، اب نئے محاذ پر جانے کا اعلان کر دیا گیا ہے، ہمارے جاں نثار اور عام شہری سڑکوں پر نکل آئے ہیں، ہماری قوت یہاں جمع ہے اور وہاں ہمارے ساتھی سڑکوں پر نکل آئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ گرتی ہوئی دیواروں کو ایک دھکا اور دو کا انتظار ہے، ہم آج اسلام آباد سے روانہ ہوں گے اور جس طرح یہاں آئے ہیں اب اُسی طرح یہاں سے دوسرے محاذ پر جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم حکومت پر دباؤ بڑھانا چاہتے ہیں، نئے محاذ پر ہم سڑکیں بلاک کرنے والوں کے ساتھ ہوں گے، ہم پرامن ہیں اور ہم نے ملک کا نقصان نہیں کرنا لہٰذا ادارے بھی اس آزادی مارچ کا احترام کریں جبکہ اپنے کارکنان کی طرح پاکستان کی سیکیورٹی فورسز بھی عزیز ہیں۔

مکمل خبر یہاں پڑھیں۔

— فوٹو: ڈان نیوز
— فوٹو: ڈان نیوز

3:50 PM, نومبر 13

مولانا فضل الرحمٰن کی رہائش گاہ پر مشاورتی اجلاس

جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کی رہائش گاہ پر مشاورتی اجلاس شروع ہوگیا۔

ذرائع کے مطابق اجلاس کی صدارت مولانا فضل الرحمٰن کررہے ہیں جس میں متعدد پارٹیوں کے سینئر رہنماؤں بشمول مولانا عبدالغفور حیدری، مولانا عطا الرحمٰن اور محمد اسلم غوث بھی شامل ہیں۔

اس ضمن میں بتایا گیا کہ پارٹی رہنما پلان بی کی حکمت عملی کا جائزہ لیں گے۔

اجلاس میں بند کیے گئے شاہرواں سے متعلق بھی تبادلہ خیال ہوگا۔

مشاورتی اجلاس میں پلان بی سے متعلق خیبرپختونخوا میں کل سے عملدرآمد کا معاملہ بھی زیر بحث آئے گا۔

علاوہ ازیں آزادی مارچ کا دھرنا اور موجودہ سیاسی صورتحال کے امور پر بھی اجلاس کا ایجنڈا ہے۔

2:12 PM, نومبر 13

پلان بی پر عملدرآمد شروع: بلوچستان میں مرکزی شاہراہ بلاک کردی گئی

بلوچستان: جمعیت علمائے اسلام (ف) اور پختونخوا عوامی ملی پارٹی کے کارکنوں نے چمن کے قریب ضلع قلعہ عبداللہ کی مرکزی شاہراہ بلاک کردی۔

واضح رہے کہ حکومت مخالف احتجاج کے پلان بی میں مرکزی شاہرواں کو بند کرنا ہے۔

جمعیت علمائے اسلام نے آزادی مارچ کے سترہویں دن حکومت مخالف احتجاج کے پلان پر عملدرآمد شروع کردی۔

مولانا فضل الرحمٰن نے کارکنان کو گھروں سے نکلنے اور قانون ہاتھ میں نہ لینے کی تاکید کی تھی۔

2:01 PM, نومبر 13

دھرنے کے مقام پر صفائی کے انتہائی ناقص انتظام ہیں، شرکا کی شکایت

نجی چینل جیو کے مطابق جمعیت علمائے اسلام (ف) کے دھرنے میں شریک شرکا نے شکایت کی کہ دھرنے کے مقام پر صفائی کا انتہائی ناقص انتظام ہے۔

رپورٹ میں شرکا کا حوالہ دیا گیا کہ دھرنا کے مقام پر بیت الخلا اور پانی کا ناقص انتظام ہے جس کے باعث بیماریاں جنم لے رہی ہیں۔

شرکا نے کہا کہ ’ہم اپنے رہنما کے احکامات تک یہاں رکھیں گے اور ناقص صفائی سے دھرنا متاثر نہیں ہوگا۔

بلوچستان کے شرکا عبداللہ نے کہا کہ ہاں ناقص صفائی وستھرائی کے باعث پریشانی ہے ، ہم نے صفائی کے لیے کچھ لوگ لگائے ہیں انصار الاسلام کے لوگ بھی صفائی مہم کا حصہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم 2014 کے دھرنا کے شرکا نہیں ہیں۔

12:59 PM, نومبر 13

جے یو آئی کا پلان بی: ڈی آئی جی کا متعلقہ افسران کو مراسلہ جاری

ڈپٹی انسپکٹر جنرل آف پولیس (ڈی آئی جی) شرجیل کھرل نے کراچی میں جمعیت علمائے اسلام (ف) کے پلان بی کے تحت احجاجی دھرنے کے پیش نظر متعلقہ پولیس حکام کو مراسلہ ارسال کردیا۔

مراسلے میں ڈی آئی جی نے باخبر ذرائع کا حوالہ دیا اور کہا کہ جے یو آئی (ف) پر امن ماحول اور حکومت پر اقتصادی نقصان پہچانے کے لیے کراچی کے مختلف مقامات پر غیر معینہ مدت تک دھرنا دے سکتی ہے۔

ڈی جی آئی نے مراسلے میں مندرجہ مقامات کا تذکرہ کیا۔

  1. زینب مارکیٹ چوک
  2. تین تلوار
  3. آئی سی آئی پل
  4. آئل ٹرمینل کے داخلے اور خارجی راستے
  5. میری ویدر ٹاور‎

ڈی آئی جی نے اپنے مراسلے میں کہا کہ مدارس اور مقامی ورکرز پر مشتمل لوگ دھرنا دیں گے جو اپنے ہمارے ٹینٹ اور کھانے پینے کی اشیا لائیں گے۔

انہوں نے تمام ایس ایس پیز کو خبردار کیا کہ ’صورتحال کی کڑی نگرانی کی جائے اور کسی بھی ناخوشگوار واقعہ سے نمٹنے کے لیے احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں‘۔