ایان علی کی رہائی کا حکم جاری

اپ ڈیٹ 14 جولائ 2015

ای میل

ایان علی—۔فائل فوٹو/ اے پی
ایان علی—۔فائل فوٹو/ اے پی

لاہور ہائیکورٹ نے کرنسی اسمگلنگ کیس میں گرفتار سپر ماڈل ایان علی کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم جاری کردیا ہے۔

منگل کو لاہور ہائی کورٹ نے ماڈل کی درخواست ضمانت پر فیصلہ سنایا۔

سپر ماڈل ایان علی کو رواں برس 14 مارچ کو اسلام آباد کے بینظیر انٹرنیشنل ایئرپورٹ سے دبئی جاتے ہوئے اُس وقت حراست میں لیا گیا تھا جب دورانِ چیکنگ ان کے سامان میں سے 5 لاکھ امریکی ڈالر برآمد ہوئے تھے۔

ایان کی درخواست ضمانت راولپنڈی کی کسٹم عدالت اور لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے مسترد کی جاچکی ہیں۔

مزید پڑھیں:ایان علی کی درخواست ضمانت پھر مسترد

بعد ازاں ایان علی کی جانب سے لاہور ہائیکورٹ میں ایک اور درخواست دائر کی گئی، جس پر چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے ماڈل کی درخواست ضمانت کی سماعت کے لیے دو رکنی بینچ تشکیل دیا تھا۔

مذکورہ کیس کی گذشتہ سماعت کے دوران ماڈل کے وکیل ایڈووکیٹ خرم لطیف کھوسہ کا کہنا تھا کہ ان کی موکلہ بغیر کسی وجہ کے گزشتہ 4 ماہ سے جیل کی سلاخوں کے پیچھے ہیں، جبکہ کسٹم ایکٹ کے مطابق اگر ملزم کوئی خاتون ہو اور تفتیش مکمل ہوگئی ہو تو انھیں ضمانت پر رہا کیا جاسکتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:ایان کی درخواست ضمانت پر حکومت، کسٹم کو نوٹس

ایان علی کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ چونکہ ان کی موکلہ ایک خاتون ہیں اور تفتیش مکمل ہوگئی ہے لہذا عدالت سے درخواست ہے کہ انھیں ضمانت پر رہا کیا جائے۔

جس پرعدالت نے حکومت اور کسٹم حکام کو نوٹسز جاری کیے تھے۔

آج لاہور ہائیکورٹ میں مذکورہ درخواست کی سماعت کے بعد عدالت نے ایان علی کی رہائی کا حکم جاری کردیا۔

گذشتہ ہفتے راولپنڈی میں کیس کی سماعت کے دوران ایان علی نے بھی پہلی مرتبہ خاموشی توڑتے ہوئے الزام عائد کیا تھا کہ کرنسی اسمگلنگ کیس کے ٹرائل میں انہیں امتیازی سلوک کا سامنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اسی طرح کے الزامات پر دیگر افراد کو ضمانت پر رہا کردیا جاتا ہے مگر وہ کئی ماہ سے جیل کی سلاخوں کے پیچھے ہیں، دیگر ملزمان کے اسی طرح کے مقدمات میں نہ تو فیڈرل بورڈ آف ریونیو اور نہ ہی کوئی اور ادارہ ٹیکس اور جائیدادوں کی تفصیلات اکھٹی کرتا ہے مگر ان کے مقدمے میں ان کی آمدنی اور اثاثوں کی ہر تفصیل کی چھان بین ہورہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:ایان علی نے آخرکار خاموشی توڑ دی

انہوں نے عدالت کو بتایا کہ طویل حراست کے باعث ان کا ماڈلنگ کیرئیر خطرے میں پڑگیا ہے۔ ایان کے مطابق انہوں نے متعدد ایڈورٹائزرز سے کئی معاہدے کر رکھے ہیں اور وہ اپنے وعدوں کو پورا کرنے سے قاصر ہیں۔

سپرماڈل نے اپنے ٹرائل سے متعلق منفی میڈیا توجہ کی شکایت بھی کی۔ ان کے بقول مارچ میں گرفتاری کے بعد سے میڈیا بالخصوص سوشل میڈیا پر ان کی شخصیت کو منفی انداز میں پیش کیا جارہا ہے۔