ہانگ کانگ میں گزشتہ ماہ میں مجرموں کی حوالگی سے متعلق متنازع بل کے خلاف لاکھوں افراد نے احتجاج کیا جس کے نتیجے میں چیف ایگزیکٹو کیری لام نے مجوزہ بل پر بحث منسوخ کردی تاہم اب عوام ملک میں جمہوری اصلاحات کے لیے مظاہرے کررہے ہیں۔

2 جولائی کو ہانگ کانگ کو چین کے حوالے کرنے کی 22ویں سالگرہ کے موقع پر مظاہرین نے پارلیمنٹ پر دھاوا بولتے ہوئے اس پر قبضہ کر لیا تھا تاہم پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے مظاہرین کو منتشر کردیا تھا۔

مظاہرین کی جانب سے پارلیمنٹ میں برطانوی جھنڈا لہرایا گیا جبکہ دیواروں پر 'ہانگ کانگ، چین نہیں ہے' لکھا گیا تھا۔

ہانگ کانگ میں 2014 میں جمہوریت پسندوں نے دو ماہ تک طویل احتجاج کیا تھا اور اس دوران پولیس اور مظاہرین کے درمیان شدید جھڑپیں ہوتی تھیں جس سے مونگ کوک سب سے زیادہ متاثر ہونے والے اضلاع میں شامل تھا۔

مونگ کوک میں 2016 میں' فش بال انقلاب' کے نام سے تحریک ابھری تھی جو پولیس کی جانب سے غیر لائسنس یافتہ دکان داروں کے خلاف کارروائی کے ردعمل پر شروع ہوئی تھی۔

ہانگ کانگ میں مظاہرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے—فوٹو: اےایف پی
ہانگ کانگ میں مظاہرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے—فوٹو: اےایف پی
پولیس نے مظاہرین پر پہلی مرتبہ پستول تانی—فوٹو: رائٹرز
پولیس نے مظاہرین پر پہلی مرتبہ پستول تانی—فوٹو: رائٹرز
اب تک ان واقعات میں ہزاروں کی تعداد میں لوگ زخمی ہوچکے ہیں—فوٹو: اے ایف پی
اب تک ان واقعات میں ہزاروں کی تعداد میں لوگ زخمی ہوچکے ہیں—فوٹو: اے ایف پی
چین نے ہانگ کانگ میں ہنگامہ آرائی اور مظاہروں کا ذمہ دار امریکا کو قرار دیا ہے—فوٹو: اےایف پی
چین نے ہانگ کانگ میں ہنگامہ آرائی اور مظاہروں کا ذمہ دار امریکا کو قرار دیا ہے—فوٹو: اےایف پی
ہانگ کانگ کو املاک کی توڑ پھوڑ سمیت بھاری مالیت کا نقصان بھی اٹھانا پڑرہا ہے—رائٹرز
ہانگ کانگ کو املاک کی توڑ پھوڑ سمیت بھاری مالیت کا نقصان بھی اٹھانا پڑرہا ہے—رائٹرز
پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کا بھی استعمال کیا—فوٹو: اے ایف پی
پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس کا بھی استعمال کیا—فوٹو: اے ایف پی
پولیس نے کئی مظاہرین کو حراست میں لے لیا—فوٹو: اےایف پی
پولیس نے کئی مظاہرین کو حراست میں لے لیا—فوٹو: اےایف پی
مظاہرین کی جانب سے پارلیمنٹ میں برطانوی جھنڈا لہرایا گیا جبکہ دیواروں پر 'ہانگ کانگ، چین نہیں ہے' لکھا گیا تھا—رائٹرز
مظاہرین کی جانب سے پارلیمنٹ میں برطانوی جھنڈا لہرایا گیا جبکہ دیواروں پر 'ہانگ کانگ، چین نہیں ہے' لکھا گیا تھا—رائٹرز
مظاہرین کا کہنا ہے کہ بیجنگ اس قانون کو سماجی کارکنان اور ناقدین کے خلاف استعمال کرے گا—فوٹو: اے ایف پی
مظاہرین کا کہنا ہے کہ بیجنگ اس قانون کو سماجی کارکنان اور ناقدین کے خلاف استعمال کرے گا—فوٹو: اے ایف پی

ای میل

ویڈیوز

گھوٹکی کے 50 سرکاری اسکولوں کی بجلی منقطع
چترال میں روایتی کھیل،  یاک پولو کے دلچسپ مقابلے
'ایسے حالات پیدا کئے جا رہے ہیں کہ لوگ پاکستان میں رہنا چھوڑ دیں'
'مولانا فضل الرحمٰن کشمیر کے نام پر لاکھوں کی لسی پی گئے'

تصاویر

واقعہ کربلا کی یاد میں یوم عاشور
9 محرم الحرام کے جلوس اور سیکیورٹی انتظامات
کراچی میں حالیہ بارش کے بعد مکھیوں کی پھر بھرمار
یوم دفاع: شہدا کو خراج عقیدت، کشمیریوں سے اظہارِ یکجہتی

تبصرے (0) بند ہیں