بلاول پر تنقید، پیپلز پارٹی کا شیخ رشید کے خلاف قانونی کارروائی کا فیصلہ

اپ ڈیٹ 17 مارچ 2019

ای میل

شیخ رشید نے گزشتہ روز بیان دیا تھا کہ بچہ بچ کر کھیلے تو اچھا ہے ورنہ ان کے ہاتھوں سیاسی موت مارا جائے گا — فائل فوٹو/ڈان نیوز
شیخ رشید نے گزشتہ روز بیان دیا تھا کہ بچہ بچ کر کھیلے تو اچھا ہے ورنہ ان کے ہاتھوں سیاسی موت مارا جائے گا — فائل فوٹو/ڈان نیوز

پاکستان پیپلز پارٹی نے وزیر ریلوے شیخ رشید کے خلاف قانونی کارروائی کے لیے وکلاء سے مشاورت کا آغاز کردیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے کراچی کینٹ اسٹیشن کا دورہ کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا اور کہا تھا کہ ’بچہ بچ کر کھیلے تو اچھا ہے ورنہ ان کے ہاتھوں سیاسی موت مارا جائے گا‘۔

وزیر ریلوے کے بیان پر رد عمل دیتے ہوئے پیپلز پارٹی کی رہنما نفیسہ شاہ کا کہنا تھا کہ شیخ رشید کی دھمکی کو نظر انداز نہیں کرسکتے۔

مزید پڑھیں: بلاول کو سیاست کیلئے زرداری کے بجائے بھٹو بننا پڑے گا، شیخ رشید

انہوں نے شیخ رشید پر الزامات لگاتے ہوئے کہا کہ ’شیخ رشید کالعدم تنظیموں کے سہولت کار ہیں، غور کر رہے ہیں کہ شیخ رشید نے کس کارنر کا پیغام دیا‘۔

ان کا کہنا تھا کہ ’پشاور روڈ کے بھکاری کی اپنی یہ اوقات نہیں کہ دھمکی دے، جیالے آہنی دیوار بن کر اپنے قائد کی حفاظت کریں گے، ان کے صبر کو ان کی کمزوری نہ سمجھا جائے۔

دوسری جانب پیپلز پارٹی پنجاب کے سیکریٹری جنرل چوہدری منظور کا کہنا تھا کہ ’شیخ رشید گندگی پھیلاتے رہے ہم نے نظر انداز کیا، قتل کی دھمکی کو نظرانداز نہیں کر سکتے‘۔

یہ بھی پڑھیں: شیخ رشید کی نااہلی کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

انہوں نے دعویٰ کیا کہ ’بلاول بھٹو کے کالعدم جماعتوں کے خلاف کارروائی کے مطالبے کے بعد شیخ رشید نے یہ دھمکی دی ہے، شیخ رشید کے کالعدم جماعتوں اور دہشت گردوں سے تعلقات کسی سے پوشیدہ نہیں ہیں‘۔

انہوں نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا کہ ’حکومت شیخ رشید کو کابینہ سے نکال کر ان کے خلاف کارروائی کرے اور اگر اب بھی شیخ رشید کابینہ کا حصہ رہے تو سمجھا جائے گا یہ دھمکی حکومت کی طرف سے ہے‘۔