ای میل

ہارٹ اٹیک کا خطرہ کم کرنے والی 12 غذائیں

ہارٹ اٹیک کا خطرہ کم کرنے والی 12 غذائیں



دل انسانی جسم کے اہم ترین اعضاءمیں سے ایک ہے مگر حیران کن طور پر ہم اس کی زیادہ پروا نہیں کرتے۔

روزمرہ کے تناﺅ اور مضر صحت غذا کے استعمال سے اس پر بوجھ بڑھاتے رہتے ہیں حالانکہ سب کو علم ہے کہ بہت زیادہ چکنائی سے بھرپور غذا بلڈ کولیسٹرول کی سطح بڑھانے کا باعث بنتی ہے جس کے نتیجے میں خون کی شریانیں سکڑنے لگتی ہیں اور دل اپنے افعال سرانجام دینے سے قاصر ہونے لگتا ہے۔

اس کا نتیجہ ہارٹ اٹیک یا امراض قلب کی شکل میں نکلتا ہے۔

تاہم اپنی غذا میں درج ذیل فوڈز کو شامل کرکے آپ اپنی مجموعی صحت سمیت مستقبل میں ہارٹ اٹیک کے خطرے کو بھی کم کرسکتے ہیں۔

انار

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپوریہ پھل بلڈ پریشر کو کم کرتا ہے جبکہ خون کی گردش کو معمول پر لاتا ہے جبکہ یہ ہیموگلوبن کی سطح کو بھی بڑھاتا ہے۔ اس پھل کے بیج ہی نہیں جوس بھی امراض قلب سے بچانے میں مدد دیتا ہے، اس جوس کو پینا دوران خون کو بہتر کرکے شریانوں کو سکڑنے سے بچانے اور شریانوں میں کولیسٹرول کے جمع ہونے کا عمل سست کرتا ہے، تاہم بلڈپریشر پر منفی اثرات مرتب ہوسکتے ہیں تو ڈاکٹر سے مشورہ کرنا ضروری ہے۔

مچھلی

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

اگر تو آپ کو مچھلی کھانا پسند نہیں تو یہ جان لیں کہ اسے اپنی غذا میں اکثر جگہ دینا دل کی دھڑکن میں بے قاعدگی اور شریانوں میں جمع ہوجانے والے مادوں سے لاحق ہونے والے دل کی بیماری سے بچانے میں مدد دیتا ہے، ہفتے میں دو سے تین بار اس کا استعمال فائدہ مند ہوتا ہے۔

جو کا دلیہ

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

فائبر سے بھرپور یہ دلیہ نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں کمی لانے کے ساتھ نظام ہاضمہ کو بہتر بناتا ہے، نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں کمی دل کے امراض اور ہارٹ اٹیک کا خطرہ کم کرتی ہے۔

بیری

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

بلیو بیری اور اسٹرابری کا استعمال بلڈ پریشر کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوتا ہے جو کہ ہارٹ اٹیک کا باعث بننے والا بڑا خطرہ ہے، اسی طرح یہ مزیدار پھل خون کی شریانوں کو بھی کشادہ کرنے میں مدد دیتے ہیں۔

چاکلیٹ

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

ڈارک چاکلیٹ بلڈ پریشر کو معمول میں لانے میں مدد دیتی ہے جبکہ یہ جسمانی ورم اور خون کے جمنے جیسے عارضوں کے لیے بھی مفید ہے جو کہ ہارٹ اٹیک کا خطرہ بڑھاتے ہیں۔

گریاں

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

پروٹین اور فائبر سے بھرپور گریاں جیسے بادام، اخروٹ اور کاجو وغیرہ دل کے لیے صحت مند ہیں، ان میں وٹامن ای بھی شامل ہوتا ہے جو کہ خون میں موجود نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں کمی لاتا ہے۔

زیتون کا تیل

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

روزانہ دو چمچ زیتون کے تیل کا استعمال نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح کے ساتھ ساتھ بلڈ شوگر کا لیول بھی کم کرنے میں مدد دیتا ہے۔

سبز چائے

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

سبز چائے کا صرف ایک کپ ہی کولیسٹرول کے نتیجے میں خون کے جمنے کا عمل کی روک تھام کرنے کے لیے کافی ہے، اس کے علاوہ یہ گرم مشروب میٹابولزم کو بہتر کرکے اضافی وزن میں کمی لانے میں بھی مدد دیتا ہے۔

دار چینی

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

یہ مصالحہ امراض قلب اور خون میں جمنے والے مادوں کے خلاف موثر ہے، جبکہ یہ میٹابولزم کی رفتار بڑھا کر جسمانی وزن میں تیزی سے کمی لانے کے لیے بھی فائدہ مند ہے۔

تربوز

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

یہ شریانوں کی صحت کے لیے اہم کردار ادا کرتا ہے، اسی طرح کولیسٹرول کی سطح کو مستحکم کرتا ہے جبکہ اس میں شامل اینٹی آکسائیڈنٹس مجموعی صحت کے لیے فائدہ مند ہیں۔

لہسن

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

شریانوں کو کشادہ کرنے، بلڈ پریشر میں کمی اور خون کی نالیوں میں بندش کو کھولنے کے لیے مفید لہسن کا استعمال بہت فائدہ مند ثابت ہوتا ہے۔

سیب اور ناشپاتی

کریٹیو کامنز فوٹو
کریٹیو کامنز فوٹو

فائبر سے بھرپور یہ دونوں پھل دل کی صحت میں مدد دیتے ہیں، یہ خون کی گردش کو معمول پر لاتے ہیں اور اچھی بات یہ ہے کہ سیب اور ناشپاتی سستے اور انار کے آسانی سے دستیاب متبادل ہیں۔