• KHI: Maghrib 7:16pm Isha 8:43pm
  • LHR: Maghrib 7:01pm Isha 8:38pm
  • ISB: Maghrib 7:11pm Isha 8:52pm
  • KHI: Maghrib 7:16pm Isha 8:43pm
  • LHR: Maghrib 7:01pm Isha 8:38pm
  • ISB: Maghrib 7:11pm Isha 8:52pm

الیکشن کمیشن کا قومی اسمبلی کی 33 نشستوں پر 16 مارچ کو ضمنی انتخابات کا اعلان

شائع January 27, 2023
—فائل فوٹو: اے پی پی
—فائل فوٹو: اے پی پی

الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی ائی) کے اراکین کے استعفے کے بعد خالی ہونے والی قومی اسمبلی کی 33 نشستوں پر ضمنی انتخابات کا شیڈول جاری کردیا۔

الیکشن کمیشن کی طرف سے جاری نوٹی فکیشن کے مطابق قومی اسمبلی کے 33 حلقوں پر 16 مارچ 2023 کو ضمنی انتخابات ہوں گے جس کے لیے 6 فروری سے 8 فروری تک کاغذات نامزدگی وصول کیے جائیں گے۔

الیکشن کمیشن کی طرف سے جن قومی اسمبلی حلقوں پر انتخابات کے لیے نوٹی فکیشن جاری کیا گیا ہے ان میں یہ شامل ہیں۔

  • این اے 04 سوات 3
  • این اے 17 ہری پور 1
  • این اے 18 صوابی 1
  • این اے 25 نوشہرہ 1
  • این اے 26 نوشہرہ 2
  • این اے 32 کوہاٹ
  • این اے 38 ڈی آئی خان 1
  • این اے 43 خیبر 1
  • این اے 52 اسلام آباد 1
  • این اے 53 اسلام آباد 2
  • این اے 54 اسلام آباد 3
  • این اے 57 راولپنڈی 1
  • این اے 59 راولپنڈی 3
  • این اے 60 راولپنڈی 4
  • این اے 62 راولپنڈی 6
  • این اے 63 راولپنڈی7
  • این اے 76 جہلم 2
  • این اے 97 بھکر 1
  • این اے 126 لاہور 4
  • این اے 130 لاہور 8
  • این اے 155 ملتان 2
  • این اے 156 ملتان 3
  • این اے 191 ڈیرہ غازی خان 3
  • این اے 241 کورنگی کراچی 3
  • این اے 242 کراچی ایسٹ 1
  • این اے 243 کراچی ایسٹ 2
  • این اے 244 کراچی ایسٹ 3
  • این اے 247 کراچی ساؤتھ 2
  • این اے 250 کراچی ویسٹ 3
  • این اے 252 کراچی ویسٹ 5
  • این اے 254 کراچی سینٹرل 2
  • این اے 256 کراچی سینٹرل 4
  • این اے 265 کوئٹہ 2

خیال رہے کہ 17 جنوری کو اسپیکر قومی اسمبلی راجا پرویز اشرف نے تحریک انصاف کے 34 اراکین اسمبلی کے استعفے منظور کیے تھے۔

اسپیکر کی جانب سے جن اراکین کے استعفے منظور کیے گئے تھے ان میں 33 ارکان کے ساتھ ساتھ خواتین کی مخصوص نشستوں پر منتخب اراکین بھی شامل تھیں۔

جن اراکین کے استعفے منظور کیے گئے ہیں ان میں مراد سعید، عمر ایوب خان، اسد قیصر، پرویز خٹک، عمران خٹک، شہریار آفریدی، علی امین خان، نور الحق قادری، راجا خرم شہزاد نواز، علی نواز اعوان، اسد عمر، صداقت علی خان، غلام سرور خان، شیخ راشد شفیق، شیخ رشید احمد، منصور حیات خان، فواد احمد، ثنااللہ خان مستی خیل، محمد حماد اظہر، شفقت محمود خان، ملک محمد عامر ڈوگر، شاہ محمود قریشی، زرتاج گل، فہیم خان، سیف الرحمٰن، عالمگیر خان، علی حیدر زیدی، آفتاب حسین صادق، عطااللہ، آفتاب جہانگیر، محمد اسلم خان، نجیب ہارون اور محمد قاسم خان سوری شامل تھے۔

اس کے علاوہ خواتین کی مخصوص نشستوں پر منتخب عالیہ حمزہ ملک اور کنول شوزب کے استعفے بھی منظور کر لیے گئے تھے۔

اسپیکر قومی اسمبلی راجا پرویز اشرف کی جانب سے استعفے منظور کیے جانے کے بعد الیکشن کمیشن آف پاکستان نے مذکورہ 35 اراکین قومی اسمبلی کو ڈی نوٹیفائی کر دیا تھا۔

بعدازاں اسپیکر قومی اسمبلی راجا پرویز اشرف نے پاکستان تحریک انصاف کے مزید 34 اراکین اسمبلی کے استعفے منظور کرنے کے تین روز بعد ہی 20 جنوری کو پی ٹی آئی کے مزید 35 اراکین کے استعفے منظور کرلیے اور الیکشن کمیشن کی جانب سے فوری طور پر انہیں ڈی نوٹیفائی بھی کردیا گیا تھا۔

تحریک انصاف کے اراکین اسمبلی کے استعفے

پی ٹی آئی کے اراکین اسمبلی نے 11 اپریل 2022 کو پارلیمنٹ میں اعتماد کے ووٹ کے ذریعے پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان کو وزیر اعظم کے عہدے سے ہٹائے جانے کے بعد اپنے استعفے جمع کرائے تھے۔

اسمبلی سے بڑے پیمانے پر مستعفی ہونے کے فیصلے کا اعلان پی ٹی آئی کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے 11 اپریل کو وزیر اعظم شہباز شریف کے انتخاب سے چند منٹ قبل اسمبلی کے فلور پر کیا تھا۔

کارٹون

کارٹون : 29 مئی 2024
کارٹون : 28 مئی 2024