پاک، انڈیا سرحدی کشیدگی پر امریکا کو تشویش

09 اکتوبر 2014

ای میل

فائل فوٹو—
فائل فوٹو—

واشنگٹن: امریکا نے پاکستان اور ہندوستان کے درمیان متنازعہ سرحدی علاقے لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باؤنڈری پر فائرنگ کے واقعات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے پاکستان اور انڈیا سے کہا ہے کہ وہ مذاکرات کے ذریعے معاملات کو حل کریں۔

امریکی اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کی ترجمان جین ساکی نے ایک بیان میں کہا کہ 'دونوں ملکوں کی سرحد پر کشیدگی سے ہمیں تشویش ہے اور ہم مسلسل پاکستان اور انڈیا کی حکومتوں پر زور دے رہے ہیں کہ وہ مذاکرات کے ذریعے اس مسئلے کا کوئی مناسب حل تلاش کریں'۔

امریکی اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کی ترجمان نے ان خیالات کا اظہار ایک ہفتہ وار بریفنگ کے دوران کیا، وہ پاکستان اور ہندوستان کے درمیان ورکنگ باؤنڈری پر کشیدگی سے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کا جواب دے رہی تھیں۔

ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ کشمیر کے معاملے پر ہماری پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ یہ معاملہ مذاکرات کی میز پر حل کیا جائے۔

اس سے قبل منگل کے روز محکمہ خارجہ نے کہا تھا کہ امریکا اس صورتحال کو بہتر کرنے کے لیے کوششیں کررہا ہے اور ہم پاکستان اور انڈیا کے حکام سے مسلسل رابطے میں ہیں۔

خیال رہے کہ گزشتہ چار روز کے دوران سیالکوٹ کی ورکنگ باؤنڈری پر پاکستان کی چناب رینجرز اور ہندوستانی بی ایس ایف کے حکام کے درمیان فارنگ اور گولے باری کے تبادلے میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد اب 12 سے تجاوز کرچکی ہے۔