عدنان سمیع کی انڈین شہریت کیلئے 'دوبارہ' درخواست

اپ ڈیٹ 02 مارچ 2015

ای میل

پاکستانی گلوکاردو سال قبل بھی ہندوستانی شہریت کے لیے درخواست دے چکے تھے، تاہم اسے مسترد کردیا گیا۔
پاکستانی گلوکاردو سال قبل بھی ہندوستانی شہریت کے لیے درخواست دے چکے تھے، تاہم اسے مسترد کردیا گیا۔

پاکستانی گلوکارعدنان سمیع خان نے ایک مرتبہ مسترد کیے جانے کے باوجود دوسری مرتبہ ہندوستانی شہریت حاصل کرنے کے لیے درخواست دائر کردی ہے۔

ہندوستانی اخبار انڈین ایکسپریس کی ایک رپورٹ کے مطابق 43 سالہ گلوکار دو سال قبل بھی ہندوستانی شہریت کے لیے درخواست دے چکے تھے، تاہم اسے مسترد کردیا گیا۔

وزارت داخلہ کے غیرملکیوں کی ڈویژن کے افسر کے مطابق عدنان سمیع خان نے دوبارہ درخواست جمع کرائی ہے، جو ابھی زیرغور ہے۔

گزشتہ ماہ ہندوستانی وزارت داخلہ نے وزارت قانون سے پوچھا تھا کہ عدنان سمیع کو ہندوستانی شہریت دی جا سکتی ہے یا نہیں، لیکن وزارت قانون نے یہ کہہ کر درخواست نمٹانے سےا نکار کردیا کہ سٹیزن شپ ایکٹ کے تحت کسی غیر ملکی کو ہندوستانی شہریت دینے کی ذمہ داری وزارت داخلہ پرعائد ہوتی ہے۔

تاہم وزارت قانون کا کہنا تھا کہ وہ سٹیزن شپ ایکٹ کی شرائط کی تشریح کے ساتھ اس کیس کا فیصلہ کرنے میں وزارت داخلہ کی مدد ضرورکرسکتی ہے۔

واضح رہے کہ ہندوستانی سٹیزن شپ ایکٹ کے تحت اُس غیر ملکی کو ہندوستانی شہریت دی جاسکتی ہے جس نے سائنس، فلاسفی،آرٹ، لٹریچر، دنیا میں امن یا انسانی ترقی کے لیے خدمات سر انجام دی ہوں۔

عدنان سمیع خان، جو فی الوقت پاکستانی شہریت کے حامل ہیں، 2001 میں ہندوستان آئے اور 2001 سے 2013 کے دوران انھوں نے امریکا سمیت دیگر ممالک کا بھی دورہ کیا۔ ان کے پاس بزنس اینڈ پروفیشنل ویزہ موجود ہے۔

اس سے قبل ان کی ہندوستانی شہریت حاصل کرنے کے حوالے سے درخواست ممبئی پولیس کی اسپیشل برانچ کے پاس جمع کرائی گئی تھی۔