• KHI: Zuhr 12:33pm Asr 5:15pm
  • LHR: Zuhr 12:03pm Asr 4:59pm
  • ISB: Zuhr 12:09pm Asr 5:09pm
  • KHI: Zuhr 12:33pm Asr 5:15pm
  • LHR: Zuhr 12:03pm Asr 4:59pm
  • ISB: Zuhr 12:09pm Asr 5:09pm

ٹوئٹر پر 10 لاکھ سے زائد فالوورز والی شخصیات کو مفت ’بلیو ٹک‘ دیے جانے کا انکشاف

شائع April 23, 2023
— فوٹو: ٹوئٹر
— فوٹو: ٹوئٹر

مائکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوئٹر نے 20 اپریل کو دنیا بھر سے تمام شخصیات اور اداروں کے بلیو ٹک ہٹا دیے تھے، تاہم اب انکشاف ہوا ہے کہ ٹوئٹر نے بعض شخصیات اور اداروں کے اکاؤنٹس پر مفت بلیو ٹک بحال کرنا شروع کردیے۔

ٹوئٹر نے 20 اپریل سے بلیو ٹک کو ماہانہ فیس سے جوڑتے ہوئے اکاؤنٹس سے legacy بلیو ٹک ہٹا دیے تھے۔

ٹوئٹر کے مالک ایلون مسک نے پہلے ہی بتادیا تھا کہ 20 اپریل کے بعد صرف ماہانہ فیس کے عوض ہی بلیو ٹک فراہم کیا جائے گا۔

ٹوئٹر کی جانب سے تمام شخصیات اور اداروں کے بلیو ٹک ہٹائے جانے کے دو دن بعد بعض شخصیات نے دعویٰ کیا کہ ان کے اکاؤنٹس پر مفت میں بلیو ٹک بحال کیے گئے۔

ایسی شخصیات میں ملالہ یوسف زئی سمیت متعدد شخصیات شامل ہیں، جنہوں نے اپنی ٹوئٹس میں دعویٰ کیا کہ انہوں نے بلیو ٹک کے لیے کسی فیس کی ادائیگی نہیں کی۔

ملالہ یوسف زئی کے علاوہ پریانکا چوپڑا اور بھارتی صحافی رانا ایوب سمیت دیگر متعدد شخصیات نے بھی ایسے ہی دعوے کیے کہ انہوں نے بلیو ٹک کے لیے کوئی فیس ادا نہیں کی اور ان کے اکاؤنٹس پر بلیو ٹک بحال کردیا گیا۔

ایسی ٹوئٹس کرنے والی بعض شخصیات کی ٹوئٹر پر ایلون مسک نے بھی ریپلائی کرتے ہوئے انہیں خوش آمدید کہا۔

دوسری جانب ایسی اطلاعات بھی ہیں کہ ممکنہ طور پر ٹوئٹر کی جانب سے دنیا بھر کی ایسی معروف سیاسی، سماجی، شوبز، اسپورٹس اور سائنس کی شخصیات کے اکاؤنٹس پر legacy بلیو ٹک بحال کیا جا رہا ہے کہ جن کے فالوورز کی تعداد 10 لاکھ سے زائد ہے۔

پاکستان میں بھی ایسی متعدد سیاسی، شوبز اور اسپورٹس شخصیات موجود ہیں جن کے فالوورز کی تعداد 10 لاکھ سے کہیں زیادہ ہے، تاہم تاحال کسی پاکستانی شخصیت نے ایسا کوئی دعویٰ نہیں کیا کہ ان کے اکاؤنٹس پر legacy بلیو ٹک کیا گیا۔

دلچسپ بات یہ کہ جو شخصیات دعویٰ کر رہی ہیں کہ ان کے اکاؤنٹس پر legacy بلیو ٹک کردیا گیا، ان کے بلیو ٹک پر کلک کرنے سے پیغام سامنے آ رہا ہے کہ انہوں نے ٹوئٹر بلیو سروس یعنی ماہانہ فیس کے عوض بلیو ٹک حاصل کیا ہے۔

کارٹون

کارٹون : 16 جون 2024
کارٹون : 15 جون 2024