• KHI: Fajr 4:16am Sunrise 5:43am
  • LHR: Fajr 3:23am Sunrise 4:59am
  • ISB: Fajr 3:19am Sunrise 4:59am
  • KHI: Fajr 4:16am Sunrise 5:43am
  • LHR: Fajr 3:23am Sunrise 4:59am
  • ISB: Fajr 3:19am Sunrise 4:59am

یوٹیوب پر بھی اے آئی ٹولز فیچرز پیش کیے جانے کا امکان

شائع April 20, 2024
—فوٹو: یوٹیوب
—فوٹو: یوٹیوب

میٹا کی جانب سے اپنے تمام پلیٹ فارمز، واٹس ایپ، فیس بک، انسٹاگرام اور تھریڈز میں آرٹیفیشل انٹیلی جنس (اے آئی) چیٹ بوٹ متعارف کرائے جانے کے بعد اسٹریمنگ ویب سائٹ یوٹیوب پر بھی ایسے بوٹس متعارف کرائے جانے کا امکان ہے۔

گزشتہ ایک سال کے دوران بہت سارے پلیٹ فارمز اور آپریٹنگ سسٹمز کی جانب سے اے آئی ٹولز فیچرز پیش کیے جانے کا سلسلہ جاری ہے یا پھر پلیٹ فارمز کی جانب سے ایسے ٹولز پیش کیے جانے کا اعلان کیا جا چکا ہے۔

اگرچہ یوٹیوب نے بھی نومبر 2023 میں ہی اعلان کیا تھا کہ اس نے ویب سائٹ پر اے آئی ٹولز کی آزمائش شروع کردی ہے، تاہم اب اے آئی ٹولز کو بڑے پیمانے پر آزمائش کے لیے پیش کیے جانے کا امکان ہے۔

رپورٹس کے مطابق یوٹیوب پر اے آئی اسسٹنٹ ٹول پیش کیا جائے گا، جہاں صارفین میسیجز کرکے معلومات حاصل کر سکیں گے۔

مذکورہ فیچر کے تحت یوٹیوب کی ایپلی کیشن اور ڈیسک ٹاپ پر آسک (Ask AI) کا ٹیب دیا جائے گا، جہاں صارفین تحریری طور پر اپنے سوالات لکھ کر معلومات حاصل کر سکیں گے۔

ساتھ ہی مذکورہ فیچر کے تحت ممکنہ طور پر صارفین کو آواز (وائس) کے ذریعے بھی سوالات یا معلومات حاصل کرنے کا اختیار دیے جانے کا امکان ہے۔

فیچر کے تحت صارفین ہر ویڈیو سے متعلق بھی سوال اور معلومات حاصل کرسکیں گے، یعنی وہ پوچھ سکیں گے، مذکورہ ویڈیو میں شامل مواد حقیقی ہے یا اے آئی ہے اور اسے کہاں شوٹ کیا گیا، وغیرہ، جیسے سوالات بھی کر سکیں گے۔

ممکنہ طور پر اگلے چند ماہ میں یوٹیوب پر مذکورہ فیچر کو بڑے پیمانے پر آزمائش کے لیے پیش کردیا جائے گا۔

کارٹون

کارٹون : 29 مئی 2024
کارٹون : 28 مئی 2024