نریندر مودی نے دوسری مدت کیلئے وزارت عظمیٰ کا حلف اٹھا لیا

30 مئ 2019

ای میل

حلف برداری کی تقریب میں جنوبی اور جنوب مشرقی ایشیا کے ممالک کے سربراہان بھی شریک تھے — فوٹو: رائٹرز
حلف برداری کی تقریب میں جنوبی اور جنوب مشرقی ایشیا کے ممالک کے سربراہان بھی شریک تھے — فوٹو: رائٹرز

بھارت میں لوک سبھا (ایوان زیریں) کے انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی کامیابی کے بعد نریندر مودی نے دوسری مدت کے لیے وزارت عظمیٰ کے عہدے کا حلف اٹھا لیا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی 'اے پی' کے مطابق بھارت کے صدر رام ناتھ کووِند نے نریندر مودی اور ان کی کابینہ کے وزرا سے حلف لیا۔

نئی کابینہ میں سابق وزیر خارجہ سشما سوراج کو حصہ نہیں بنایا گیا ہے جبکہ خرابی صحت کے باعث سابق وزیر خزانہ ارون جیٹلی نے بھی کابینہ میں شامل ہونے سے معذرت کر لی تھی۔

وزرا کے قلمدانوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا — فوٹو: اے ایف پی
وزرا کے قلمدانوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا — فوٹو: اے ایف پی

نریندر مودی کی نئی کابینہ میں شامل ہونے والے نئے اراکین میں 2014 سے بی جے پی کے سربراہ امیت شامل ہیں، جبکہ وزرا کے قلمدانوں کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔

یاد رہے کہ لوک سبھا کے حالیہ انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی نے 542 کے ایوان میں سے 303 نشستوں پر کامیابی حاصل کی تھی اور تنہا حکومت بنانے کی پوزیشن میں آگئی تھی۔

یہ بھی پڑھیں: کون، کب کتنی مدت تک بھارتی وزیر اعظم رہا

تاہم انہیں گراوٹ کی شکار معیشت، بیروزگاری کی بڑھتی ہوئی شرح اور زرعی اجناس کی کم قیمتوں سمیت کئی مشکل چیلنجز کا سامنا ہے۔

صدارتی محل میں نریندر مودی کی حلف برداری کی تقریب میں انتخابات میں 52 نشستیں جیتنے والی اپوزیشن جماعت کانگریس کی سونیا گاندھی اور راہول گاندھی نے بھی شرکت کی۔

حلف برداری کی تقریب میں جنوبی اور جنوب مشرقی ایشیا کے ممالک کے سربراہان بھی شریک تھے۔

مزید پڑھیں: جیت گیا مودی ہار گیا بھارت

ان رہنماؤں میں تھائی لینڈ کے سفیر، کرغزستان کے صدر، بنگلہ دیش کے صدر محمد عبدالحامد، سری لنکا کے صدر میتھری پالا سری سینا، موریشس کے صدر، نیپال کے وزیر اعظم، بھوٹان کے وزیر اعظم اور میانمار کے صدر شامل تھے۔