کینیڈا: فائرنگ سے ایک خاتون ہلاک، حملہ آور نے خود کشی کرلی

اپ ڈیٹ 23 جولائ 2018

ای میل

ٹورنٹو میں فائرنگ کے واقعے کے بعد پولیس اہلکاروں نے جائے وقوع کو گھیر لیا—فوٹو: اے ایف ہی
ٹورنٹو میں فائرنگ کے واقعے کے بعد پولیس اہلکاروں نے جائے وقوع کو گھیر لیا—فوٹو: اے ایف ہی

کینیڈا کے شہر ٹورنٹو میں مسلح شخص نے فائرنگ کردی، جس کے نتیجے میں ایک خاتون ہلاک اور ایک بچی سمیت 13 افراد زخمی ہوگئے، جبکہ فائرنگ کرنے والے شخص نے خود کو گولی مارلی۔

فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق پولیس ذرائع کا کہنا تھا کہ انہیں شہر کے علاقے گریک ٹاؤن سے مقامی وقت کے مطابق رات دس بجے کال موصول ہوئی۔

اس حوالے سے ٹورنٹو پولیس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کیے گئے ٹوئٹ کے ذریعے بتایا کہ 14 افراد فائرنگ کا نشانہ بنے جس میں سے ایک خاتون ہلاک جبکہ 13 زخمی ہوئے، زخمیوں میں ایک بچی کی حالت تشویش ناک ہے۔

اس سلسلے میں امریکی خبر رساں ادارے سی این این نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ جائے وقوع پر موجود عینی شاہد نے بتایا کہ انہوں نے تقریباً 20 گولیوں کی آوازیں سنیں ہیں جبکہ ہتھیار کو مسلسل ری لوڈ کرنے کی آوازیں بھی آرہیں تھیں۔

پولیس ذرائع کا یہ بھی کہنا تھا کہ مشتبہ شخص نے خود کو ہلاک کرنے سے قبل پولیس پر بھی فائرنگ کی۔

برطانوی خبر رساں ادارے بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق کچھ متاثرین کو موقع پر ہی طبی امداد فراہم کی گئی جبکہ متعدد کو قریبی ہسپتال منتقل کیا گیا، تاہم فائرنگ کی وجوہات کا تاحال علم نہیں ہوسکا۔

واقعے پر اونٹاریو کے وزیر اعلیٰ ڈوگ فورڈ نے ٹوئٹ کر کے متاثرین سے یکجہتی کا اظہار کیا، ان کا کہنا تھا کہ میری تمام تر ہمدردیاں ٹورنٹو میں ہونے والے فائرنگ کے واقعے کے متاثرین اور ان کے اہل خانہ کے ساتھ ہیں۔

اس کے ساتھ انہوں نے فوری طور پر متاثرین کی مدد کو پہنچنے والے افراد کا بھی شکریہ ادا کیا۔

خیال رہے کہ مذکورہ واقعہ کینیڈا میں بڑھتے ہوئے فائرنگ کے واقعات کی جانب اشارہ کررہے ہیں، صرف رواں برس کے دوران کینیڈا میں فائرنگ کے 200 واقعات رپورٹ ہوچکے ہیں جس میں سے 20 واقعات میں متعدد افراد ہلاک ہوئے۔

واضح رہے کہ کینیڈا میں روایتی طور پر اس کے ہمسایہ ملک امریکا کے مقابلے مسلح تشدد کی شرح کافی حد تک کم تصور کی جاتی ہے۔