برطانوی پولیس کی جانب سے لندن حملہ آوروں کے دو نام جاری

05 جون 2017

ای میل

برٹس میٹروپولیٹن پولیس سروس لندن نے دوحملہ آوروں کی تصاویر بھی جاری کردیں—فوٹو: اے ایف پی
برٹس میٹروپولیٹن پولیس سروس لندن نے دوحملہ آوروں کی تصاویر بھی جاری کردیں—فوٹو: اے ایف پی

برطانیہ کی پولیس نے لندن برج میں عوام پر وین چڑھا کر سات افراد کو ہلاک کرنے والے دو حملہ آوروں کے نام اور تصاویر جاری کردی ہیں جن میں سے ایک ماضی میں سیکیورٹی کی خدمات انجام دے چکے ہیں۔

خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق لندن میٹروپولیٹن پولیس کا کہنا ہے کہ ایک حملہ آور کی شناخت 27 سالہ خرم شہزاد بٹ کے نام سے ہوئی ہے جنھوں نے ماضی میں پولیس اور مقامی خفیہ ایجنسی ایم آئی فائیو کے لیے خدمات انجام دیں۔

پولیس کے مطابق خرم شہزاد بٹ برطانوی شہری تھے تاہم ان کی پیدائش پاکستان میں ہوئی۔

ان کا کہنا تھا کہ 'اس حوالے سے کوئی خفیہ معلومات نہیں ہیں کہ یہ حملہ باقاعدہ منصوبہ بندی کا حصہ تھا تاہم تفتیش اسی نقطہ نظر کے تحت کی جارہی ہے'۔

مزید پڑھیں:لندن: دہشتگردوں نے راہگیروں پر گاڑی چڑھادی، 7 افراد ہلاک

برطانوی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق خرم شہزاد بٹ چینل 4 کی 'دی جہادیز نیکسٹ ڈور' کے عنوان سے ایک ڈاکیومنٹری میں بھی نمودار ہوئے تھے جس کو برطانوی انتہاپسندوں نے گزشتہ سال جاری کیا تھا۔

دوسرے حملہ آور کی شناخت 30 سالہ راشد رضوان کے نام سےہوئی ہے جو راشد الکھیدار کے نام سے جانے جاتے تھے اور پولیس کو ان کے حوالے سے کوئی معلومات نہیں تھیں تاہم ان کا تعلق لیبیا اور مراکش سے ہونے کا دعویٰ کیا جارہا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ وہ اب تک تیسرے حملہ آور کی شناخت کے لیے کام کر رہے ہیں۔

قومی انسداد دہشت گردی پولیس کے چیف مارک رولے نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ 'میں ان افراد پر زور دےرہا ہوں جو ان افراد کی حملے سے چند گھنٹوں اور دنوں قبل کی سرگرمیوں اور ان کی رہائش کے حوالے سے جانتے ہیں وہ سامنے آئیں'۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ان کی حراست میں اب بھی 10 افراد موجود ہیں جبکہ ابتدائی طور پر گرفتار کیے گئے 12 افراد میں سے دو کو رہا کردیا گیا ہے۔