رہائش کیلئے دنیا کے بدترین شہروں میں کراچی کا پانچواں نمبر

اپ ڈیٹ 24 جون 2022
انتہائی غیر تسلی بخش معیار زندگی کی وجہ سے کراچی پانچواں ناقابل رہائش شہر قرار دیا گیا—فائل فوٹو : فیس بک
انتہائی غیر تسلی بخش معیار زندگی کی وجہ سے کراچی پانچواں ناقابل رہائش شہر قرار دیا گیا—فائل فوٹو : فیس بک

برطانوی میگزین دی اکانومسٹ کے ریسرچ اینڈ اینالسز ڈویژن ’اکنامسٹ انٹیلی جنس یونٹ (ای آئی یو)‘ نے اپنی حالیہ رپورٹ میں ایک بار پھر کراچی کو ’رہائش‘ کے حوالے سے دنیا کے بدترین شہروں میں شامل کرلیا۔

ای آئی یو کے انڈیکس میں 30 سے زیادہ عوامل کی بنیاد پر 173 شہروں میں حالات زندگی کی درجہ بندی کی گئی ہے، شہروں کی درجہ بندی استحکام، صحت کی سہولیات، ثقافت و ماحول، تعلیم اور انفرااسٹرکچر کے شعبوں کی نوعیت اور غیر دستیاب عوامل کی بنیادوں پر کی جاتی ہے۔

رواں سال رہائش کے لیے دنیا کے بدترین شہروں کی فہرست میں کراچی 173 شہروں میں 168 ویں نمبر پر ہے جو درجہ بندی کے لحاظ سے محض الجزائر، طرابلس، لاگوس اور دمشق جیسے شہروں سے بہتر رہا۔

دریں اثنا آسٹریا کا دارالحکومت ویانا ایک بار پھر رہائش کے لیے دنیا کے بہترین شہر کے طور پر پہلے نمبر پر آگیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: رہائش کیلئے ’کراچی‘ دنیا کے بدترین شہروں میں شامل

فروری میں روس کے یوکرین پر حملے کے بعد دارالحکومت کیف کو رواں سال اس فہرست میں شامل نہیں کیا گیا جبکہ روسی دارالحکومت ماسکو اور روس ہی کے شہر سینٹ پیٹرزبرگ کی درجہ بندی میں سنسرشپ اور مغربی پابندیوں کے اثرات کے سبب 13 درجے کمی آگئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق ویانا نے نیوزی لینڈ کے شہر آکلینڈ سے بہترین شہر کا ٹائٹل چھین لیا ہے، جو پہلے نمبر سے 34 ویں نمبر پر پہنچ گیا ہے، اس کی وجہ کورونا کی وبا کے دوران شہر میں نقل و حرکت سے متعلق سخت پابندیاں ہیں۔

گزشہ سال ویانا کورونا کی وجہ سے شہر کے عجائب گھروں اور ریسٹورنٹس کی بندش کے سبب اپنا مقام کھو کر 12ویں نمبر پر آگیا تھا لیکن رواں سال ثقافتی اور سماجی زندگی دوبارہ بحال ہونے کے بعد اس نے اپنا مقام واپس لے لیا ہے جو اسے 2018 اور 2019 میں حاصل ہوا تھا۔

مزید پڑھیں: دنیا کے قابل رہائش شہروں میں کراچی کے حصے میں کونسا نمبر آیا؟

رپورٹ کے مطابق شہر کی نمایاں خصوصیات اس کا استحکام اور اچھا انفرااسٹرکچر ہے، اس کے علاوہ اچھی طبی سہولیات اور ثقافت اور تفریح کے مواقع بھی شہریوں کے لیے پرکشش ہیں۔

ویانا کے بعد ڈنمارک کے دارالحکومت کوپن ہیگن کا نام آتا ہے، اس درجہ بندی میں تیسرے نمبر پر سوئٹزرلینڈ کا شہر زیورخ ہے جبکہ اس کے بعد بالترتیب کینیڈا میں کیلگری، پھر وینکوور اور اس کے بعد سوئٹزرلینڈ میں جنیوا کے نام آتے ہیں۔

چھٹے نمبر پر جنیوا کے بعد جرمن شہر فرینکفرٹ، پھر کینیڈا کے شہر ٹورنٹو، اس کے بعد نیدرلینڈز کے شہر ایمسٹرڈیم اور دسویں نمبر پر مشترکہ طور پر جاپان کے اوساکا اور آسٹریلیا کے میلبورن کے نام ہیں۔

یہ بھی پڑھیں: کراچی دنیا کا سب سے ’غیر محفوظ‘ شہر ہے، رپورٹ

ہر سال کی طرح اس سال بھی اس فہرست میں دنیا کے ان شہروں کے نام بھی شامل ہیں جنہیں وہاں کے خراب معیار زندگی کے باعث سب سے کم قابل رہائش شہر قرار دیا گیا ہے۔

ان میں سے سب سے زیادہ ناقابل رہائش شام کا دارالحکومت دمشق ہے، جس کے بعد نائجیریا کے شہر لاگوس کا نام آتا ہے، تیسرئے نمبر پر لیبیا کا شہر طرابلس ہے، جس کے بعد الجزائر کے اسی نام کے دارالحکومت چوتھا ہے۔

پاکستان کا سب سے بڑا شہر کراچی اپنے انتہائی غیر تسلی بخش معیار زندگی کی وجہ سے دنیا کا پانچواں سب سے زیادہ ناقابل رہائش شہر قرار دیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں: کراچی، بدترین پبلک ٹرانسپورٹ نظام رکھنے والے شہروں میں شامل

رواں سال اس فہرست میں سندھ کا دارالحکومت 37.5 انڈیکس اسکور کے ساتھ 173 شہروں میں 168 ویں نمبر پر رہا، کراچی کا ہیلتھ کیئر اسکور 33.3 ہے، اس نے ثقافت اور ماحولیات کے لیے 35.2 اسکور حاصل کیا، تعلیم کے لیے 66.7 اور انفراسٹرکچر میں 51.8 کا سکور حاصل کیا۔

بدترین شہروں کی فہرست میں چھٹے نمبر پر پاپوا نیو گنی کا شہر پورٹ مورسبی، ساتویں نمبر پر بنگلہ دیش کا شہر ڈھاکا، آٹھویں نمبر پر زمبابوے کا شہر ہرارے، نویں نمبر پر کمیرون کا شہر دوالا اور دسویں نمبر پر ایران کا دارالحکومت تہران ہے۔

تبصرے (0) بند ہیں