پاکستان کی ٹیم آسٹریلیا کے خلاف پہلے ٹیسٹ میچ میں عمدہ اوپننگ شراکت کے باوجود پہلی اننگز میں 240 رنز پر ڈھیر ہو گئی۔

برسبین میں کھیلے جا رہے پہلے ٹیسٹ میچ میں پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور اوپنرز نے ٹیم کو 75 رنز کا شاندار آغاز فراہم کیا۔

لیکن قومی ٹیم اس شاندار آغاز سے فائدہ اٹھانے میں ناکام رہی اور 94 رنز پر آدھی ٹیم پویلین لوٹ چکی تھی۔

اس کے بعد محمد رضوان اور یاسر شاہ نے اسد شفیق کا ساتھ دے کر پاکستان کو 240 رنز کے مجموعے تک رسائی دلائی، اسد شفیق نے 76رنز کی اننگز کھیلی۔

کپتان اظہر علی بھی 39 رنز بنانے کے بعد پویلین لوٹ گئے— فوٹو: اے ایف پی
کپتان اظہر علی بھی 39 رنز بنانے کے بعد پویلین لوٹ گئے— فوٹو: اے ایف پی
میچ کے آغاز سے قبل پاکستان اور آسٹریلیا کا قومی ترانہ بجایا گیا — فوٹو: اے ایف پی
میچ کے آغاز سے قبل پاکستان اور آسٹریلیا کا قومی ترانہ بجایا گیا — فوٹو: اے ایف پی
اوپنرز اظہر علی اور شان مسعود نے پاکستانی ٹیم کو 75 رنز کا بہترین آغاز فراہم کیا — فوٹو: اے ایف پی
اوپنرز اظہر علی اور شان مسعود نے پاکستانی ٹیم کو 75 رنز کا بہترین آغاز فراہم کیا — فوٹو: اے ایف پی
آسٹریلین باؤلرز پہلے سیشن میں انتہائی کوشش کے باوجود کوئی وکٹ نہ لے سکے— فوٹو: اے ایف پی
آسٹریلین باؤلرز پہلے سیشن میں انتہائی کوشش کے باوجود کوئی وکٹ نہ لے سکے— فوٹو: اے ایف پی
شان مسعود سلپ میں اسٹوین اسمتھ کو کیچ دے بیٹھے— فوٹو: اے ایف پی
شان مسعود سلپ میں اسٹوین اسمتھ کو کیچ دے بیٹھے— فوٹو: اے ایف پی
جوش ہیزل وُڈ نے بابر اعظم پر اپنی برتری قائم رکھتے ہوئے انہیں ایک رن بنانے کے بعد ہی پویلین لوٹا دیا — فوٹو: اے ایف پی
جوش ہیزل وُڈ نے بابر اعظم پر اپنی برتری قائم رکھتے ہوئے انہیں ایک رن بنانے کے بعد ہی پویلین لوٹا دیا — فوٹو: اے ایف پی
اسد شفیق نے مشکل حالات میں 76 رنز کی ذمے دارانہ اننگز کھیلی — فوٹو: اے ایف پی
اسد شفیق نے مشکل حالات میں 76 رنز کی ذمے دارانہ اننگز کھیلی — فوٹو: اے ایف پی
نیتھن لائن نے افتخار احمد کو آؤٹ کر کے پاکستان کو پانچواں نقصان پہنچایا — فوٹو: اے ایف پی
نیتھن لائن نے افتخار احمد کو آؤٹ کر کے پاکستان کو پانچواں نقصان پہنچایا — فوٹو: اے ایف پی
محمد رضوان نے 34 گیندوں پر 37 رنز کی جارحانہ اننگز کھیلی— فوٹو: اے ایف پی
محمد رضوان نے 34 گیندوں پر 37 رنز کی جارحانہ اننگز کھیلی— فوٹو: اے ایف پی
عالمی نمبر ایک ٹیسٹ فاسٹ باؤلر پیٹ کمنز کی گیند پر اسد شفیق کے باؤلڈ ہونے کا منظر— فوٹو: اے پی
عالمی نمبر ایک ٹیسٹ فاسٹ باؤلر پیٹ کمنز کی گیند پر اسد شفیق کے باؤلڈ ہونے کا منظر— فوٹو: اے پی
یاسر شاہ نے 26 رنز بنانے کے ساتھ ساتھ اسد شفیق کے ساتھ ساتویں وکٹ کے لیے 84 رنز کی شراکت قائم کی— فوٹو: اے ایف پی
یاسر شاہ نے 26 رنز بنانے کے ساتھ ساتھ اسد شفیق کے ساتھ ساتویں وکٹ کے لیے 84 رنز کی شراکت قائم کی— فوٹو: اے ایف پی
یاسر ایک اچھی اننگز کھیلنے کے بعد مچل اسٹارک کی وکٹ بنے— فوٹو: اے ایف پی
یاسر ایک اچھی اننگز کھیلنے کے بعد مچل اسٹارک کی وکٹ بنے— فوٹو: اے ایف پی
پہلا ٹیسٹ میچ کھیلنے والے نسیم شاہ نے مچل اسٹارک کی گیند کا دفاع کر کے انہیں ہیٹ ٹرک سے محروم کردیا — فوٹو: اے ایف پی
پہلا ٹیسٹ میچ کھیلنے والے نسیم شاہ نے مچل اسٹارک کی گیند کا دفاع کر کے انہیں ہیٹ ٹرک سے محروم کردیا — فوٹو: اے ایف پی
فاسٹ باؤلر مچل اسٹارک 4 وکٹیں لے کر سب سے کامیاب باؤلر رہے— فوٹو: اے پی
فاسٹ باؤلر مچل اسٹارک 4 وکٹیں لے کر سب سے کامیاب باؤلر رہے— فوٹو: اے پی

ای میل

ویڈیوز

'پی آئی سی میں جو ہوا وہ نہیں ہونا چاہیے تھا'
'حسان نیازی کے خلاف بھرپور کارروائی کی جارہی ہے'
بھارتی وزیراعظم نریندر مودی منہ کے بل گر پڑے
'آصف زرداری، فریال تالپور اور مریم نواز بیرون ملک نہیں جاسکیں گے'

تصاویر

2 براعظموں میں واقع دنیا کے واحد شہر کی سیر
وکلا کا دل کے ہسپتال پر دھاوا
پاکستان میں 10سال بعد ٹیسٹ کرکٹ کی یادگار واپسی
پاکستان میں 10سال بعد ٹیسٹ کرکٹ کی واپسی

تبصرے (0) بند ہیں