پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کی رکن سندھ اسمبلی شرمیلا فاروقی نے کہا ہے کہ ٹی وی شو کی میزبان اور اداکارہ نادیہ خان نے میری والدہ کا مذاق اڑایا جس کے بعد میں نے انہیں ویڈیو ڈیلیٹ کرنے کیلئے میسج کیا لیکن انہوں نے صاف انکار کرتے ہوئے مجھے بلاک کردیا تھا۔

شرمیلا فاروقی نے حال ہی میں اداکار احمد علی بٹ کے پوڈکاسٹ میں شرکت کی جہاں انہوں نے میزبان کے دلچسپ سوالوں کا جواب دیا۔

پوڈکاسٹ کے شروع میں شرمیلا فاروقی نے سیاست میں قدم رکھنے سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ ’میں حادثاتی طور پر سیاست میں آئی تھی، بچپن میں پائلٹ بننے کا شوق تھا، مجھے سفر کرنے کا شوق ہے، سوچا تھا جہاز خریدوں گی اور اسے خود اڑاؤں گی، جہاں دل چاہے گا وہاں جاؤں گی۔

انہوں نے کہا کہ والد دو سال قبل انتقال کرگئے تھے، وہ ہمیشہ میری حوصلہ افزائی کرتے تھےانہوں نے کبھی کسی چیز کے لیے مجبور نہیں کیا، انہوں نے مجھ سے کبھی نہیں پوچھا کہ شادی کب کرنی ہے۔’

شرمیلا فاروقی نے بتایا کہ شادی کرنا ان کا اپنا فیصلہ تھا، جب مجھے کوئی پسند آیا تو اپنے والد کو بتایا اور وہ راضی ہوگئے۔

پیپلزپارٹی کی رہنما نے کہا کہ انہوں نے شادی سے قبل ایل ایل ایم کی تعلیم حاصل کی اور شادی کے بعد بچے کی پیدائش سے قبل پی ایچ ڈی کے پیپرز دیے اور 5 سال بعد ڈاکٹریٹ کی ڈگری ملی۔

سوال و جواب کے سیشن کے دوران شرمیلا فاروقی نے میزبان کے دلچسپ سوالوں کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ سیاست کے ہمایوں سعید آصف زرداری ہیں، سیاست کی مہوش حیات، مریم نواز ہیں اور سیاست کی ماہرہ خان، حنا ربانی کھر اور شیری رحمٰن ہیں جبکہ سیاست کی متھیرا کوئی نہیں ہے۔

شرمیلا فاروقی نے کہا کہ سابق صدر آصف زرداری نے دوسری شادی نہیں کی، سوشل میڈیا پر چلنے والی افواہوں میں کوئی صداقت نہیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ’آصف زرداری کی زندگی پر فلم بننی چاہیے اور اگر فلم بنی تو اس کا نام ٹائٹل ’ایک زرداری سب پر بھاری‘ ہوگا۔‘

انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگر سابق وزیراعظم عمران خان پر فلم بنے گی تو اس کا ٹائٹل ’پیرنی‘ ہوگا۔

پوڈکاسٹ کے دوران انہوں نے گزشتہ سال جنوری میں ہونے والے ایک واقعہ کا بھی تذکرہ کیا جب انہوں نے میزبان نادیہ خان کے خلاف ایف آئی اے میں شکایت درج کروائی تھی۔

یاد رہے کہ شرمیلا فاروقی نے نادیہ خان کے خلاف قانونی کارروائی کا اعلان اس وقت کیا تھا جب کہ ٹی وی میزبان کی ویڈیو رکن سندھ اسمبلی کی والدہ کے ہمراہ وائرل ہوئی تھی۔

وائرل ہونے والی ویڈیو میں نادیہ خان کو شرمیلا فاروقی کی عمر رسیدہ والدہ سے میک اپ، لباس اور زیورات سے متعلق سوال کیے گئے مگر میزبان کا انداز تمسخر اڑانے والا تھا، جس وجہ سے ان پر خوب تنقید بھی کی گئی۔

تاہم اب پوڈکاسٹ کے دوران اداکارہ و ٹی وی میزبان نادیہ خان کی جانب سے والدہ کا مذاق اڑانے اور نامناسب زبان استعمال کرنے پر شرمیلا فاروقی کا کہنا تھا کہ میں نادیہ کو زیادہ نہیں جانتی، میرے پاس ان کا موبائل نمبر بھی نہیں ہے۔’

پیپلزپارٹی کی رہنما نے کہا کہ ’جب انہوں نے ویڈیو پوسٹ کی تو میں نے انہیں انسٹاگرام پر میسج کیا کہ ’مجھے آپ کی ویڈیو بالکل پسند آئی جس میں آپ میری والدہ کے میک اپ پر تبصرہ کررہی ہیں، اس ویڈیو کو ڈیلیٹ کردیں‘ جس پر نادیہ خان نے رپلائی کیا کہ ’میں نے کچھ غلط نہیں کہا اور ویڈیو ڈیلیٹ نہیں کروں گی‘ میرے پاس یہ میسج اب تک محفوظ ہے‘۔

شرمیلا فاروقی نے کہا کہ اگر وہ ویڈیو ڈیلیٹ کردیتیں تو لڑائی ختم ہوجاتی، مجھے لڑائی جھگڑا کرنےکا شوق نہیں ہے لیکن جب نادیہ خان نے کہا کہ انہیں کوئی پرواہ نہیں اور ویڈیو ڈیلیٹ نہیں کریں گی تب میں نے اپنے مطابق کیس چلانے کا فیصلہ کیا، بعدازاں انہوں نے مجھے انسٹاگرام سے بھی بلاک کردیا۔’

شرمیلا فاروقی نے کہا کہ شوبز انڈسٹری میں میری کئی لوگوں سے بہت اچھی دوستی ہے۔

پیپلزپارٹی کی رہنما نے کہا کہ ان کی والدہ کا سوشل میڈیا میں اکاونٹ نہیں ہے، مجھے نہیں معلوم کہ نادیہ خان کی میری والدہ سے کب اور کہاں اور کیوں ملاقات ہوئی، والد کا انتقال ہوگیا اور والدہ زندگی میں دوبارہ خوشیوں کی طرف لوٹ رہی تھیں، وہ ان سب چیزوں کی مستحق نہیں تھیں۔’

تبصرے (0) بند ہیں