لاہور ہائی کورٹ نے پاناما پیپرز میں نامزد پاکستانی شخصیات کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں شامل کرنے کے لیے دائر درخواست پر اٹارنی جنرل اور ایف آئی اے سے جواب طلب کرلیا۔

ہائی کورٹ کے جسٹس شمس محمود مرزا نے درخواست کی سماعت کی۔

درخواست گزار فاروق امجد بسمل نے کہا کہ پاناما پیپرز میں نامزد پاکستانی شخصیات کی منی لانڈرنگ کی وجہ سے پوری دنیا میں پاکستان کی بدنامی ہوئی۔

یہ بھی پڑھیں: پاناما پیپرز: پاکستانیوں کے متعلق انکشافات

انہوں نے کہا کہ پاناما پیپرز میں جن افراد کے نام سامنے آئے ہیں ان کے حوالے سے معاملات عدالتوں میں زیر التوا ہیں، لہٰذا عدالت سے استدعا ہے کہ وہ پاناما پیپرز کا سامنا کرنے والے افراد کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں شامل کرنے کا حکم جاری کرے۔

عدالت نے درخواست کو قابل سماعت قرار دیتے ہوئے اٹارنی جنرل اور وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے) سے 4 اکتوبر کو جواب طلب کرلیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز عدالت نے درخواست کے قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے سے متعلق فیصلہ محفوظ کرلیا تھا۔