پیمرا کو ڈی ٹی ایچ نیلامی کی مشروط اجازت

اپ ڈیٹ 23 نومبر 2016

ای میل

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے پاکستان الیکٹرانک میڈیا اینڈ ریگولیٹری اتھارٹی (پیمرا) کو ڈائریکٹ ٹو ہوم (ڈی ٹی ایچ) ٹیکنالوجی کی نیلامی کی مشروط اجازت دے دی۔

عدالت نے قرار دیا کہ لاہور ہائیکورٹ کے حتمی فیصلے تک بولی جیتنے والے کو لائسنس جاری نہ کیا جائے۔

یاد رہے کہ گذشتہ روز لاہور ہائی کورٹ نے ڈی ٹی ایچ کی نیلامی پر حکم امتناع جاری کیا تھا، جسے پیمرا نے سپریم کورٹ میں چیلنج کردیا تھا۔

مزید پڑھیں:لاہور ہائیکورٹ کا حکم امتناع، کیبل آپریٹرز کی ہڑتال ختم

پیمرا کے وکیل سلمان اکرم راجا نے جسٹس ثاقب نثار کے بینچ کے سامنے پیش ہوکر موقف اختیار کیا کہ آج (23 نومبر کو) ڈی ٹی ایچ لائسنس کی نیلامی ہے، لیکن لاہور ہائیکورٹ نے حکم امتناع کے ذریعے نیلامی کے عمل کو روک دیا ہے، جس کا نقصان پیمرا کو ہوگا۔

پیمرا کے وکیل نے عدالت کو یقین دلایا کہ نیلامی کی اجازت دینے سے ہائیکورٹ میں درخواست گزار کا حق متاثر نہیں ہوگا،لہذا اپیل پر آج ہی سماعت کی جائے۔

جس کے بعد جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے پیمرا کی درخواست پر سماعت کی۔

سماعت کے دوران پیمرا کے وکیل سلمان اکرم راجہ نے موقف اختیار کیا کہ نیلامی کے عمل میں حصہ لینے کے لیے کئی ممالک کے سرمایہ کار پاکستان آئے ہیں اور ان سرمایہ کاروں کو بغیر بولی واپس بھجوایا گیا تو ملک کی بڑی بدنامی ہوگی۔

انھوں نے کہا کہ ہم یقین دلاتے ہیں عدالت کے حتمی فیصلے تک کسی کو لائسنس جاری نہیں کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں: حکومت سے مذاکرات ناکام، کیبل آپریٹرز نے سروس بند کردی

کیبل آپریٹرز ایسوسی ایشن کی وکیل عاصمہ جہانگیر کا دلائل دیتے ہوئے کہنا تھا کہ 'غیر ملکی سرمایہ کار نیلامی کے عمل میں حصہ نہیں لے سکتے، ہمیں بھی نیلامی کے عمل میں حصہ لینے کی اجازت دی جائے، کیا ہوگا ہمارے صرف 5 لاکھ روپے ہی ضبط ہوں گے'۔

دلائل سننے کے بعد سپریم کورٹ نے پیمرا کو ڈی ٹی ایچ نیلامی کی مشروط اجازت دیتے ہوئے حکم دیا کہ نیلامی لاہور ہائیکورٹ کے حتمی فیصلے سے مشروط ہوگی، لہذا لاہور ہائیکورٹ کے حتمی فیصلے تک بولی جیتنے والے کو لائسنس جاری نہ کیا جائے۔

واضح رہے کہ ڈی ٹی ایچ کی نیلامی کو کیبل آپریٹرز کی جانب سے ان کا معاشی قتل قرار دیا جارہا ہے۔

یہاں پڑھیں: ڈی ٹی ایچ نیلامی: پاکستان میں 15کروڑ ڈالر سرمایہ کاری کا امکان

گزشتہ ہفتے کیبل آپریٹرز ایسوسی ایشن کے رہنما خالد آرائیں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے مطالبہ کیا تھا کہ ڈی ٹی ایچ کو 3 سال کیلئے موخر کیا جائے، تاہم حکومت سے مذاکرات میں ناکامی کے بعد کیبل ایسوسی ایشن نے ہڑتال کا اعلان کرتے ہوئے ملک بھر میں کیبل کی نشریات بند کردی تھیں، جسے گذشتہ روز لاہور ہائیکورٹ کے حکم امتناع کے بعد ختم کیا گیا۔

دوسری جانب حکام کی جانب سے دعویٰ کیا جارہا ہے کہ ڈی ٹی ایچ براڈ کاسٹ کے 3 لائسنس 23 نومبر کو نیلام ہونے سے پاکستان کے لیے 150 ملین ڈالر (تقریباََ 15 ارب 72 کروڑ روپے) کی براہ راست سرمایہ کاری کا امکان ہے۔